Loading...
Lifestyle News In Hindi : Scientists find hair of Ancient Egyptian noblewomen perfectly preserved after 3000 years |وگیانکوں نے بتایا3ہزار سال پرانی ممی کے بالوں کا راج,پراکرتک تیل اور بام سے رہے برقرار- Dainik Bhaskar

ریسرچ/ وگیانکوں نے بتایا3ہزار سال پرانی ممی کے بالوں کا راج,پراکرتک تیل اور بام سے رہے برقرار



Scientists find hair of Ancient Egyptian noblewomen perfectly preserved after 3000 years
X
Scientists find hair of Ancient Egyptian noblewomen perfectly preserved after 3000 years

  • روسی وگیانکوں نے پراچین مصر کی3ممی پر کیا شودھ,بالوں پر انپھراریڈ کا کیا استعمال
  • شودھ کرتاؤں کا دعویٰ  پستہ کا تیل سمیت کئی پراکرتک چیزوں سے3ہزار سال بعد بھی برقرار رہے بال

Dainik Bhaskar

Jul 11, 2019, 01:17 PM IST

لائف سٹائل ڈیسک. تین ہزار پرانی ممی کے بال لمبے سمیہ تک کیسے سنرکشت رہے, روسی وگیانکوں نے اسکا پتہ لگایا ہے۔ ماسکو کے کرچتوو انسٹی ٹیوٹ کے وگیانکوں نے بالوں پر ریسرچ کی ہے۔ انکا دعویٰ ہے که ایسا ایک خاص طرح کے بام کے کارن ہوا ہے۔ پراچین مصر کی تین ممی پر ہوئے شودھ میں کئی چونکانے والی باتیں سامنے آئی ہیں۔

پراکرتک چیزوں کا استعمال کر تیار کرتے تھے ممی

  1. شودھ کرتاؤں کے مطابق,ہزاروں سال پرانی ممی کے بالوں کا پریکشن کیا گیا ہے۔ نتیجے کے روپ میں سامنے آیا ہے که سنرکشت کرنے سے پہلے ان پر دیودار کا بام(گوند)کا پر یوگ کیا گیا تھا جسمیں کئی طرح کے پراکرتک رسائن تھے۔ اسکا پتہ لگانے کے لئے شودھ کرتاؤں نے بالوں پر انپھراریڈ سپیکٹرم کا استعمال کیا ہے۔ شودھ کے مطابق,بالوں پر لگائے جانے والے بام میں بیف فیٹ,ارنڈی, پستہ کا تیل اور مدھمکھیایں سے تیار ہوا موم پایا گیا۔

     

    ''

     

  2. ورشٹھ شودھکرتا ڈا.وکٹر پوجہادیو کا کہنا ہے که ہم یہ دیکھ کر کافی حیران تھے که اتنے ورشوں کے بعد بھی ان ممیج کے بال سرکشت رہے۔ ہمیں اندازہ تھا که اسکے لئے کسی خاص پرکار کے بام کا پر یوگ کیا جاتا ہے۔ ریسرچ میں اسکی پشٹی ہوئی۔ اسی لئے ہم اسے بنانے کی ودھی اور اس میں استعمال کی جانے والی چیزوں کو کھوجنے کی کوشش کی۔ 

     

    ''

     

  3. بال اور شریر کے لئے الگ الگ لیپ

    روسی وگیانکوں کا دعویٰ ہے که ممی کو تیار کرنے کے لئے دو طرح کا لیپ تیار کیا گیا جاتا تھا۔ ایک بالوں کے لئے اور دوسرا شریر پر لگانے کے لئے۔ ورتمان میں ممی سے جڑی چیزوں کا پتہ لگانے کے لئے وگیانک پاجٹرون ایمشن ٹوموگراپھی اور کمپیوٹر ٹوموگراپھی کا استعمال کر رہے ہیں۔ ریسرچ ماسکو کے پشکن سٹیٹ میوزیم میں رکھی ممیج پر کی گئی ہے۔ 

  4. مصر میں پوروجوں کے شو کو سنرکشت رکھتے تھے

    پراچین مصر میں شووں کو سہیجنے کا طریقہ بھی انوٹھا تھا۔ اسے ممی میں تبدیل کرنے کے لئے مرت شریر کے آنترک انگوں کو نکال کر اسے نمک کے ساتھ رکھتے تھے تاکہ نمی ہٹ جائے۔ پورے شریر پر پودے سے نکلا تیل اور ریجن کا بام لگاکر کپڑا لپیٹ دیا جاتا تھا۔ مانا جاتا ہے که پرانی ممی کو پراکرتک روپ سے سوکھی ریگستانی ریت میں دفن کرکے سنرکشت جاتا تھا۔

COMMENT
Web Tranliteration/Translation