Loading...
Lifestyle News In Hindi : first black to attend University of Alabama got threats in 1956 Now got honorary degree |اشویت ہونے کے کارن لوسی کو الباما یونیورسٹی نے نشکاست کیا تھا, 63سال بعد اپادھی دی- Dainik Bhaskar

امریکہ/ اشویت ہونے کے کارن لوسی کو الباما یونیورسٹی نے نشکاست کیا تھا, 63سال بعد اپادھی دی

Dainik Bhaskar

May 15, 2019, 08:14 AM IST


first black to attend University of Alabama got threats in 1956 Now got honorary degree
X
first black to attend University of Alabama got threats in 1956 Now got honorary degree

  • لوسی کو ایڈمشن کے3بعد ہی ورودھ کا سامنا کرنا پڑا,جان سے مارنے تک کی دھمکی بھی ملی
  • لوسی کے سمان میں یونیورسٹی نے کلاک ٹاور بنوایا,انکے نام پر سکالر شپ شروع کی

لائف سٹائل ڈیسک. آتھرین لوسی پھاسٹر پہلی اشویت ہیں جنہیں امریکہ کی الباما یونیورسٹی میں ایڈمشن ملا تھا,لیکن پرویش کے تین دن بعد ہی نشکاست کر دیا گیا تھا۔ کارن,لوسی کے اشویت ہونے کے کارن یونیورسٹی میں بڑھتا وواد اور دنگے بتائے گئے تھے۔ حال ہی میں یونیورسٹی نے63سال بعد انھیں ماند اپادھی سے سمانت کیا ہے۔ 

کورٹ میں جنگ جیتنے کے بعد بھی یونیورسٹی سے نکالا گیا

  1. ''

     

    لوسی89سال کی ہیں۔1952میں جب انہوں نے پرویش کے لئے الباما یونوسرٹی میں آویدن کیا تو اسے خارج کر دیا گیا۔ لوسی اسکے خلاف کورٹ گئیں اور قریب پانچ سال بعد فیصلہ انکے پکش میں آیا۔ جب یونیورسٹی میں پڑھائی شروع کی تو محض تین دن بعد اشویت ہونے کے کارن ورودھ کا سامنا کرنا پڑا۔ انہیں جان سے مارنے تک کی دھمکی دی گئی۔ لگاتار ورودھ اور نسلیہ وواد کے کارن انہیں یونیورسٹی سے نکال دیا گیا تھا۔ 

  2. رنگ لائی لوسی کی لڑائی

    ''

     

    سالوں چلے سنگھرش کے بعد سکول سے انکی برخاستگی کو1988میں ردّ کیا گیا۔1991میں لوسی نے الباما یونیورسٹی سے ماسٹر ڈگری پوری کی۔ کئی دشک بعد یونیورسٹی نے لوسی کو ماند اپادھی سے سمانت کیا ہے۔ یونیورسٹی نے اس پر ایک بیان جاری کیا ہے۔ بیان کے مطابق,ایجو کیشن سسٹم کو الگ بنانے کے لئے لوسی نے بہادری دکھائی۔ لوسی پھاسٹر کو اس دور میں بھلے ہی ایڈمشن نہیں ملا,لیکن دشکوں تک چلے انکے سنگھرش کے بعد کئی اشویت چھاتروں کو یہاں ایڈمشن دیا گیا۔ اتنا ہی نہیں لوسی کے سمان میں یونیورسٹی نے نومبر2010میں لوسی کلاک ٹاور کا نرمان کرایا۔ یونیورسٹی نے لوسی کے نام پر ایک سکالر شپ بھی شروع کی ہے۔

  3. میں وہاں ناخوش نہیں,ہنستے ہوئے چہرے دیکھ رہی تھی

    ''

     

    لوسی نے ماند اپادھی کے انبھو کو شیئر کرتے ہوئے کہا,میں رو نہیں رہی تھی,لیکن آنسو میری آنکھوں سے نکلتے جا رہے تھے۔ یہ کافی الگ اور خاص طرح کا انبھو تھا۔ فرق یہ تھا که کبھی مجھے دیکھ کر یہاں لوگ منھ بناتے تھے اور ناخوش دکھتے تھے ایسا آج نہیں ہے۔ میں وہاں ہنستے ہوئے چہروں کو دیکھ رہی تھی۔

COMMENT

کس پارٹی کو ملینگی کتنی سیٹیں؟اندازہ لگائیں اور انعام جیتیں

  • پارٹی
  • 2019
  • 2014
336
60
147
  • Total
  • 0/543
  • 543
کانٹیسٹ میں پارٹسپیٹ کرنے کے لئے اپنی ڈٹیلس بھریں

پارٹسپیٹ کرنے کے لئے دھنیواد

Total count should be

543
Web Tranliteration/Translation