Loading...
BJP North and Western India۔ مودی کا کرشمہ:اتر اور پچھم بھارت میں بھی گیروآ ہی گیروآ| Webdunia Hindi

مودی کا کرشمہ:اتر اور پچھم بھارت میں بھی گیروآ ہی گیروآ

Last Updated: شکروار, 24مئی2019 (00:14 IST)
نئی دہلی۔ بھارتیہ جنتا پارٹی نےمیں جیت کا ایسابنایا ہے که آنے والے سمیہ میں اسے توڑ پانا ابھی تو اسمبھو سا ہی نظر آ رہا ہے۔ دیش کے اس حصے میں کچھ راجیوں میں متوں میں اسکی حصے داری50فیصدی سے بھی اوپر چلی گئی ہے۔ اسی کے ساتھ پارٹی2014کے عام چناؤ میں حاصل282سیٹوں کے آنکڑے کو پار کرتی نظر آ رہی ہے۔
'راشٹرواد'اور'وکاس'کے نعرے کے ساتھ بلند ہوتے پردھان منتری نریندر مودی کے کرشمائی ویکتتو نے کچھ ایسا کرشمہ کیا که دیش کی ہندی پٹّی کہلانے والے علاقے میں ادھکتر لوک سبھا سیٹوں پر گیروآ پرچم لہرا گیا۔ مودی کے نیترتو اور بھاجپا کے سنگٹھناتمک پربندھن کی رننیتی نے سماجوادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی کے مضبوط نظر آ رہے گٹھ بندھن کو تنکے کی طرح ہوا میں اڑا دیا۔
آنکڑے اس بات کی گواہی دے رہے ہیں که بھاجپا نے مدھیہ پردیش,چھتیس گڑ,راجستھان,گجرات اور ہریانہ جیسے کئی راجیوں میں اپنے مت پرتیشت میں بھی اضافہ کیا ہے۔ ان راجیوں میں اسکی ووٹ حصے داری50فیصدی سے بھی ادھک رہی ہے,جو که بھارتیہ چناوی اتہاس میں کسی چمتکار سے کم نہیں ہے۔ متوں کی گنتی ابھی جاری ہے اور دیش بھر میں300سے ادھک سیٹوں پر بھاجپا آگے چل رہی ہے۔

بھاجپا ادھیکش امت شاہ نے چناؤ سے پہلے ہی دعویٰ کیا تھا که اترپردیش میں سپہ بسپا گٹھ بندھن کی ہار نشچت کرنے کے لئے پارٹی50فیصدی سے ادھک ووٹ حاصل کریگی اور نتیجے بتاتے ہیں که انکا یہ دعویٰ سچ ثابت ہوا ہے۔ نرواچن آیوگ کے تازہ آنکڑوں کے انوسار اس راجیہ میں بھگوا پارٹی نے49فیصدی سے ادھک ووٹ حاصل کئے ہیں۔ اترپردیش میں بھاجپا60سیٹوں پر آگے چل رہی ہے۔
راجستھان اور گجرات میں بھی بھاجپا اپنی2014کی جیت کو دوہراتی نظر آ رہی ہے۔ یہاں پارٹی کرمش: سبھی25اور26سیٹوں پر بڑھت بنائے ہوئے ہے۔ مدھیہ پردیش میں تو وہ29میں سے28سیٹوں پر آگے چل رہی ہے۔ چھتیس گڑ کی11میں سے9سیٹوں پر پارٹی بڑھت لئے ہوئے ہے۔

بہار میں بھاجپا نے نتیش کمار کے جنتا دل(یو)سے گٹھ بندھن قائم کرنے کے لئے اپنی مضبوط سنبھاوناؤں والی سیٹوں کا بلیدان کیا اور یہاں بھی وہ16سیٹوں پر آگے چل رہی ہے۔ اسنے کل17سیٹوں پر اپنے امیدوار کھڑے کئے تھے۔ بہار میں وہ2014میں31میں سے22سیٹیں جیتی تھی۔
مہاراشٹر میں بھاجپا25میں سے23سیٹوں پر جیت حاصل کرتی نظر آ رہی ہے,باقی23سیٹوں پر اسکی سہیوگی پارٹی شیوسینا نے اپنے امیدوار میدان میں اتارے تھے۔ ہریانہ میں بھی بھاجپا نے10میں سے9سیٹوں پر شاندار پردرشن کیا ہے۔ پچھلے عام چناؤ میں یہاں اسنے7سیٹیں جیتی تھیں۔

بھاجپا شاست کچھ راجیوں میں ستاورودھی لہر یا ستھانیہ امیدواروں کا پربھاؤ نہیں ہونے کے باوجود جنتا نے مودی کے نیترتو میں بھروسہ جتایا ہے۔ جھارکھنڈ میں بھاجپا نے13سیٹوں پر چناؤ لڑا تھا اور وہ11پر جیت حاصل کرتی نظر آ رہی ہے۔ یہاں اسنے49فیصدی سے ادھک ووٹ حاصل کیا ہے۔
دہلی,ہماچل پردیش اور اتراکھنڈ جیسے راجیوں میں بھاجپا2014کی ہی طرح سبھی16سیٹوں پر پھر سے قبضہ جماعتی دکھ رہی ہے۔ راشٹریہ راجدھانی میں بھاجپا کی ووٹ حصے داری56فیصدی سے ادھک اور2پہاڑی راجیوں میں60فیصدی سے ادھک رہی ہے۔(بھاشا)

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation