Loading...
Narayan Rane: Terrorists planned to bomb Bal Thackeray house Matoshree in 1989, claims former Shiv Sena member |ماتوشری میں دھماکے کی سازش تھی,ٹھاکرے نے خود پریوار سے بنگلہ چھوڑنے کو کہا تھا- Dainik Bhaskar
  • Hindi News
  • National
  • Narayan Rane: Terrorists planned to bomb Bal Thackeray house Matoshree in 1989, claims former Shiv Sena member

کتاب میں دعویٰ/ ماتوشری میں دھماکے کی سازش تھی,ٹھاکرے نے خود پریوار سے بنگلہ چھوڑنے کو کہا تھا



Narayan Rane: Terrorists planned to bomb Bal Thackeray house Matoshree in 1989, claims former Shiv Sena member
X
Narayan Rane: Terrorists planned to bomb Bal Thackeray house Matoshree in 1989, claims former Shiv Sena member

  • نیتا نارائن رانے نے اپنی کتاب‘نو ہولڈس بیئرڈ مائے ایئر ان پالٹکس’میں کیا دعویٰ
  • رانے کے مطابق کھالستانی آتنکیوں کی ہٹ لسٹ میں تھے بال ٹھاکرے
  • مکھیہ منتری شرد پوار نے ادھو ٹھاکرے کو بلاکر دی تھی حملے کی جانکاری

Dainik Bhaskar

May 16, 2019, 11:40 AM IST

نئی دہلی.شیوسینا کے پورو نیتا نارائن رانے نے کتاب‘نو ہولڈس بیئرڈ مائے ایئر ان پالٹکس’لکھی ہے۔ اس میں انہوں نے دعویٰ کیا که ایک وقت ایسا بھی آیا,جب ماتوشری پر دھماکے کی سازش کی گئی۔ یہ سن کر خود بال ٹھاکرے نے پرجنوں سے ماتوشری کو چھوڑکر کسی سرکشت ستھان پر جانے کو کہا تھا۔ رانے کے مطابق کھالستانی آتنکیوں نے1989میں ماتوشری پر دھماکے کی یوجنا بنائی تھی۔

شیوسینا کے لوگ بھی سازش میں شامل تھے رانے

  1. اس وقت مہاراشٹر کے مکھیہ منتری شرد پوار تھے۔ انہوں نے خود ٹھاکرے کے چھوٹے بیٹے ادھو ٹھاکرے کو فون کرکے حملے کی سازش کے بارے میں سوچنا دی تھی۔ ورتمان میں بھاجپا کی اور سے راجیہ سبھا سانسد رانے نے اپنی کتاب میں دعویٰ کیا که بال ٹھاکرے اس سمیہ کھالستانی آتنکیوں کی ہٹ لسٹ میں تھے۔

  2. رانے کے مطابق 19مارچ1988کو بال ٹھاکرے نے ایک پریسوارتا کی۔ اس میں انہوں نے ایک پرشناولی بنٹوائی۔ جس کا ادیشیہ آتنکیوں کا سہیوگ کرنے والے سکھ سمودائے کے لوگوں کا پتہ لگانا تھا۔

  3. ‘‘بال ٹھاکرے نے ممبئی میں یہ گھوشنا کی تھی که یدی سکھ سمودائے کے لوگ اسی طرح چرمپنتھیوں کا سہیوگ کرتے رہے تو میں یہ سنشچت کرونگا که ساماجک اور آرتھک طور پر ایسے لوگوں کا بہشکار ہو۔ 1989میں شیوسینا مہاراشٹر کا ودھان سبھا چناؤ ہاری تھی۔ ٹھاکرے کی ستھتی کمزور تھی۔ پردیش کی سرکشا کانگریس کے نینترن میں تھی۔’’

  4. ‘‘تب ادھو کی شادی ہوئی تھی۔ مکھیہ منتری شرد پوار نے انہیں فون کرکے اکیلے ہی ملنے بلایا تھا۔ شرد پوار اور بال ٹھاکرے کے رشتے بیحد اچھے تھے۔ اسلئے انہوں نے یہ سوچنا ادھو کے ساتھ ساجھا کی تھی۔ اسکے بعد ماتوشری پر سرکشا بڑھا دی گئی۔ ہر کوئی ہائیئلرٹ پر تھا۔’’

  5. ‘‘پوار نے یہ سوچنا ٹھاکرے کو اسلئے بھی دی تھی کیونکہ وہ اس حملے میں پولیس فورس اور گرہ منترالیہ کے لوگوں سمیت ماتوشری کے لوگوں کے شامل ہونے کی بات سے چنتت تھے۔ پوار صاحب نے ٹھاکرے پریوار کی سرکشا بڑھا دی تھی۔ ساتھ ہی لگاتار سوچنا دینے کی بات کہی تھی۔’’

     

    23مئی کو دیکھیئے سب سے تیز چناؤ نتیجے بھاسکرAPPپر

COMMENT
Web Tranliteration/Translation