Loading...
Sachin Pilot Said To Amar Ujala, Rahul Will Be Pm If Congress In Government -امر اجالاExclusive:سچن پائلٹ بولے,کانگریس کی سرکار بنی تو راہل ہی ہو نگے پردھان منتری- Amar Ujala Hindi News Live
وگیاپن
وگیاپن

امر اجالاExclusive:سچن پائلٹ بولے,کانگریس کی سرکار بنی تو راہل ہی ہو نگے پردھان منتری

ونود اگن ہوتری,نئی دہلی Updated Mon, 13 May 2019 02:55 AM IST
سچن پائلٹ(فاعل فوٹو)
سچن پائلٹ(فاعل فوٹو)
خبر سنیں
راجستھان کے اپمکھیمنتری اور پردیش کانگریس ادھیکش سچن پائلٹ کا کہنا ہے,اگر کانگریس کی سرکار بنی تو راہل گاندھی ہی پردھان منتری ہو نگے۔ راشٹرواد بھاجپا کے لئے ایک جملہ ہے,جبکہ کانگریس کے لئے ایک جذبہ۔ چناؤ کو لیکر سچن پائلٹ سے ونود اگن ہوتری کی وشیش بات چیت
وگیاپن
راجستھان میں کانگریس کتنی سیٹیں جیتنے کی امید ہے۔
راجستھان میں پرمپرا رہی ہے که ودھان سبھا چناووں میں جو پارٹی جیتتی ہے,لوک سبھا چناووں میں بھی اسکا ہی پلڑا بھاری رہتا ہے۔ ہمیں امید ہے که2009اور2014کی طرح اس بار بھی ایسا ہی ہوگا۔ ویسے ہمارا مشن25ہے جیسے پچھلی بار بھاجپا نے سبھی25سیٹیں جیتی تھی,اس بار کانگریس کا لکشیہ سبھی25سیٹیں جیتنا ہے۔ ویسے بھی کیندر کی بھاجپا سرکار اور پردھان منتری نریندر مودی نے پچھلے پانچ سالوں میں لوگوں کو نراش ہی کیا ہے۔

کیا ودھان سبھا چناووں کی طرح اس بار بھی ٹکٹ بٹوارے میں گڑبڑ ہوئی۔
اس بار ہم نے جلا تحصیل اور بلاک سطر تک کے کاریہ کرتاؤں اور نیتاؤں سے صلاح مشورہ کرکے سبھی25سیٹوں پر ٹکٹ دیئے گئے ہیں۔ بطور پردیش ادھیکش میں کہہ سکتا ہوں که اتنے ویاپک اور لمبے وچار ومرش کے بعد پہلی بار ٹکٹ وترن ہوا ہے۔ جبکہ اسکے الٹ بھاجپا نے چار سانسدوں اور ایک منتری کا ٹکٹ کاٹا اور ایک سیٹ سمجھوتے میں دی۔ اس سے بھاجپا کاریہ کرتاؤں میں کافی اسنتوش رہا۔

ودھان سبھا چناووں میں بھی نتیجوں سے پہلے کانگریس150سیٹیں جیتنے کا دعویٰ کر رہی تھی۔ لیکن جب نتیجے آئے تو99پر آ کر رک گئی۔ کیا لوک سبھا چناووں میں بھی ایسا نہیں ہوگا کیونکہنریندر مودی کے طوفانی پرچار سے ستھتیاں کافی حد تک بدل بھی جاتی ہیں۔
نریندر مودی جی نے ودھان سبھا چناووں میں بھی طوفانی پرچار کیا لیکن بھاجپا کی ہار نہیں بچا سکے۔ پچھلے ودھان سبھا چناووں میں بھاجپا کی200میں165سیٹیں آئیں اور اس بار70رہ گئیں۔ انہیں95سیٹوں کا نقصان ہوا,جبکہ کانگریس کی21سیٹیں آئیں تھیں جو اب101ہیں۔ یعنی ہم نے80سیٹیں بڑھائیں۔ اس طرح جو سونگ ہے وہ کانگریس کے پکش میں ساڑھے بارہ فیصدی کا ہے جو اپرتیاشت ہے۔ یہی دشا لوک سبھا چناووں میں بھی رہیگی۔

بھاجپا کا سیدھا سوال ہے مودی کے سامنے کون۔ کانگریس کے پاس اسکا کیا جواب ہے۔
یہ کوئی بڑا مدعا نہیں ہے۔ اصلی مدعا ہے کس طرح دیش کو بھاجپا اور مودی سرکار سے چھٹکارا ملے۔ کانگریس اور اسکے سہیوگی دل اور جن راجیوں میں ہمارا گٹھ بندھن نہیں ہے,وہاں بھی دوسرے دل بھاجپا کو ہرانے میں جٹے ہیں۔ راہل جی خود کہہ چکے ہیں که چناؤ نتیجے آتے ہی اور بھاجپا کے ہارتے ہی آدھے گھنٹے میں سارے دلوں کے نیتا بیٹھ کر اس مسئلے کو سلجھا لیں گے۔ جہاں تک کانگریس کی بات ہے تو بھاجپا کے مقابلے کانگریس ہی سب سے بڑا راشٹریہ دل ہے اور راہل گاندھی ہمارے نیتا ہیں۔ کانگریس کی سرکار بنی تو راہل گاندھی ہی پردھان منتری ہو نگے,لیکن انتم نرنیہ سارے دلوں کے نیتا چناؤ بعد ملکر لیں گے۔

کیا کانگریس کو اکیلے پورن بہہ مت ملیگا۔
کانگریس اپنے سہیوگی دلوں کے ساتھ ملکر اپنی سرکار بنانے کے لئے ہی چناؤ لڑ رہی ہے۔ بہہ مت ملنے کے بعد بھی ہم اپنے سہیوگی دلوں کے ساتھ ملکر سرکار بنائینگے۔

لوک سبھا چناووں میں بھاجپا کے راشٹرواد کے جواب میں کانگریس کا مکھیہ مدعا کیا رہا۔
کانگریس کا نظریہ صاف ہے که چناؤ جنتا کے بنیادی مدعوں پر ہونے چاہئیے۔ کانگریس نے دیش کے آرتھک سنکٹ اور اتہاسک روپ سے بڑھی بیروجگاری اور کسانوں کی بدحالی کے مدعوں پر چناؤ لڑا ہے۔ ہم نے اپنی نیائے یوجنا کو جنتا کے سامنے رکھا۔ جی ڈی پی کا چھہ فیصدی شکشا پر خرچ کرنے,سرکاری نوکریوں میں خالی پڑے24لاکھ پدوں کو ایک سال میں بھرنے,سواستھیہ کا ادھیکار دینے جیسے سکاراتمک مدعوں پر چناؤ لڑا ہے۔

یعنیراشٹرواد کو آپ مدعا نہیں مانتے۔
بھاجپا جملیباج پارٹی ہے اور اسکے دو طرح کے جملے ہیں۔ ایک ستھائی جملے دوسرے موقعے کے حساب سے گڑھے گئے موکاپرست جملے۔ پاکستان,رام مندر,انوچھید370اور سمان ناگریک قانون اسکے ستھائی جملے ہیں جو ہر چناؤ میں اٹھائے جاتے ہیں۔ موقعے کے حساب سے بولے جانے والے جملے ہیں جیسے دو کروڑ روزگار ہر سال, 15لاکھ رپئے سب کے کھاتے میں,کسانوں کی آمدنی دگنی ہو جائیگی وغیرہ۔ جبکہ کانگریس ستھائی اور سکاراتمک مدعوں پر چناؤ لڑتی ہے۔ راشٹرواد کانگریس کے لئے ایک جذبہ ہے چناوی جملہ نہیں,لیکن بھاجپا کے لئے یہ موکاپرست جملہ ہے۔

آپکے حساب سے اس بار بھاجپا کے موقعے کے حساب سے استھائی جملے کیا ہیں۔
اس بار بھاجپا کے ہر ویکتی کے سر پر چھت جیسے وعدے گھر میں گھس کر مارینگے جیسے دعوے اسکے چناوی جملے ہیں۔ جبکہ بھاجپا کو اپنی سرکار کے پانچ سال کے رپورٹ کارڈ پر چناؤ لڑنا چاہئیے که اسنے جو وعدے2014میں کئے تھے,انمیں کتنے پورے کئے۔ نوٹبندی جب کی گئی تھی تب دعویٰ کیا گیا تھا که اس سے بھرشٹاچار,آتنکواد,نکسلواد آدی کا خاتمہ ہوگا,لیکن کیا ایسا ہوا۔ اسکے بعد پٹھانکوٹ,اڈی,پلوامہ جیسے آتنکوادی حملے ہوئے۔ نکسلوادی حملے بھی بڑھے ہیں۔ مودی جی صرف بھاشن دیکر چناؤ جیتنا چاہتے ہیں جبکہ جنتا کام پر ووٹ دیتی ہے۔

راجستھان ایک سیماورتی راجیہ ہے اور فوج اور سرکشا بلوں میں یہاں کے لوگ بڑی تعداد میں جاتے ہیں۔ کیا جس طرح پلوامہ کے بعد وایوسینا نے بالا کوٹ میں آتنکوادیوں کے خلاف بڑی کارروائی کی,کیا اسکا فائدہ بھاجپا کو نہیں ملیگا۔
راجستھان کی جنتا بیحد سمجھدار ہے۔ اسے پتہ ہے که آتنکواد کے خلاف اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالنے کے لئے بھاجپا سینا اور سرکشا بلوں کی بہادری کی آڑ لے رہی ہے۔ سینا کے شوریہ کا شرییہ لینے کی بھاجپا کی اس حرکت کو لوگ سویکار نہیں کرتے۔ لوگ ان مدعوں پر ووٹ دیتے ہیں جو انکی زندگی سے سیدھے جڑے ہوتے ہیں۔ بھاوناؤں کو ابھار کر کی جانے والی راجنیتی زیادہ دن نہیں چلتی۔ ودھان سبھا چناووں میں بھی یوگی آدتیناتھ نے علی بجرنگ بلی کا بھاشن دیا تھا۔ لوگوں نے اسے سویکار نہیں کیا۔ جنتا جاننا چاہتی ہے که پانچ سال مودی جی سرکار کیندر میں رہی اور راجیہ میں وسندھرا جی کی سرکار رہی تو راجستھان میں کتنے ہوائی اڈے بنے,کتنے سکول کالج بنے,پانی کی سمسیا کتنی دور ہوئی۔ کتنے اسپتال بنے۔ کتنے کارخانے لگے۔ سات کروڑ کی راجستھان کی آبادی کے لئے کیندر اور راجیہ کی بھاجپا سرکاروں نے کیا کیا۔ بات اس پر ہونی چاہئیے۔

بھاجپا کا کہنا ہے که ودھان سبھا چناووں میں جو کسانوں کی قرض معافی کا وعدہ کانگریس نے کیا تھا,لیکن کوئی قرض معافی نہیں ہوئی۔
بالکل غلط بات ہے۔18ہزار کروڑ رپئے کی قرض معافی ہم نے کی ہے,سہکاری بینکوں اور بھومی وکاس بینکو کی۔ جو ساروجنک شیتر کے ویوسائک بینک ہیں وہ بھارت سرکار کے وت منترالیہ کے ادھین ہیں,انکے ساتھ بات چیت چل رہی ہے,لیکن آچار سنہتا لگ جانے کی وجہ سے بات چیت آگے نہیں بڑھ پائی۔ جیسے ہی چناؤ پرکریا پوری ہوگی,سرکار ان بینکوں سے لئے گئے قرض کو بھی معاف کروائیگی۔ ہم نے قرض معافی کی جو سیما50ہزار رپئے تک رکھی تھی,اسے بھی ہٹا دیا ہے۔

جو پہلی بار کے متداتا ہیں بھاجپا کا دعویٰ ہے که وہ نریندر مودی کے پکش میں ہیں۔
پانچ سال پہلے کی پرستھتی الگ تھی۔ تب یووا اور پہلی بار کے متداتاؤں میں مودی جی کے پرتی ایک امید تھی۔ لیکن پاچں سال کی مودی سرکار کے کام کاج کو لیکر اب یوواؤں میں نراشا ہے۔ خاص کر بیروجگاری جس طرح بڑھی ہے اسنے یوواؤں میں اسنتوش پیدا کیا ہے۔ بھاجپا نیتاؤں اور پردھان منتری کے جملے اب انہیں آکرشت نہیں کر پا رہے ہیں۔ یووا اور پہلی بار کے متداتا سمجھدار ہیں اور وہ دیکھ رہے ہیں که انکے لئے کس کے پاس سکاراتمک یوجنا ہے۔ اسلئے بھاجپا سے انکا موہبھنگ ہو چکا ہے اور بھاری سنکھیا میں انکا سمرتھن کانگریس کو ملیگا۔

راجستھان میں بسپا کے الگ سے چناؤ لڑنے سے کانگریس کو کتنا نقصان ہوگا۔
بسپا پہلی بار چناؤ نہیں لڑ رہی ہے۔ ہر بار چناؤ لڑتی ہے۔ ویسے بھی لوک سبھا چناووں میں مقابلہ کانگریس اور بھاجپا کے بیچ ہی ہوتا ہے۔ چھوٹے دلوں کو کوئی زیادہ ووٹ نہیں ملتے ہیں۔

اگر کیندر میں کانگریس کے نیترتو میں سرکار بنتی ہے تو کیا سچن پائلٹ کیندر میں آئینگے ۔
میں ساڑھے پانچ سال سے پردیش کانگریس ادھیکش ہوں اور ہم سب نے ملکر دن رات محنت کرکے راجیہ میں کانگریس کی سرکار بنائی ہے۔ پارٹی نے مجھے جو ذمیداری دی ہے اسے میں جے پور میں ہی رہ کر نبھانا چاہتا ہوں۔

کیا وجہ ہے که پرینکا گاندھی نے راجستھان میں زیادہ پرچار نہیں کیا۔
پرینکا جی کے آنے سے لوگوں خاص کر نوجوانوں اور مہلاؤں میں بہت اتساہ ہے۔ ہم چاہتے تھے که وہ راجستھان میں اور زیادہ پرچار کریں,لیکن انکے اوپر اتر پردیش اور دیش کے تمام حصوں میں پرچار کی ذمیداری ہے,اسلئے زیادہ سمیہ نہیں مل پایا,لیکن انہوں نے جتنا پرچار کیا اس سے بھی لوگوں میں کافی اتساہ ہے۔

پردھان منتری نریندر مودی نے چنوتی دی ہے که کانگریس میں اگر ہمت ہے تو دہلی,مدھیہ پردیش اور پنجاب میں راجیو گاندھی کے نام سے چناؤ لڑ لے۔
راجیو گاندھی جی پر پردھان منتری کی ٹپنی بیحد اشوبھنیہ تھی۔ صرف کانگریس نے ہی نہیں پورے دیش نے اسے نندنیہ اور شرمناک مانا ہے۔ جہاں تک چناؤ لڑنے کی بات ہے تو شائد مودی جی کو جانکاری نہیں ہوگی که کانگریس کشمیر سے کنیاکماری تک ہر چناؤ اپنے نیتاؤں گاندھی,نہرو,پٹیل,شاستری,اندرا,راجیو کی پریرنا,سنرکشن اور انکے نام سے ہی لڑتی ہے۔ اسلئے اس طرح چنوتی دینے کی بجائے پردھان منتری اپنے کاریہ کال کے پانچ سال کے کاموں پر چرچا کریں۔

ان دنوں راجنیتی میں جس طرح بھاشا اور سامانیہ ششٹاچار کی مریادہ کا النگھن ہو رہا ہے,اس پر کیا کہیں گے۔
یہ بیحد دکھد ہے که ان دنوں راجنیتک ششٹاچار اور بھاشا کی مریادہ کا لگاتار النگھن ہو رہا ہے۔ یہ سبھی راجنیتک دلوں کے نیتاؤں اور کاریہ کرتاؤں کی ذمیداری ہے که سامانیہ ششٹاچار اور بھاشا کی مریادہ بنائے رکھیں۔ورنہ آنے والی پیڑھیاں ہمیں معاف نہیں کرینگی۔
وگیاپن

Recommended

شیئر مارکیٹ,اب نہیں رہیگا گتھی
Invertis university

شیئر مارکیٹ,اب نہیں رہیگا گتھی

سمسیا کیسی بھی ہو,پائیں اسکا اچوک سمادھان پرسدھ جیوتشاچاریوں سے کیول99روپے میں
Astrology Services

سمسیا کیسی بھی ہو,پائیں اسکا اچوک سمادھان پرسدھ جیوتشاچاریوں سے کیول99روپے میں

وگیاپن
وگیاپن
امر اجالا کی خبروں کو فیس بک پر پانے کے لئے لائق کریں

رہیں ہر خبر سے اپ ڈیٹ,ڈاؤن لوڈ کریںAndroid Hindi News apps, iOS Hindi News appsاورAmarujala Hindi News appsاپنے موبائل پہ|
Get all India News in Hindi related to live update of politics, sports, entertainment, technology and education etc. Stay updated with us for all breaking news from India News and more news in Hindi.

Spotlight

وگیاپن
وگیاپن
وگیاپن
وگیاپن

Most Read

India News

بھرشٹاچار پر مودی سرکار کا ایک اور وار,پھر22افسروں کو جبراً کیا رٹائر

جن ہت کے مولک نیم56 (جے)کے تحت22ادھیکشک/ایؤ رینک کے ورشٹھ ادھیکاریوں کو سیوانورت کیا گیا ہے۔ ان سبھی پر بھرشٹاچار اور انیہ آروپ لگے تھے۔

26اگست2019

وگیاپن

بین سٹوکس کو شراب نے بنایا آکرامک,جا چکے ہیں کئی بار جیل

کرکٹ کا نام ہی کرشمہ ہے اور اس میں کرشمیں دیکھنے کو ملتے ہی رہتے ہیں۔ بین سٹوکس کے اوشوسنیہ شتکیہ پاری کی بدولت انگلینڈ نے ایشیج سیریز کا تیسرا ٹیسٹ اپنے نام کر لیا ہے۔

26اگست2019

آج کا مدعا
View more polls

Disclaimer

اپنی ویب سائٹ پر ہم ڈاٹا سنگرہ ٹولس,جیسے کی ککیج کے مادھیم سے آپکی جانکاری ایکتر کرتے ہیں تاکہ آپ کو بہتر انبھو پردان کر سکیں,ویب سائٹ کے ٹریفک کا وشلیشن کر سکیں,کانٹینٹ ویکتیگت طریقے سے پیش کر سکیں اور ہمارے پارٹنرس,جیسے کیGoogle,اور سوشل میڈیا سائٹس,جیسے کیFacebook,کے ساتھ لکشت وگیاپن پیش کرنے کے لئے اپیوگ کر سکیں۔ ساتھ ہی,اگر آپ سائن اپ کرتے ہیں,تو ہم آپ کا ای میل پتہ,فون نمبر اور انیہ وورن پوری طرح سرکشت طریقے سے سٹور کرتے ہیں۔ آپ ککیج نیتی پرشٹھ سے اپنی ککیج ہٹا سکتے ہے اور رجسٹرڈ یوجر اپنے پروفائل پیج سے اپنا ویکتیگت ڈاٹا ہٹا یا ایکسپورٹ کر سکتے ہیں۔ ہماریCookies Policy, Privacy PolicyاورTerms & Conditionsکے بارے میں پڑھیں اور اپنی سہمتی دینے کے لئےAgreeپر کلک کریں۔

Agree
Web Tranliteration/Translation