Loading...
بھارتیہ کار ادیوگ کی حالت خراب, 18سال کی سب سے بڑی گراوٹ سے کئی نامی کمپنیوں نے کیا پروڈکشن بند... | Webdunia Hindi

بھارتیہ کار ادیوگ کی حالت خراب, 18سال کی سب سے بڑی گراوٹ سے کئی نامی کمپنیوں نے کیا پروڈکشن بند...

Last Updated: بدھوار, 12جون2019 (17:00 IST)
بھارتیہاس سمیہ پچھلے18سال میں سب سے بری ستھتی کا سامنا کر رہا ہے۔کے سنگٹھن سوسائٹی آف انڈین آٹوموبائل مینیپھیکچررس(SIAM)نے منگلوار کو آنکڑے جاری کئے جسمیں بتایا گیا ہے که کاروں کی بکری پچھلے مہینے میں20.55فیصدی گھٹ کر2,39,347یونٹ پر آ گئی ہے۔
کے انوسار یہ پچھلے18سال کی سب سے تیز گراوٹ تھی۔ اسکے پہلے ستمبر2001میں پیسنجر گاڑیوں کی سیلس میں21.91%کی بھاری کمی آئی تھی۔ جانکاروں کا ماننا ہے که سرکاری نیتیوں,ڈیزل پیٹرول میں تیزی جیسے کارنوں سے ایسا ہو رہا ہے۔

انڈسٹری سے جڑے لوگوں کا ماننا ہے که کاروں کو جیئیسٹی کے سب سے اونچے سلیب28فیصدی میں رکھا گیا ہے,اس سے کمپنیوں کی لاگت بڑھ رہی ہے۔ اسکے علاوہ روزگار سیکٹر میں دھیماپن اور پیٹرول قیمتوں میں آئی تیزی بھی سیلس میں گراوٹ کی بڑی وجہ ہے۔

گراوٹ کو دیکھتے ہوئے کئی نامی گرامی واہن نرماتا کمپنیوں نے پروڈکشن روکنے کا فیصلہ لیا ہے۔ کئی بڑی آٹو کمپنیاں جیسے ماروتی سجکی,مہندرا اور ٹاٹا موٹرس نے اپنے پچھلے پروڈکشن کے سٹاک کو کلیئر کرنے کے لئے پروڈکشن کو روک دیا ہے۔

ہونڈا,رینو نسان اور سکوڈا آٹو بھی اپنے پروڈکشن کو10دنوں کے لئے بند کرنے کی تیاری میں ہے۔ ان کمپنیوں نے جون کے مہینے میں پلانٹ شٹڈاؤن کی گھوشنا کی ہے۔
اس ستھتی سے ابرنے کے لئے سیام کے ڈایریکٹر جنرل وشنو ماتھر کا کہنا ہے که ہم نے کچھ مدعوں اور چنتاؤں کو لیکر سرکار سے سمپرک کیا ہے اور اس سے سبھی شرینیوں کی گاڑیوں پر لگنے والے گڈس اینڈ سروسز ٹیکس(GST)کو موجودہ28%سے گھٹاکر18%کرنے کا انورودھ کیا ہے۔

سیام کے ڈپٹی ڈایریکٹر جنرل سگتو سین کے انوسار سرکار کو'وھیکل سکریپیج پالسی'بنانی چاہئیے جس سے نئی گاڑیوں کے لئے بازار بنانے میں مدد ملے گی۔ انکا کہنا ہے که ہم سرکار سے ریسرچ اینڈ ڈیولپمینٹ پر ویٹیڈ ٹیکس ڈڈکشن کے طور پر ملنے والے انسینٹو کا200%کا پرانا لیول بحال کئے جانے کی بھی مانگ کر رہے ہیں۔

-->

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation