Loading...
پاکستان پرشاست کشمیر پر بھی یوئین نے اٹھائے سوال| PoK | Webdunia Hindi

پاکستان پرشاست کشمیر پر بھی یوئین نے اٹھائے سوال

پن سنشودھت بدھوار, 10جولائی2019 (15:21 IST)
پاکستان نے حالانکہ جموں کشمیر پرکیکو بھارت ورودھی پیش کرنے کی کوشش کی ہے,لیکن یوئین نے اپنی تازہ رپورٹ میں کہا ہے که پاکستان پرشاست کشمیر میں'مانوادھکاروں کے النگھن کی ایک پوری سنرچناتمک ویوستھا ہے۔'
چند دنوں پہلے جاری سنیکت راشٹر مانوادھیکار آیوگ کی43-پنوں کی رپورٹ میں کہا گیا ہے که پاکستان پرشاست کشمیر میں'بول چال سے لیکر,ملنے جلنے,الپ سنکھیکوں کو نشانہ بنانے اور راجنیتک پرتدوندویوں کو شانت کرنے کے لئے آتنکواد ورودھی قانونوں کا استعمال کیا جاتا ہے۔,'

یہ رپورٹ سال2018میں جموں کشمیر پر جاری رپورٹ کی دوسری کڑی ہے جسمیں کمیشن نے صاف طور پر کہا تھا که پاکستان پرشاست کشمیر اور گلگٹ بالٹستان میں حالات بھارت سے کہیں بدتر ہے جسکی وجہ سے سنیکت راشٹر کمیشن کا پہنچ پانا بھی آسان نہیں۔
سنیکت راشٹر کی دوسری رپورٹ آئیؤکے(بھارت کے قبضے والے کشمیر)کے بارے میں آئی جس کا ذکر کرتے ہوئے پاکستانی ودیش منترالیہ کے پروکتا محمد فیصل نے ایک ٹویٹ میں کہا که'یہ رپورٹ بھارتیہ سینا کے ذریعے بڑے پیمانے پر کئے جا رہے مانوادھیکار النگھنوں کی ایک بار پھر پشٹی کرتی ہے'۔

سنیکت راشٹر کی رپورٹ میں بھارت پرشاست کشمیر میں مانوادھیکار النگھنوں کو لیکر کئی سوال کھڑے کئے گئے ہیں اور کہا گیا ہے که پچھلے سال کے دوران ہوئی160عام شہریوں کی موتیں پچھلے ایک دشک میں سب سے ادھک تھیں اور باوجود اسکے بھارتیہ سینا کا وشیش ادھیکار جاری ہے اور بھارت کی طرف سے اس بات کی کوئی کوشش نہیں ہوئی ہے که وہ سینا کے دوارہ اپنائے جا رہے طور طریقوں کی کسی طرح کی جانچ پرکھ کرے۔
رپورٹ میں سرینگر کے مہاراجہ ہری سنگھ اسپتال کے حوالے سے کہا گیا ہے که پیلیٹ گن کے استعمال سے2016-مدھیہ اور2018کے انت تک1253لوگ آنکھوں کی روشنی کھو چکے ہیں۔

رپورٹ میں پردرشنکاریوں,راجنیتک متبھید رکھنیوالوں اور سونیسیوی سنستھاؤں کو من مانا طور پر نظربند کرنے کو بھی مانوادھیکار النگھن کے اداہرن کے طور پر پیش کیا گیا ہے اور اس میں کشمیریوں پر بھارت کے الگ الگ حصوں میں ہوئے حملوں کا بھی ذکر ہے۔
بھارت نے جموں کشمیر پر رپورٹ کو'من گڑھنت اور پریرت'بتایا ہے اور کہا ہے که کمیشن'آتنکواد کو ویدھتا پردان کرنے کی کوشش'کر رہا ہے۔

بھارتیہ ودیش منترالیہ کے پروکتا رویش کمار نے'رپورٹ کو بھارت کی سمپربھتا کا النگھن قرار دیتے ہوئے کہا که اس میں سیما پار آتنکواد کو بڑھاوا دینے کے معاملے کی پوری طرح ان دیکھی کی گئی ہے۔'

کشمیر گھاٹی میں رپورٹ کو لیکر حالانکہ کچھ خاص پرتکریا اب تک نظر نہیں آئی ہے اور سامانیت: سوشل میڈیا پر بہت ایکٹو رہنے والے عمر عبداللہ نے اس پر کچھ نہیں کہا ہے,نہ ہی محبوبہ مفتی نے۔
حریت کانپھریس کے الگاووادی نیتا میرواعظ عمر فاروق نے رپورٹ کو اہم بتایا ہے اور کہا ہے که بھارت اور پاکستان دونوں کو رپورٹ میں سجھائے گئے انوشنساؤں کو جلد سے جلد لاگو کرنا چاہئیے۔

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation