#RohitSharma:روہت شرما نے خود کو کیا بدلہ,اتہاس بننے لگے

روہت شرما امیج کاپیرئٹ Reuters

خود کو بدلنا بیحد مشکل ہوتا ہے.

کئی بار انسان کو خود کی کمزوریوں کا پتہ نہیں چلتا.کئی بار لگاتار کوششوں کے بعد بھی انسان خود کو نہیں بدل پاتا.

لیکن ہر کسی کے جیون میں ایک ادھ پل آتے ہیں جب لگتا ہے که خود کو نہیں بدلہ تو استتو کا سنکٹ بن آئیگا.

کچھ ایسا ہی ہوا تھا روہت شرما کے ساتھ,سال2011میں,جب کے.شری کانت کے نیترتو والی چینسمتی نے بھارتیہ اپ مہا دیپ میں ہونے والے ورلڈ کپ کرکٹ کی ٹیم میں ممبئی کے اس بلیباز کو نہیں چنا.

ورلڈ کپ, 2011سے پہلے روہت شرما نے چار سال لمبے کریر میں61ون ڈے میچ کھیلے تھے اور ان میچوں میں انکی بلے باز کا اوسط27رن پرتی پاری تھا اور دو شتک انکی جھولی میں تھے.کل1248رن انکے نام تھے.ایسے پردرشن سے انکی جگہ ٹیم میں بنتی بھی نہیں تھی.

حالانکہ انکی بلیبازی کا یہ اوسط تب تھا,جب روہت کو بھارتیہ کرکٹ کا سب سے پرتبھاشالی بلیباز آنکہ جا رہا تھا.اپنی کلائی کے بوتے انمیں کسی بھی گیندباز کو میدان کے کسی بھی کونے سے باؤنڈری پار بھیجنے کا مادہ تھا.

کرکٹ کے تمام شاٹس مثلاً پل,پھلک,کور ڈرائیو,ڈرائیو,سویپ,سٹریٹ ڈرائیو روہت ہر کچھ پرفیکٹ انداز میں لگاتے.انکی ٹائمنگ کمال کی تھی,کسی بھی گیند کو کھیلنے کے لئے انکے پاس ہر وقت زیادہ سمیہ ہوتا تھا.

انکے آلوچک بھی انہیں گاڈ گپھٹیڈ بلیباز مانتے.لیکن اپنی تمام نیسرگک قابلیت کے باوجود روہت شرما کے پردرشن میں نرنترتا کی کمی تھی.

روہت شرما امیج کاپیرئٹ Getty Images

انٹرنیشنل کرکٹ میں کامیاب ہونے کے لئے جس ٹیمپرامینٹ اور انوشاسن کی ضرورت تھی,روہت کے نظریے میں انکا کوئی معنی نہیں تھا.کرکٹ کے میدان اور نیٹس سے زیادہ روہت کا سمیہ دیر رات کی پارٹیوں میں گزرتا تھا اور دھیرے دھیرے وہ انپھٹ بھی ہو رہے تھے.

ایسا لگنے لگا تھا که ونود کامبلی کی طرح ایک بیحد پرتبھاشالی کرکٹ کا کریر اب سمٹنے لگا ہے,تب پہلی بار روہت کو ورلڈ کپ کرکٹ ٹیم سے باہر ہونا خلاء.ٹیم انڈیا جب ورلڈ کپ جیت کا تحفہ سچن تیندولکر کو بھینٹ دے رہی تھی,تب روہت کو انکے انترمن نے نشچت طور پر کچوٹا ہوگا.

آتم منتھن کے اسی دور میں روہت نے خود کو بدلنے کا فیصلہ لیا.جون, 2011میں جب ویسٹئنڈیز کے دورے پر روہت گئے تو چھہ ون ڈے میچوں میں انہوں نے تین ہاف سینچری جمائی اور اسکے بعد جب ویسٹئنڈیز کی ٹیم بھارت دورے پر آئی تو پانچ ون ڈے میچوں میں تین ہاف سینچری انکے بلے سے نکلی.لگا روہت لے میں لوٹنے لگے ہیں,تبھی انکے کریر کا سب سے برا سال شروع ہوا.

2012میں روہت نے14ون ڈے میچ کھیلے اور ان میں12کی اوسط سے محض168رن بنائے.ان سے ایک سال چھوٹے وراٹ کوہلی اور چیتیشور پجارا بھارتیہ ٹیم میں اپنی جگہ پکی کر چکے تھے,لیکن روہت شرما کو اب تک ٹیسٹ میچ کھیلنے کا موقع نہیں ملا تھا اور ون ڈے ٹیم میں بھی انکا پتّہ صاف ہونے والا تھا.

ایسے میں,سال2013انکے لئے بیحد اہم ثابت ہونے والا تھا.روہت ملے موقعے کا فائدہ نہیں اٹھا پاتے تو یہ انکے کریر کا انتم سال ثابت ہوتا.اس چنوتی کو سویکار کرتے ہوئے روہت خود کو بدلنے میں جٹے تھے.نیٹس پر وہ دوسرے بلیبازوں کے مقابلے ایک گھنٹہ زیادہ پریکٹس کرنے لگے تھے.

روہت شرما امیج کاپیرئٹ AFP/Getty Images

ممبئی کے کوچ پروین آمرے کے مطابق روہت کو نیٹس پر کبھی کسی صلاح کی ضرورت نہیں پڑی.خود کو فٹ رکھنے کے لئے انہوں نے گھنٹوں کا ابھیاس شروع کیا.جب روہت نے اپنی اور سے کوششیں شروع کیں تو قسمت نے بھی انکا ساتھ دیا.ٹیم پربندھن نے ضرورت کے مطابق انہیں اوپننگ کی ذمیداری دی.آئی پی ای میں ممبئی انڈینس کی کپتانی نے بھی انہیں میچیور بنایا.

2013میں انگلینڈ میں آیوجت چیمپئنز ٹرافی میں روہت اوپنر کے طور پر کامیاب بلیباز ثابت ہوئے.شکھر دھون کے ساتھ انکی جوڑی نے گوتم گمبھیر اور ویریندر سہواگ کی جوڑی کی کوئی کمی نہیں کھلنے دی.

اسکے بعد آسٹریلیا کے خلاف گھریلو میدان پر کھیلی گئی سیریز میں جے پور میں ناباد141رن بنانے کے بعد انہوں نے بینگلور میں209رنوں کا پہاڑ کھڑا کر دیا. 209رن میں روہت نے کل16چھکے لگائے.انکے فارم کو دیکھتے ہوئے ٹیسٹ میچ میں موقع ملا تو پہلے ہی میچ میں کولکاتہ کے ایڈین گارڈین میں روہت نے176رن ٹھوک دیئے.

روہت کی کامیابی کی پیچھے ایک ہی وجہ رہی,وہ گاڈ گپھٹیڈ ٹیلینٹ کو تراشنے میں جٹ گئے تھے.دیر سے ہی صحیح انہیں معلوم ہو گیا تھا که کیول ٹیلینٹ سے کام نہیں چلتا.

اسی مانسکتا کے چلتے ایڈین گارڈین میں شری لنکا کے خلاف چوٹ کے بعد ون ڈے واپسی کر رہے روہت شرما نے وکیٹ پر ٹکنے کو اپنا پہلا لکشیہ بنایا.جمنے کے بعد ان پر انکش لگانا کسی کے بس میں نہیں رہا.

اسکا دوسرا نظارہ انہوں نے13نومبر, 2014کو تب دیا جب انہوں نے شری لنکا کے خلاف ون ڈے مقابلے میں ایڈین گارڈین کے میدان میں264رن ٹھوک دیا.

اتہاس بنانے والی پاری کی آخری گیند پر آؤٹ ہونے کے بعد پیویلین لوٹنے پر جب ان سے پوچھا گیا که کیا آپ تھک گئے تھے,تو انکا جواب تھا,جی نہیں,میں اگلے پچاس اوور اور کھیل سکتا تھا.یہ جواب بتاتا ہے که,انکا کھیل کے پرتی نظریہ اور ٹیمپرامینٹ دونوں بدل چکا ہے.انہیں اپنے ٹیلینٹ کا اندازہ ہو چکا ہے.

روہت شرما امیج کاپیرئٹ AFP/Getty Images

کہہ سکتے ہیں روہت شرما اس مقام تک پہنچ چکے تھے جہاں سے پیچھے مڑ کر دیکھنے کی کوئی بات ہی نہیں تھی.اسکا اندازہ آپ اس سے لگا سکتے ہیں که تب تک124ون ڈے میچوں میں روہت شرما نے3479رن بنائے تھے,جسمیں محض تین شتک شامل تھے.

اس طوفانی پاری سے جو سفر روہت نے شروع کیا وہ شری لنکا کے خلاف مقابلے تک کل90میچوں تک پہنچا ہے اور اس میں روہت شرما نے5178رن ٹھوک دیئے ہیں,اور تو اور اس میں کل23شتک انکے بلے سے نکلے ہیں,یعنی ہر چوتھے ون ڈے سے پہلے روہت شرما کے بلے سے شتک نکلا ہے.

2011کے ورلڈ کپ سے باہر بٹھائے گئے روہت شرما2015کے ورلڈ کپ میں شامل ہوئے اور بانگلادیش کے خلاف کے شاندار شتک بناکر ٹیم کو سیمی فائنل تک پہنچایا.لیکن وہ ایکس فیکڑ ثابت نہیں ہو پائے.ٹیم سیمی فائنل میں آسٹریلیا سے ہاری تو کپ کے ساتھ ساتھ روہت شرما کو کچھ کم رہ جانے کا ملال رہ گیا ہوگا.

روہت شرما امیج کاپیرئٹ @ImRo45
Image caption روہت شرما کی پتنی رتیکا سجدیہ اپنی بیٹی سمایرا کے ساتھ

اسی سال روہت نے اپنے منگیتر رتیکا سجدیہ سے وواہ بھی رچا لیا.پتنی رتیکا کے ساتھ نے انکے کھیل کو ستھرتا دی,انہیں معلوم ہو گیا تھا که وہ جب چاہیں ایک بڑی پاری کھیل سکتے ہیں.

پھر2017میں ایک بار پھر انہوں نے موہالی میں شری لنکائی ٹیم کی خبر لی اور ون ڈے کرکٹ میں تیسرا دوہرا شتک ٹھوک دیا.ایسا کرشمہ کر دکھانے والے روہت شرما دنیا بھر کے اکلوتے بلیباز بنے ہوئے ہیں.

اس پاری کے بعد جب ان سے چھکے لگانے کا راج پوچھا گیا تو انکا جواب تھا, ''چھکے مارنا آسان نہیں ہے,وشواس کیجئے.یہ کافی ابھیاس اور کڑی محنت کے بعد آتا ہے.کرکٹ میں کچھ بھی آسان نہیں ہوتا.ٹی وی پر بھلے آسان لگے.''

اس سے صاف ہوتا ہے که روہت اس مرم کو سمجھ گئے تھے جہاں سے انکے لئے ہر مشکل کو آسان بنانا سہج ہو چکا تھا.لیکن جس طرح سے وہ انگلیڈ میں چل رہے ورلڈ کپ میں بلیبازی کر رہے ہیں اس سے لگ تو یہی رہا ہے که وہ یہاں پہلے2011ورلڈکپ اور پھر2015میں امید سے بہتر پردرشن نہیں کر پانے کے ملال کو اپنے سینے میں دبائے آئے ہیں.

دکشن افریقہ,پاکستان اور انگلینڈ جیسی دمدار ٹیموں کے خلاف شتک سہت روہت اس ورلڈ کپ میں پانچ شتک ٹھوک چکے ہیں.سنگل ورلڈ کپ میں اتنے شتک اب تک کوئی بلیباز نہیں بنا پایا ہے.ان میں تین شتک تو بیک ٹو بیک لگائے گئے ہیں.

2015میں بانگلادیش کے خلاف شتک کو ملا دیں تو روہت شرما کے ورلڈ کپ میں چھہ شتک ہیں.اتنے ہی شتک سچن تیندولکر نے بھی بنائے تھے.سچن تیندولکر کو اتنے شتک تک پہنچنے کے لئے44میچ کھیلنے پڑے تھے جبکہ چھہ شتک روہت شرما نے محض16ورلڈ کپ میچوں میں ٹھوک دیئے ہیں.

روہت شرما امیج کاپیرئٹ @ImRo45

حالانکہ ورلڈ کپ کے شتکوں میں روہت شرما کا ایک دوسرا انداز دکھا ہے.آخری کے تین لگاتار میچوں میں شتک بنانے کے بعد روہت شرما جلدی آؤٹ ہوئے ہیں,جبکہ روہت شرما اپنے شتک کو بڑی پاری میں تبدیل کرنے کے لئے جانے جاتے رہے ہیں.جان کار بتاتے ہیں,انہیں شتک زمانے کے بعد اپنی پاری پر زیادہ فوکس کرنا ہوگا.

روہت شتک کے بعد جس تیز انداز میں گیندبازوں کی دھلائی کرتے ہیں,اسکی ٹیم انڈیا کو سب سے زیادہ ضرورت سیمی فائنل اور فائنل مقابلے میں ہوگی.

روہت نے اس ورلڈ کپ میں جو اتہاس بنایا ہے وہ اور بھی سنہرا ہو سکتا ہے اگر باقی کے دو میچوں میں انکا بلا رن اگلتا رہا.ورلڈ کپ2019میں اب تک روہت شرما نے آٹھ میچوں میں647رن بنائے ہیں.ایک ورلڈ کپ میں سب سے زیادہ رن کے سچن تیندولکر کے673رن کا ریکارڈ توڑنے سے روہت محض26رن دور ہیں.اگر وہ ایک اور شتک بنا لیتے ہیں تو ورلڈ کپ میں سب سے زیادہ شتک لگانے کا ریکارڈ انکے نام ہو جائیگا اور انگلش میدان پر بھی سب سے زیادہ شتک لگانے والے ودیشی بلیباز بن سکتے ہیں.

اگر روہت سیمی فائنل میں بھی شتک بنا دیتے ہیں تو پھر وہ2015ورلڈ کپ میں کمار سنگاکارا کے بیک ٹو بیک چار شتکوں کے ریکارڈ کی برابری بھی کر لیں گے.روہت شرما جس انداز میں ابھی کھیل رہے ہیں اس میں وہ کچھ بھی کمال دکھا سکتے ہیں لیکن اسکے لئے انہیں وکیٹ پر ٹکنا ہوگا.

پچھلے دو میچوں میں لوکیش راہل کے ساتھ روہت شرما نے جس انداز میں180اور189رنوں کی بھاگیداری کی ہے,اسے دیکھتے ہوئے ان سے امیدیں کہیں زیادہ ہیں اور انھیں امیدوں پر ٹکا ہے ٹیم انڈیا کے ورلڈ کپ جیتنے کا سپنا.

آٹھ سال بعد ہی صحیح روہت شرما کے پاس موقع ہے خود کو سٹار کھلاڑی سے لیجینڈ کے طور پر ستھاپت ہوتے دیکھنے کا,وہ ایسا نہیں کر پائے تو اسکی کسک کیا ہوگی,یہ ان سے بہتر کوئی کیا جانیگا.

(بی بی سی ہندی کے اینڈرائیڈ ایپ کے لئے آپیہاں کلککر سکتے ہیں.آپ ہمیںفیسبک, ٹوٹّر, انسٹاگراماوریوٹیوبپر فالو بھی کر سکتے ہیں.)

بی بی سی نیوز میکرس

چرچا میں رہے لوگوں سے بات چیت پر آدھارت ساپتاہک کاریہ کرم

سنئے

ملتے جلتے مدعے