Loading...
'پہلی نظر کا پیار',ایک بیماری| Webdunia Hindi

'پہلی نظر کا پیار',ایک بیماری


Last Updated: بدھوار, 16نومبر2016 (17:11 IST)
نیو جرسی۔کو لیکر دنیا میں پریمیوں اور وگیانکوں کی رائے الگ الگ ہو سکتی ہے۔ اب سوچیے,ڈاکٹروں کا کہنا ہے که'پہلی ہی نظر میں ہونے والا پیار'کوئی پیار نہیں بیماری ہے جسکی جڑیں آپکے دماغ میں ہوتی ہیں۔   
 
جانکاروں کا کہنا ہے که دراصل پیار ہونا ایک دھیمی پرکریا ہے اور کم سے کم چار بار دیکھے جانے کے بعد محسوس کیا جا سکتا ہے۔ لیکن جنہیں لگتا ہے که انہیں پہلی ہی نظر میں پیار ہو جاتا ہے تو جان لیں,یہ پیار نہیں ورن ایک بیماری ہے جسے'ایٹ پھرسٹ سائٹ سنڈروم'کہا جاتا ہے۔> > اتنا ہی نہیں,ڈاکٹروں نے تو اس بیماری کے کم سے کم11لکشن گنائے ہیں,ان لکشنوں سے آپ سمجھ سکتے ہیں که واستو میں آپ کا پیار کیسا ہے اور کہیں آپ کسی بیماری کی چپیٹ میں تو نہیں ہیں۔     
 
1.جو لوگ پہلی ہی نظر کے پیار میں پڑ جاتے ہیں تو ایسے لوگ کچھ زیادہ ہی رومانٹک ہوتے ہیں۔ ایسے لوگوں کے بارے میں کہا جا سکتا ہے که انھیں کبھی بھی اور کہیں بھی پیار ہو سکتا ہے اور یہ پیار ترت فرط اور انسٹینٹ ہوتا ہے لیکن جب یہ غائب ہوتا ہے تو جیسے گدھے کے سر سے سینگ۔ اگر آپ ایسے نہیں ہیں تو آپ'ہوپلیس رومانٹک'نہیں ہیں۔                                
 
2.اس منوویگیانک وقار کا دوسرا لکشن یہ ہے که یہ لوگ یا تو کسی کے بارے میں بہت زیادہ ہی پھیل کرتے ہیں یا بالکل پھیل نہیں کرتے۔ انکے لئے اسکے بیچ کی کوئی پھیلنگس نہیں ہوتیں ہیں۔ کبھی کبھی یا سمیہ سمیہ پر پیار کا انبھو ہونا آپ کو مشکل ہوتا ہے۔
 
3.آشچریہ کی بات یہ بھی ہے که ایسے گھنگھور پریمیوں کو'ایک سمیہ پر ایک ہی انسان پر کرش'ہوتا ہے۔ ایسے لوگ بہت سارے لوگوں سے بھی ایک ساتھ پیار کا احساس نہیں کر پاتے ہیں کیونکہ اس سے انکے دماغ میں بھاوناتمک'اوورلوڈ'ہو جاتا ہے اور جسے یہ جھیل نہیں پاتے ہیں۔ 
 
 

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation