Loading...
Swami vivekananda Jayanti Jan 12 2019: Motivational Story motivational story of swami vivekanand | Swami Vivekananda Jayanti 2019: Motivational Storyایک ودیشی مہلا سوامی جی کی ویشبھوشا دیکھ کر مذاق اڑا رہی تھی,جب سوامی جی نے سمجھایا کیسے ہوتی ہے سجنتا کی پرکھ تو مہلا نے شرم سے جھکا لیا اپنا سر- Dainik Bhaskar
--Advertisement--

Swami Vivekananda Jayanti 2019: Motivational Storyایک ودیشی مہلا سوامی جی کی ویشبھوشا دیکھ کر مذاق اڑا رہی تھی,جب سوامی جی نے سمجھایا کیسے ہوتی ہے سجنتا کی پرکھ تو مہلا نے شرم سے جھکا لیا اپنا سر

Dainik Bhaskar

Jan 11, 2019, 06:47 PM IST

کسی ویکتی کو پرکھتے سمیہ دھیان رکھیں وویکانند کی باتیں,بچ سکتے ہیں پریشانیوں سے

Swami vivekananda Jayanti Jan 12 2019: Motivational Story motivational story of swami vivekanand

رلجن ڈیسک۔سوامی وویکانند(Swami Vivekananda)کا جنم12جنوری سن1863کو کولکاتہ(کلکتہ)کے ایک کایستھ پریوار میں ہوا تھا۔ انکے بچپن کا نام نریندرناتھ دت تھا۔ انکے پتاوشوناتھدت اس سمیہ کلکتہ ہائیکورٹ کے ایک وکیل تھے۔ انکی ماتا بھونیشوری دیوی دھارمک وچاروں کی مہلا تھیں۔سوامی وویکانند (Swami Vivekananda) نے پریوار کو25کی عمر میں چھوڑ دیا تھا,سننیاس دھارن کر لیا تھا۔ سوامی جی(Swami Vivekananda)کی مرتیو4جولائی, 1902کو ہوئی تھی۔ سوامی وویکانند(Swami Vivekananda) کے جیون کے کئی ایسے پرسنگ ہیں,جن سے سکھی اور سپھل جیون کی پریرنا ملتی ہے۔

یہاں جانئے ایک ایسا پرسنگ,جسمیں انہوں نے ایک ودیشی مہلا کو بتایا تھا کسی ویکتی کی سجنتا کیسے پرکھ سکتے ہیں...

>سوامی وویکانند(Swami Vivekananda)شکاگو کی وشو دھرم سنسد کے لئے امریکہ پہنچ گئے تھے۔ ابھی دھرمسنسد میں کچھ دن شیش تھے۔ اس سمیہ دھرمسنسد میں نہ انکا اتہاسک ادبودھن ہوا تھا اور نہ انہیں خیاطی ملی تھی۔

>امریکہ میں پہنچنے کے بعد بھی وہ سننیاسیوں کی ویشبھوشا میں رہتے تھے۔ کشائے وستر,سر پر پگڑی,ہاتھوں میں ڈنڈا اور کندھوں پر چادر ڈلی ہوئی۔ اسی ویشبھوشا میں وہ ایک دن شکاگو کی سڑکوں پر بھرمن کر رہے تھے۔

>امریکہ کے واسیوں کے لئے یہ ویشبھوشا نہ صرف اچرج کی وجہ تھی,بلکہ کافی حد تک انکے لئے یہ اپہاس کا وشیہ تھی۔

>سوامی جی کے پیچھے پیچھے چل رہی ایک امریکی مہلا نے اپنے ساتھ کے پرش سے کہا,ذرا ان مہاشے کو تو دیکھو,کیسی وچتر پوشاک پہن رکھی ہے!’سوامی وویکانند نے سن لیا اور سمجھ بھی لیا که یہ امریکی انکی اس بھارتیہ ویشبھوشا کو ہی یہ نظروں سے دیکھ رہے ہیں۔

>وہ رک گئے اور اس مہلا کو سمبودھت کر بولے, ‘بہن! میرے ان وستروں کو دیکھ کر آشچریہ مت کرو۔ تمہارے اس دیش میں کپڑے ہی سجنتا کی کسوٹی ہیں,کنتو میں جس دیش سے آیا ہوں,وہاں سجنتا کی پہچان منشیہ کے کپڑوں سے نہیں,بلکہ اسکے چرتر سے ہوتی ہے۔ کپڑے تو اوپری دکھاوا بھر ہیں۔ چرتر ویکتتو کا آدھاربھوت تتو ہے۔’

>سوامی جی کے سٹیک اتر کو سن کر اس مہلا کا سر شرم سے جھک گیا۔ اسکے بعد جب وشو دھرم سنسد کا آیوجن ہوا تو سوامی جی کا ادبھت سمبودھن سن کر امیرکاواسیوں کے من میں انکے پرتی گہری شردھا کا بھاوٴ آ گیا اور بھارت کے وشیہ میں انکی سوچ بدل گئی۔

>اس طرح سوامی جی نے بھارتیہ سنسکرتی کو مان دلایا۔ ویکتی کے آچرن سے اسکی سچی پہچان ہوتی ہے۔ کسی ویکتی کی سنسکارشیلتا وستر یا آبھوشن آدی سے نہیں,بلکہ قرم کی شریشٹھتا سے معلوم ہوتی ہے۔

X
Swami vivekananda Jayanti Jan 12 2019: Motivational Story motivational story of swami vivekanand
Astrology

Recommended

Click to listen..
Web Tranliteration/Translation