Loading...
Bsnl Has No Money To Pay Employees, All You Need To Know About Bsnl Crisis - Bsnlکبھی تھی نمبر ون اور اب کیوں ہے ڈوبنے کی کگار پر- Amar Ujala Hindi News Live
وگیاپن
وگیاپن

BSNLکبھی تھی نمبر ون اور اب کیوں ہے ڈوبنے کی کگار پر

بی بی سی Updated Fri, 12 Jul 2019 05:00 AM IST
بھارتیہ سنچار نگم لمٹیڈ
بھارتیہ سنچار نگم لمٹیڈ -فوٹو: Internet
خبر سنیں
بیئیسئینل(بھارت سنچار نگم لمٹیڈ)کے تتکالین سی ایم ڈی انوپم شریواستو بیحد پریشان تھے۔ لاکھوں کروڑو روپے کے ڈوبے قرض کے بوجھ تلے دبی بینکنگ سیکٹر کی چنوتیپورن حالت, "باہری اور آنترک چنوتیوں"کے کارن نقدی کی کمی سے جوجھ رہی بی ایس این ایل اپنے1.7لاکھ کرمچاریوں کی تنخواہوں کے لئے دھن جٹانے کی کوشش کر رہی تھی۔
وگیاپن
فروری میں کرمچاریوں کی تنخواہوں میں15دنوں کی دیری میڈیا میں بڑی بڑی سرخیاں تھیں۔ انوپم شریواستو کو یہ پتہ تھا که اگر یہ سرخیاں لمبے سمیہ تک چلیں تو بینکوں سے قرض لینا اور مشکل ہو جائیگا۔

جون میں رٹائر ہوئے انوپم شریواستو بتاتے ہیں, "چنوتی تھی که پیسے کیسے اکٹھا کریں,ایک استھایی کیش فلو کی ستھتی سے کیسے نپٹیں۔"پیسوں کا انتظام کرنے کے بعد مارچ میں کمپنی نے اپنے کرمچاریوں کی تنخواہیں دیں۔

اکتوبر2002میں بی ایس این ایل موبائل سیوا کے لانچ ہونے کے ماتر ڈیڑھ دو سالوں میں بھارت کی نمبر ون موبائل سیوا بننے والی بی ایس این ایل پر قریب20ہزار کروڑ روپے کا قرض ہے۔

ادھیکاری یاد دلاتے ہیں که یہ بی ایس این ایل ہی تھی جسکی فری انکمنگ کالس,فری رومنگ جیسی سودھاؤں سے داموں میں بھاری گراوٹ آئی۔ حالانکہ بیئیسئینل ادھیکاری یہ دعویٰ کرتے نہیں تھکتے که پرائیویٹ ٹیلی کام آپریٹرس کے مقابلے بی ایس این ایل پر قرض "چلر جیسا"ہے۔ کچھ لوگ کہہ رہے ہیں که بی ایس این ایل کو بند کر دیا جائے۔ کچھ اسکے نجیکرن پر زور دے رہے ہیں۔

پورو بیئیسئینل ادھیکاریوں سے بات چیت میں ایسی تصویر ابھرتی ہیں جس سے لگتا ہے که بی ایس این ایل کی آنترک چنوتیوں اور سرکار کے کڑے شکنجے اور کام میں کتھت سرکاری دکھلئنداجی کے کارن کمپنی آج ایسی ستھتی میں ہے۔

کمپنی میں قریب1۔7لاکھ کرمچاریوں کی اوسط عمر55ورش ہے اور ایک ورشٹھ ادھیکاری کے مطابق "ان میں سے80پرتیشت بی ایس این ایل پر بوجھ ہیں کیونکہ وہ تکنیکی طور پر انپڑھ ہیں جو نئی تکنیک سیکھنا ہی نہیں چاہتے اور اسکا اثر یووا کرمچاریوں کے منوبل پر پڑتا ہے۔"

بی ایس این ایل کرمچاری یونین ان آروپوں سے انکار کرتا ہے۔ جہاں بی ایس این ایل اپنی آمدنی کا70پرتیشت تنکھواہوں پر خرچ کرتی ہے,نجی آپریٹرس میں یہ آنکڑا3-5پرتیشت ہے۔

ایک ادھیکاری کے مطابق جہاں نجی آپریٹرس کا آرپو(ARPU)یعنی ہر گراہک سے ہونی والی آمدنی قریب60روپے ہے,بی ایس این ایل میں یہ30روپے ہے کیونکہ بی ایس این ایل کے زیادہ تر گراہک کم آمدنی والے ہیں۔

سوچنا پرودیوگکی منتری روی شنکر پرساد نے راجیہ سبھا میں بی ایس این ایل کے لئے آرتھک پیکیج کی بات کہی تو ہے لیکن کمپنی کے بھوشیہ کو لیکر اٹکلیں جاری ہیں۔ لیکن بڑا سوال یہ ہے که آخر ایک زمانے کی نمبر ون کمپنی بیئیسنئیل اس حال میں کیسے پہنچی؟

بی ایس این ایل کا لانچ

19اکتوبر2002کو تتکالین پردھان منتری اٹل بہاری واجپیئی نے لکھنؤ سے بی ایس این ایل موبائل سیوا کی شروعات کی۔ اگلے دن بیئیسئینل نے جودھپور میں سیوا کی شروعات کی جہاں انوپم شریواستو بی ایس این ایل کے جنرل منیجر کے پد پر تھے۔

انوپم شریواستو بتاتے ہیں, "جب ہمیں بی ایس این ایل کی سمس(سم کارڈ)ملتی تھیں تب ہمیں پولیس,پرشاسن کے ورشٹھ ادھیکاریوں کو سرکشا دینے کے لئے بتانا پڑتا تھا کیونکہ اویوستھا کا خطرہ پیدا ہو جاتا تھا۔ وہ دن تھے جب بی ایس این ایل سمس کے لئے تین سے چار کلومیٹر لمبی لائنیں لگتی تھیں۔"

یہ وہ وکت تھا جب نجی آپریٹروں نے بی ایس این ایل کے لانچ کے مہینوں پہلے موبائل سیوائیں شروع کر دی تھیں لیکن بی ایس این ایل کی سیوائیں اتنی لوکپریہ ہوئیں که بی ایس این ایل کے'سیلون'بریڈ کی مانگ زبردست طریقے سے بڑھ گئی۔ ادھیکاری غرو سے بتاتے ہیں که "لانچ کے کچھ مہینوں کے بعد ہی بیئیسئینل دیش کی نمبر ون موبائل سیوا بن گئی"

سرکاری دخل

ڈپارٹمینٹ آف ٹیلیکام(ڈیؤٹی)سے بی ایس این ایل کا جنم اکتوبر2000میں ہوا۔ اس میں بھارت سرکار کی100پرتیشت حصے داری تھی۔ بی ایس این ایل کی ڈور ڈیؤٹی کے ہاتھوں میں ہے جو بھارت سرکار کے سنچار منترالیہ کا حصہ ہے۔ ایمٹیئینئیل ممبئی اور دہلی میں آپریٹ کرتی تھی جبکہ باقی دیش میں بی ایس این ایل کی موجودگی ہے۔

سال2000میں ستھاپنا کے بعد بی ایس این ایل کے ادھیکاری جلد سے جلد موبائل سیوائیں شروع کرنا چاہتے تھے تاکہ وہ نجی آپریٹروں کو چنوتی دے سکیں لیکن ورشٹھ ادھیکاریوں کے مطابق انہیں ضروری سرکاری سہمتی نہیں مل پا رہی تھی۔

ومل واکھلو اس وقت بیئیسئینل میں ورشٹھ پد پر تھے۔ وہ بتاتے ہیں, "ہم کافی نراش تھے۔ ہم ایک رننیتی پر کام کرنا چاہتے تھے تاکہ ہم مقابلے کو پیچھے چھوڑ سکیں۔"وہ کہتے ہیں, "بی ایس این ایل کے بورڈ نے پرستاؤ پارت کر سیواؤں کو شروع کرنے کا فیصلہ کیا۔"

اس وقت ڈاکٹر ڈیپیئیس سیٹھ بی ایس این ایل کے پہلے پرمکھ تھے۔ وہ سرکار کے ساتھ اپنے رشتوں پر بہت بات نہیں کرنا چاہتے لیکن کہتے ہیں که شروعات میں فیصلے لینے میں جو آزادی تھی وہ دھیرے دھیرے کم ہونے لگی۔

ومل واکھلو بتاتے ہیں, "جب بی ایس این ایل کی سیواؤں کی شروعات ہوئی,اس وکت نجی آپریٹر16روپے پرتی منٹ کال کے علاوہ آٹھ روپے پرتی منٹ انکمنگ کے بھی پیسے چارج کرتے تھے۔ ہم نے انکمنگ کو مفت کیا اور آؤٹگوئنگ کالس کی قیمت ڈیڑھ روپے تک ہو گئی۔ اس سے نجی آپریٹر ہل گئے۔"

بی ایس این ایل کرمچاری2002-2005کے اس وقت کو بی ایس این ایل کا سنہرا دور بتاتے ہیں جب ہر کوئی بی ایس این ایل کا سم چاہتا تھا اور کمپنی کے پاس35ہزار کروڑ تک کا کیش رزرو تھا,جان پہچان والے بی ایس این ایل سم کے لئے منتیں کرتے تھے۔
وگیاپن
آگے پڑھیں

لال پھیتاشاہی

وگیاپن

Recommended

'ابھرچی'ایک نئی پہل جو بنا رہی ہے چھاتروں کا بھوشیہ
Invertis university

'ابھرچی'ایک نئی پہل جو بنا رہی ہے چھاتروں کا بھوشیہ

لمبی آیو اور اچھی صحت کے لئے اس ساون مہاکالیشور جیوترلنگ میں کرائیں ردرابھشیک- 22/جولائی/2019
Astrology

لمبی آیو اور اچھی صحت کے لئے اس ساون مہاکالیشور جیوترلنگ میں کرائیں ردرابھشیک- 22/جولائی/2019

وگیاپن
وگیاپن
امر اجالا کی خبروں کو فیس بک پر پانے کے لئے لائق کریں
سب سے وشوسنیہ ہندی نیوزویب سائٹ امر اجالا پر پڑھیںکاروبار سماچاراوربجٹ2019سے جڑی بریکنگ اپ ڈیٹ۔ کاروبار جگت کی انیہ خبریں جیسےپرسنل فائنینس,لائیو پراپرٹی نیوز,لیٹیسٹبینکنگ بیمہان ہندی, آن لائن مارکیٹنیوز,لیٹیسٹکارپوریٹ سماچاراوربازارآدی سے سمبندھتبریکنگ نیوز۔
 
رہیں ہر خبر سے اپ ڈیٹ,ڈاؤن لوڈ کریںامر اجالا ہندی نیوزAPPاپنے موبائل پر۔
Amar Ujala Android Hindi News APP Amar Ujala iOS Hindi News APP
وگیاپن

Spotlight

وگیاپن
وگیاپن
وگیاپن

Most Read

Business Diary

گھر میں چلانا ہے پنکھا یا ایسی تو پہلے جمع کرانا ہوگا پیسہ,پھر ملے گی بجلی

اب لوگوں کو گھر میں پنکھا یا پھر ایسی کو الیکٹرونک سامان چلانے کے لئے پہلے بھگتان کرنا ہوگا,اسکے بعد ہی گھر میں بجلی آئیگی۔ کیندر سرکار جلد ہی بجلی پر یوگ کرنے کے بعد بل بھگتان کی پرتھا کو پوری طرح سے ختم کرنے جا رہی ہے۔

16جولائی2019

وگیاپن

مینگو فیسٹیول: عام کے لذیذ وینجنوں کا لوگوں نے اٹھایا لپھت

لکھنؤ کے گومتینگر کے پریٹن بھون میں شروع ہوئے مینگو فیسٹیول میں پہنچے لوگوں نے عام سے بنے وینجنوں کا جم کر لپھت اٹھایا۔

21جولائی2019

آج کا مدعا
View more polls

Disclaimer

اپنی ویب سائٹ پر ہم ڈاٹا سنگرہ ٹولس,جیسے کی ککیج کے مادھیم سے آپکی جانکاری ایکتر کرتے ہیں تاکہ آپ کو بہتر انبھو پردان کر سکیں,ویب سائٹ کے ٹریفک کا وشلیشن کر سکیں,کانٹینٹ ویکتیگت طریقے سے پیش کر سکیں اور ہمارے پارٹنرس,جیسے کیGoogle,اور سوشل میڈیا سائٹس,جیسے کیFacebook,کے ساتھ لکشت وگیاپن پیش کرنے کے لئے اپیوگ کر سکیں۔ ساتھ ہی,اگر آپ سائن اپ کرتے ہیں,تو ہم آپ کا ای میل پتہ,فون نمبر اور انیہ وورن پوری طرح سرکشت طریقے سے سٹور کرتے ہیں۔ آپ ککیج نیتی پرشٹھ سے اپنی ککیج ہٹا سکتے ہے اور رجسٹرڈ یوجر اپنے پروفائل پیج سے اپنا ویکتیگت ڈاٹا ہٹا یا ایکسپورٹ کر سکتے ہیں۔ ہماریCookies Policy, Privacy PolicyاورTerms & Conditionsکے بارے میں پڑھیں اور اپنی سہمتی دینے کے لئےAgreeپر کلک کریں۔

Agree
Web Tranliteration/Translation