Loading...
Mahatma Gandhi 150th Anniversary Pm Modi Bjp Mp 'padyatra' From Gandhi Jayanti To Patel October -مہاتما گاندھی150ویں جینتی پی ایم مودی کی اس چنوتی سے کیسے نپٹیگی کانگریس؟- Amar Ujala Hindi News Live
وگیاپن
وگیاپن

مہاتما گاندھی150ویں جینتی پی ایم مودی کی اس چنوتی سے کیسے نپٹیگی کانگریس؟

Ajay Khemariyaاجے کھیمریا Updated Wed, 10 Jul 2019 06:26 PM IST
سردار ولبھ بھائی پٹیل اور مہاتما گاندھی(فاعل فوٹو)
سردار ولبھ بھائی پٹیل اور مہاتما گاندھی(فاعل فوٹو) -فوٹو:فاعل فوٹو
خبر سنیں
جس کانگریس کو موہن داس گاندھی نے پلوت او پشپت کیا,لگتا ہے وہ134سال میں ہارنے کے بعد تھک بھی گئی ہے۔ ایکہتاش پارٹی اس گاندھی کی سادھنا میں لگی ہے جو پچھلے کئی دشکوں سے سینکڑوں لوگوں کے لئے ستا کی پارس پتھر یا ہے جو سپرش ہوتے ہی کسی بھی عام آدمی کو ستا کے گلیاروں میں گلامنبی,سلمان خورشید,پرتبھا پاٹل او منموہن سنگھ بنا سکتا ہے۔ لیکن بدلے ہوئے وقت میں پارس خود کیول پتھر سا بن کر رہ گیا۔ نئی پیڑھی کے گاندھی نے اپنی کرپا کو کچھوے کی طرح سمیٹ رکھا ہے فی الحال۔
وگیاپن
کانگریس اور گاندھی کے بیچ دوریاں
دشکوں تک کرپاپاتر رہے ستا سے ہریائے ایلیٹ(ابھجن)دبلایے جا رہے ہیں کیونکہ نہرو گاندھی مطلب لٹینس کا اندرلوک سریکھا ویبھو,اور بن گاندھی مودی کی نرمم دنیا,لیکن سوال یہ ہے که کیا کانگریس میں گاندھی یگ پھر سے ستھاپت ہونا چاہئیے؟

کیا واستو میں گاندھی سے کوئی ویچارک سروکار اس پارٹی کے بچے ہیں؟ بہت گہرے میں مت جائیے۔ گاندھی کا کانگریس سے رشتہ آزادی کے بعد کبھی رہا ہی نہیں ہے۔اندرا گاندھی کے آتے آتے یہ رشتہ ہند مہاساگر میں سمادھی لے گیا۔ آج جس استتو کے سنکٹ کا سامنا134سال پرانی پارٹی کو کرنا پڑ رہا ہے اسکی بنیاد بھی گاندھی ہی ہیں,لیکن یہ نہرو گاندھی نہیں مہاتما گاندھی ہیں۔ موہن داس کرم چند گاندھی۔

مدعا یہ ہے که کانگریس کی ویتھکاؤں میں لوگ آزادی کے بعد کس گاندھی کو اپنے نزدیک محسوس کرتے ہیں؟ سوابھوک ہی ہے نہرو گاندھی کو۔ دونوں میں بڑا بنیادی فرقہے۔ ایک ستا کے ذریعے سشاسن او لوککلیان کی بات کرتا ہے دوسرا دھرمستا کی,بھارتیہ سناتن مولیوں کی وکالت کرتا ہے۔ایک آتما کی بات کرتا ہے دوسرا شریر کی۔

ظاہر ہی ہے آتما کی انوبھوتی درہ ہی ہوگی اسلئے پوربندر کے گاندھی کا بوریا بستر تو24اکبر روڈ سے بدھنا ہی تھا۔ لیکن ہمیں یہ بھی پتہ ہے شریر کی سیما ہے۔ آج134سال بعد یہ دم توڑ رہا ہے۔ ویچارکی کے بنا کوئی سنستھان آخری کب تک ٹک پاتا ہے۔ وچار بھی کھوکھلے او صرف ہوائی آدرش ہو نگے تو وہی حال ہوتا ہے جو وام وچار کا پوری دنیا مے ہوا۔ کبھی بھی کہیں بھی لال کرانتی ستھائی نہیںہوئی۔

کہیں بھی ستا صرف بندوق کی نال سے نکلی۔ کہیں نکلی بھی تو ستھائی نہی ہو سکی,کیونکہ کمینجم زمین پر ٹکاؤ نہیں ہے نہ ہی معنویہ اتہاس سے اسکا کوئی سروکار۔لیکن یہ حقیقت ہے که گاندھی یعنی موہن داس کرم چند گاندھی کی ویچارکی نہ تو کھوکھلی تھی نہ ہوائی آدرش کا مجایرا,کیونکہ گاندھی تو بھارت کے وچاروں کو ہی آگے بڑھا رہے تھے جو اسی دھرتی سے نکلے ہیں ہزاروں سال پہلے۔
وگیاپن
آگے پڑھیں

وگیاپن

Recommended

بنائیں ڈجیٹل میڈیا میں کریر,کورس کے بعد پلیسمینٹ کا بھی موقع
TAMS

بنائیں ڈجیٹل میڈیا میں کریر,کورس کے بعد پلیسمینٹ کا بھی موقع

اپنی سنتان کی لمبی آیو کے لئے اس جنم اشٹمی متھرا میں سنتان گوپال پاٹھ اور ہون کروائیں- 24اگست2019
Astrology Services

اپنی سنتان کی لمبی آیو کے لئے اس جنم اشٹمی متھرا میں سنتان گوپال پاٹھ اور ہون کروائیں- 24اگست2019

وگیاپن
وگیاپن
امر اجالا کی خبروں کو فیس بک پر پانے کے لئے لائق کریں

Spotlight

وگیاپن
وگیاپن
وگیاپن
وگیاپن

رام مندر میں سونے کی اینٹ لگوائیگا یہ مغل ونشج!

خود کو مغل سامراجیہ کے انتم شاسک بہادر شاہ جفر کا ونشج بتانے والے راج کمار یعقوب ہبیبدین تسی نے ایودھیا میں رام مندر نرمان کے لئے سونے کی اینٹ دان دینے کا پرستاؤ دیا ہے۔

19اگست2019

آج کا مدعا
View more polls

Disclaimer

اپنی ویب سائٹ پر ہم ڈاٹا سنگرہ ٹولس,جیسے کی ککیج کے مادھیم سے آپکی جانکاری ایکتر کرتے ہیں تاکہ آپ کو بہتر انبھو پردان کر سکیں,ویب سائٹ کے ٹریفک کا وشلیشن کر سکیں,کانٹینٹ ویکتیگت طریقے سے پیش کر سکیں اور ہمارے پارٹنرس,جیسے کیGoogle,اور سوشل میڈیا سائٹس,جیسے کیFacebook,کے ساتھ لکشت وگیاپن پیش کرنے کے لئے اپیوگ کر سکیں۔ ساتھ ہی,اگر آپ سائن اپ کرتے ہیں,تو ہم آپ کا ای میل پتہ,فون نمبر اور انیہ وورن پوری طرح سرکشت طریقے سے سٹور کرتے ہیں۔ آپ ککیج نیتی پرشٹھ سے اپنی ککیج ہٹا سکتے ہے اور رجسٹرڈ یوجر اپنے پروفائل پیج سے اپنا ویکتیگت ڈاٹا ہٹا یا ایکسپورٹ کر سکتے ہیں۔ ہماریCookies Policy, Privacy PolicyاورTerms & Conditionsکے بارے میں پڑھیں اور اپنی سہمتی دینے کے لئےAgreeپر کلک کریں۔

Agree
Web Tranliteration/Translation