Loading...
دینک ٹربیون» News »مدراسفیتی کے سائے میں بدلاؤ سے پرہیز

گجرات میں پرچار کا آج انتم دن,پی ایم کر رہے ہیں سی پلین سے پرچار,راہل پہنچے مندر !    برفیلا ہماچل:جن جاتیہ شیتروں میں بیپٹری زندگی,پریٹن میں آئیگی گرماہٹ !    پنجاب نے دوگنی کی ودھائکوں کی میڈکل گرانٹ !    ہنیپریت,انیہ آروپی عدالت میں پیش !    پراپرٹی ڈیلر کی گولی مارکر ہتیا !    فریدآباد کی سینک کالونی میں اویدھ نرمان توڑے !    ابھی راجنیتی میں آنے کا ارادہ نہیں:خلیع !    بی بی سی آئی کی وشیش عام بیٹھک میں ہوئے فیصلے !    شکایت کرتا کی موت,بینک بچوں کو دیگا1.27کروڑ !    گوشالاؤں کے آرتھک سنکٹ پر کیا وچار !    

مدراسفیتی کے سائے میں بدلاؤ سے پرہیز

Posted On December - 7 - 2017

مودرک نیتی

10712621cd _MUDRASFITIستیش سنگھ
مودرک نیتی سمتی یعنی ایمپیسی نے ریپو در کو6پرتیشت پر یتھاوت رکھا ہے۔ ایمپیسی کے6سدسیوں میں سے5نے ایک مت سے نیتی گت در کو اپرورتت رکھنے کے لئے ووٹ کیا۔ ابھی بھی ریپو در7سالوں میں سب سے نچلے سطر پر ہے۔ اسکے پہلے اگست میں ریپو در میں0.25فیصدی کی کٹوتی کی گئی تھی۔ دیکھا جائے تو ایمپیسی کے اس نرنیہ کے پیچھے حال کے دنوں میں مدراسفیتی میں اضافہ,انتراشٹریہ بازار میں کچے تیل کی قیمت میں اچھال,ویشوک سطر پر آرتھک استھرتا آدی کا پربھاؤ ہے۔
بیتے مہینوں میں مدراسفیتی کے مدعے پر ایمپیسی کے سدسیوں کے وچاروں میں ایکروپتا نہیں رہی ہے۔ پچھلی مودرک سمیکشا میں کہا گیا تھا که مدراسفیتی کا لکشیہ پراپت کرنے یوگیہ ہے,لیکن اس مودرک سمیکشا میں ستھتی پرتکول ہو گئی۔ پھر سے کھدرا اور تھوک مدراسفیتی میں وردھی ہوئی ہے۔ شروع میں ومدریکرن کے پربھاؤ کو ایمپیسی کے سبھی سدسیوں نے استھایی مانا تھا,لیکن بعد میں کیول ایک سدسیہ نے ہی اسے سویکار کیا۔ ارتھویوستھا میں وت ورش2017کی دوسری تماہی سے ہی سستی بنی ہوئی ہے۔ حالانکہ,جی ڈی پی در میں وردھی ہوئی ہے,لیکن اس دشا میں ابھی بھی کافی کام کرنے کی ضرورت ہے۔
رزرو بینک نے ورش2007میں وبھن دیشوں کے ایمپیسی کے کام کاج پر ایک انوسندھان پیپر پرکاشت کیا تھا,جسمیں پرمکھ دیشوں کے ایمپیسی کے پرچالن سے جڑے چونکانے والے پرنام سامنے آئے تھے۔ انوسندھان میں یہ بھی پایا گیا تھا که ایمپیسی کا نرنیہ ہر معاملے میں صحیح نہیں ہو سکتا ہے۔ ایمپیسی سنکلپنا کے وودھ آدھار جیسے,سوتنتر سوچ,تکنیکی کشلتا,وشلیشن آدی ہیں۔ ورش2002سے ورش2006کی اودھی کے ادھئین میں یہ نشکرش نکالا گیا که سشکت ایمپیسی کے نرنیوں کی وجہ سے مدراسفیتی کو تو نینترت کیا جا سکا,لیکن اس سے وکاس کو گتی نہیں مل سکی۔ اسکے وپریت ورش2009سے ورش2015کی اودھی میں سشکت ایمپیسی کے سترکتا کے باوجود مدراسفیتی میں بڑھوتری ہوئی اور وکاس کو بھی گتی نہیں ملی۔ اگر,اسے سچ مان لیا جائے تو سنکٹ کے بعد ایمپیسی کی سارتھکتا پر سوال اٹھائے جا سکتے ہیں۔
