Loading...
چھا گیا'چوکیدار',ان8بڑے کارنوں سے دیش میں پھر چلی نریندر مودی کی سنامی| Webdunia Hindi

چھا گیا'چوکیدار',ان8بڑے کارنوں سے دیش میں پھر چلی نریندر مودی کی سنامی

narendra modi
Last Updated: گرووار, 23مئی2019 (13:57 IST)
نئی دہلی۔ پردھان منتری نریندر مودی کے نیترتو میںمیں راجگ کی سنامی نظر آ رہی ہے۔ اترپردیش,بہار,مدھیہ پردیش,گجرات اور راجستھان جیسے راجیوں میں جہاں بھگوا لہر دکھائی دے رہی ہے۔ وہیں پچھم بنگال,اوڈشا,کرناٹک میں بھی ماحول بھاجپامیہ نظر آ رہا ہے۔ آئیے جانتے ہیں اس چناؤ کی8خاص باتیں جس نے ماحول کو بھاجپا کے پکش میں کر دیا...


: 2019کے لوک سبھا چناؤ کو مودی کے لئے ہی جانا جائیگا۔ وہ نہ صرف چناؤ کا سب سے بڑا چہرہ تھے بلکہ اس چناؤ کا سب سے بڑا مدعا بھی تھے۔ لوگوں نے ووٹ بھی انہیں کے نام پر دیئے۔ مودی نے دیش بھر میں گھوم کر ماحول کو بھگوامیہ کر دیا۔ وپکش اس انڈرکرنٹ کا اندازہ بھی نہیں لگا پایا۔ اس چناؤ کی سب سے اہم بات یہ رہی که متداتاؤں نے ستھانیہ امیدوار کو مہتو دینے بجائے مودی کے چہرے کو ہی سامنے رکھا۔

:نریندر مودی نے دیش میں وکاس تو بہت کیا لیکن چناؤ میں راش‍ٹرواد کو مدعا بنایا۔ اترپردیش,بہار,مدھیہ پردیش,گجرات اور راجستھان جیسے راجیوں میں یہ مدعا کام کر گیا۔ لوگوں کو مودی کی بات سمجھ میں آ گئی اور انہوں نے راش‍ٹرواد کے نام پر راجگ اور بھاجپا کے پرتیاشیوں کے پکش میں جم کر متدان کیا۔
بالا کوٹ سرجکل سٹرائک:مودی راج میں پاکستان کے بالا کوٹ میں ہوئی سرجکل سٹرائک کو بھی لوگوں نے انکے پکش میں متدان کر سراہا۔ مودی نے جس انداز میں پاکستان میں ستھی‍ت آتنکیوں سے پلوامہ حملے کا بدلہ‍لیا,لوگوں کو انکا یہ انداز بھا گیا۔ اتنا ہی نہیں مودی نے انترراش‍ٹریہ سطر پر بھی پاکستان کو جم کر سبق سکھایا۔


مودی کا آکرامک پرچار: نریندر مودی نے اس چناؤ میں بھی بیحد آکرامک طرح سے پرچار کیا۔ انکے قد کے سامنے کانگریس ادھیکش راہل گاندھی,ترنمول کانگریس نیتا ممتا بنرجی سمیت سبھی نیتا بونے نظر آئے۔ انہوں نے وپکش پر جم کر پلٹوار کیا۔ انکے آکرامک چناوی پلان نے وپکش کو بھاجپا کے سمنے دھول چاٹنے پر مجبور کر دیا۔ انتم دور کے چناؤ پرچار میں مودی نے'چور'کے جواب میں پورو پردھان منتری سو.راجیو گاندھی کو ہی کٹھگھرے میں کھڑا کر کانگریس کو راجیو کے نام پر ہی چنوتی دے دی تھی۔


ہندتو: اس چناؤ میں ہندتو ایک بار پھر بڑا مدعا ثابت ہوا۔ پچھم بنگال میں بھاجپا کی ریلیوں میں جم کر رام کے نام پر نعرے لگائے گئے۔ پچھم بنگال کے ساتھ ہی اترپردیش اور بہار میں بھی اس مدعے نے اپنا کام کیا۔ پارٹی نے اناو سے ساکشی مہاراج,سیکر سے سوامی سمیدھانند سرسوتی اور الور سے بابا بالکناتھ کو ٹکٹ دیا۔ سادھوی پر گیا کو چناؤ لڑاکر بھاجپا نے اپنے پکش میں متوں کا سپھلتاپوورک دھوریکرن کیا۔ حالانکہ کچھ معاملوں میں سادھوی نے بھاجپا کی کرکری بھی کرائی۔

کی ایکجٹتا: اس چناؤ میں اینڈیئے پہلے کی اپیکشا زیادہ ایکجٹ نظر آیا۔ ادھو ٹھاکرے جیسے اسنتش‍ٹ سہیوگی نیتاؤں کو بھاجپا نے سفلتاپوروک سادھا۔ نریندر مودی اور امت شاہ کے نام انکن کے سمیہ پرکاشسنہ بادل,ادھو ٹھاکرے,نتیش کمار جیسے دگجوں کو آمنترت کر ایکجٹتا کا پردرشن بھی کیا۔ مودی نے سہیوگی دلوں کے پرتیاشیوں کے سمرتھن میں بھی سبھائیں کرنے میں گریز نہیں کیا اور جہاں آوشوکتا تھی ان دگجوں کو بھاجپا کے پکش میں چناؤ پرچار کے لئے بلایا گیا۔ یہی کارن رہا که اینڈیئے نے بہار اور مہاراشٹر میں بہت اچھا پردرشن کیا۔


سوشل میڈیا: سوشل میڈیا پر بھی بھاجپا کا چناؤ پرچار بیحد آکرامک تھا۔ راہل کے آروپوں پر پلٹوار کرتے ہوئے'میں بھی چوکیدار'کیمپین چلایا گیا۔ دیکھتے ہی دیکھتے بھاجپا کے دگج نیتاؤں نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹس میں بھی چوکیدار لکھ دیا۔ بس پھر کیا تھا انکے پرشنسکوں کے ساتھ ہی عام لوگوں میں بھی مودی کے اس ابھیان سے جڑنے کی ہوڑ مچ گئی۔ بھاجپا نے ہیشٹیگس کا بھی بہترین استعمال کیا اور اس مادھیم کا زبردست ڈھنگ سے استعمال کیا۔

چناؤ پربندھن:بھاجپا ادھیکش امت شاہ کا بہترین چناؤ پربندھن بھی بھاجپا کو اس چناؤ میں بڑی جیت دلانے میں مہتوپورن ثابت ہوا۔ پارٹی کے شیرش نیتاؤں میں زبردست سمنویہ دکھائی دیا۔ جہاں مودی گئے وہاں امت شاہ نہیں گئے اور جہاں امت شاہ پہنچے وہاں مودی نہیں پہنچے۔ پورے چناؤ میں کیول مدھیہ پردیش کا اجین ہی اپواد رہا۔ اسکے وپرت کانگریس نیتاؤں میں سمنویہ کی کمی سپشٹ دکھائی دی۔ انکا چناؤ پرچار بکھرا بکھرا سا دکھائی دیا۔


 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation