Loading...
Madhya Pradesh News In Hindi : ramadan tradition in raisen |توپ کی آواز سن کر روجیدار کھولتے ہیں روزہ, 200سال پرانی ہے پرمپرا- Dainik Bhaskar

رمضان/ توپ کی آواز سن کر روجیدار کھولتے ہیں روزہ, 200سال پرانی ہے پرمپرا



رایسین میں توپ کی آواز سن کر لوگ روزہ کھولتے ہیں۔ رایسین میں توپ کی آواز سن کر لوگ روزہ کھولتے ہیں۔
یہاں200سال سے یہ پرمپرا چلی آ رہی ہے۔ یہاں200سال سے یہ پرمپرا چلی آ رہی ہے۔
توپ چلانے کے لئے مسجد سے سگنل دیا جاتا ہے۔ توپ چلانے کے لئے مسجد سے سگنل دیا جاتا ہے۔
ایک ہی پریوار کے سدسیہ یہ پرمپرا نبھا رہا ہے۔ ایک ہی پریوار کے سدسیہ یہ پرمپرا نبھا رہا ہے۔
سیہری اور اپھتاری کے سمیہ چھوڑے جاتے ہیں گولے۔ سیہری اور اپھتاری کے سمیہ چھوڑے جاتے ہیں گولے۔
رمضان شورو ہونے کی سوچنا توپ کے گولے چھوڑکر دی جاتی ہے۔ رمضان شورو ہونے کی سوچنا توپ کے گولے چھوڑکر دی جاتی ہے۔
عید کے ایک دن پہلے اور عید کے دن بھی سات سات گولے چھوڑے جاتے ہیں۔ عید کے ایک دن پہلے اور عید کے دن بھی سات سات گولے چھوڑے جاتے ہیں۔
X
رایسین میں توپ کی آواز سن کر لوگ روزہ کھولتے ہیں۔رایسین میں توپ کی آواز سن کر لوگ روزہ کھولتے ہیں۔
یہاں200سال سے یہ پرمپرا چلی آ رہی ہے۔یہاں200سال سے یہ پرمپرا چلی آ رہی ہے۔
توپ چلانے کے لئے مسجد سے سگنل دیا جاتا ہے۔توپ چلانے کے لئے مسجد سے سگنل دیا جاتا ہے۔
ایک ہی پریوار کے سدسیہ یہ پرمپرا نبھا رہا ہے۔ایک ہی پریوار کے سدسیہ یہ پرمپرا نبھا رہا ہے۔
سیہری اور اپھتاری کے سمیہ چھوڑے جاتے ہیں گولے۔سیہری اور اپھتاری کے سمیہ چھوڑے جاتے ہیں گولے۔
رمضان شورو ہونے کی سوچنا توپ کے گولے چھوڑکر دی جاتی ہے۔رمضان شورو ہونے کی سوچنا توپ کے گولے چھوڑکر دی جاتی ہے۔
عید کے ایک دن پہلے اور عید کے دن بھی سات سات گولے چھوڑے جاتے ہیں۔عید کے ایک دن پہلے اور عید کے دن بھی سات سات گولے چھوڑے جاتے ہیں۔

  • سیہری اور اپھتاری کی سوچنا دینے کے لئے قلعے کی پہاڑی پر چلتی ہے توپ
  • اسکی گونج30گاووں تک سنائی دیتی ہے,سالوں سے ایک ہی پریوار چلاتا آ رہا ہے

Dainik Bhaskar

May 15, 2019, 03:57 PM IST

بھوپال. مدھیہ پردیش کے رایسین ضلعے میں رمضان کے مہینے میں سیہری اور اپھتاری کے سمیہ کی جانکاری دینے کے لئے توپ چلائے جانے کی پرمپرا ہے۔ یہ پرمپرا پچھلے قریب200سال سے نبھائی جا رہی ہے۔ یہاں آج بھی مسلم سماج کے لوگ قلعے کی پہاڈی سے چلنے والی توپ کی آواز سن کر ہی روزے کھولتے ہیں۔ نوابی شاسن کال سے یہ پرمپرا چلی آ رہی ہے۔ اس توپ کی گونج قریب30گاووں تک سنائی دیتی ہے,جسے سالوں سے ایک ہی پریوار چلاتا آ رہا ہے۔ 

 

اس توپ کو چلانے کے لئے باقائدا جلا پرشاسن دوارہ ایک ماہ کا لائسینس جاری کیا جاتا ہے۔ رمضان کی سماپتی پر عید کے بعد توپ کی صافسپھائی کر اسے سرکاری گودام میں جمع کر دیا جاتا ہے۔ توپ چلانے کے لئے آدھے گھنٹے پہلے تیاری کرنا پڑتی ہے,تب کہیں جاکر سمیہ پر توپ چل پاتی ہے۔ 

 

جگانے کے لئے دو گھنٹے پہلے بجاتے ہیں نگاڑے:سمیہ کی سوچنا دینے کے لئے سیہری سے2گھنٹہ پہلے روجداروں کو جگانے کے لئے نگاڑے بجائے جاتے ہیں,تاکہ لوگ سمیہ سے پہلے تیاری کر سکیں۔ نگاڑے بجانے کی پرمپرا بھی پراچین کال سے ہی چلی آ رہی ہے۔ شہر کا ونشکار پریوار اس کام کو سنبھالے ہوئے ہے۔ نگاڑے قلعے کی پراچیر سے بجائے جاتے ہیں۔ اس سے انکی آواز میلوں دور تک سنائی دیتی ہے۔

 

مسجد سے ملتا ہے سگنل:توپ چلانے سے پہلے دونوں ٹائم ٹانکے والی مسجد سے سگنل ملتا ہے۔ سگنل کے روپ میں مسجد کی مینار پر لال رنگ بلب جلایا جاتا ہے۔ اسکے بعد قلعے کی پہاڑی سے توپ چلائی جاتی ہے۔ ایسا بتایا جاتا ہے دیش میں راجستھان میں توپ چلانے کی پرمپرا ہے۔ اسکے بعد دیش میں مپر کا رایسین دوسرا ایسا شہر ہے,جہاں پر توپ چلاکر رمضان ماہ میں سحری اور اپھتاری کی سوچنا دی جاتی ہے۔

 

خاندانی پرمپرا:توپ چلانے والے پرویز خان نے بتایا که انکے دادا کاجی برکت علاہ رمضان ماہ میں توپ چلاتے تھے,اسکے بعد انکے پتا نے توپ چلائی۔ پھر چاچا توپ چلاتے رہے۔ اب وہ چوتھی پیڑھی میں توپ چلا رہے ہیں۔ توپ کو چلانے کے لئے رسی بم کو بھرنے والی بارود کا اپیوگ کیا جاتا ہے۔ ایک بار توپ چلانے کے لئے100سے150گرام بارود کا اپیوگ ہوتا ہے۔ 

 

رات کے اندھیرے میں صبح3بجے چڑھتے ہیں قلعے پر:سیہری کی سوچنا کے لئے توپ چلانے کے لئے وہ صبح3.10بجے قلعے کی پہاڑی پر چڑھتے ہیں۔ اسکے بعد صبح3.40منٹ پر توپ چلاکر سیہری کی جانکاری دیتے ہے۔ اسی پرکار اپھتاری کے لئے شام کو پونے سات بجے قلعے پر پہنچ کر توپ چلاتے ہیں۔

COMMENT

آج کا راشی پھل

پائیں اپنا تینوں طرح کا راشی پھل,روزانہ
Web Tranliteration/Translation