مدراسفیتی کو نینترت کرنے کے سندربھ میں ایمپیسی کی بھومکا پر بہت سارے انوسندھان کیے گئے ہیں,جسے پرسدھ ارتھشاستری اور شکشاود‍ ایلن بلنڈر نے وشلیشت کیا ہے۔ بلنڈر کے انوسار ایمپیسی کو معاملے میں ویوہارک نظریے کو اپنانا چاہئیے,جو عموماً بینکر یا وتیہ سنستھان سے جڑے پیشیوروں میں ہوتا ہے۔ ایمپیسی کی سنرچنا کے بارے میں بلنڈر نے کہا که ایمپیسی کے سدسیہ کو انشکالک کے بجائے پورنکالک ہونا چاہئیے۔ انہوں نے یہ بھی کہا که ایپھؤئیمسی اور ای سی بی گورننگ کاؤنسل کے سدسیہ بھی بینک سے ہی ہونے چاہئیے,تاکہ ایمپیسی سفلتاپوروک کاریہ کر سکے۔
اس سال مانسون کی پرگتی سنتوشجنک نہیں رہی۔ گجرات کا کچھ علاقہ باڑھ سے پربھاوت رہا,جبکہ مدھیہ پردیش کے انیک علاقے سوکھے سے۔ دوسرے پردیشوں میں بھی کم وبیش مانسون پربھاوشالی نہیں رہا۔ وستو ایوں سیواکر کی وجہ سے ابھی بھی کاروباریوں کے بیچ اوہاپوہ کی ستھتی بنی ہوئی ہے۔ بہت سے کھادھیہ پدارتھوں پر جیئیسٹی زیادہ ہونے سے مدراسفیتی میں گرمی برقرار ہے۔ ویسے,سرکار جیئیسٹیکے سلیب کو کم کر رہی ہے,لیکن ستھتی کے سامانیہ ہونے میں سمیہ لگےگا۔ اپبھوکتا مولیہ سوچکانک یعنی سیپیائی اور تھوک مولیہ سوچکانک یعنی ڈبلیوپیائی دونوں میں وردھی کا دور جاری ہے۔ سبزیوں کی قیمت سامانیہ سے ادھک ہے۔ امید کی جا رہی ہے که سیپیائی مدراسفیتی دسمبر, 17سے مارچ, 18کے بیچ4سے4.5فیصدی سطر پر رہ سکتی ہے,جو لکشیہ سے تھوڑا زیادہ ہے۔ بھارت میں ایمپیسی کا کاریہ مدراسفیتی کے چال کے مطابق نیتی گت دروں کو تے کرنا ہے,لیکن ورتمان میں مکھیہ طور پر مدراسفیتی کی چال گڑبڑ ہو گئی ہے۔ ادھر,ومدریکرن کے کارن بینکوں میں ابھی بھی نقدی کی ادھکتا ہے,جس کا اپیوگ قرض در میں کٹوتی کرنے میں کیا جا سکتا ہے,لیکن ابھی بھی قرض کی مانگ میں اضافہ نہیں ہوا ہے,جس کا کارن ومدریکرن کے پربھاؤ کا پوری طرح سے ختم نہیں ہونا ہے۔


Comments Off onمدراسفیتی کے سائے میں بدلاؤ سے پرہیز
1 Star2 Stars3 Stars4 Stars5 Stars (No Ratings Yet)
Loading...
Both comments and pings are currently closed.

Comments are closed.

سماچار میں حال لوکپریہ

Powered by : Mediology Software Pvt Ltd.
Web Tranliteration/Translation