Loading...
اجے اور تبو کا دے دے پیار دے کے سیٹ پر کیسا تھا ویوہار,بتا رہے ہیں اکیو علی| Webdunia Hindi

اجے اور تبو کا دے دے پیار دے کے سیٹ پر کیسا تھا ویوہار,بتا رہے ہیں اکیو علی

فلم'دے دے پیار دے'کی سٹوری لائن سب سے پہلے مجھے لو رنجن نے سنائی تھی۔ اسنے کہا که ایک50سال کا شخص ہے جسے15سال کی لڑکی سے عشق ہو جاتا ہے,تو میں نے پوچھا که اس میں کون سی نئی بات ہے؟ لو نے کہا که کہانی اب وہاں آ پہنچتی ہے که لڑکا اس لڑکی کو ملوانے کے لئے اپنے گھر لے جاتا ہے,جہاں اسکی پتنی ہیں,بچے ہیں,ماں اور باپ ہیں۔ اور ایک بات یہ که ماں باپ اسکی پتنی کو پسند کرتے ہیں۔'
فلم'دے دے پیار دے'کے نردیشک اکیو علی,لو رنجن کے خاص دوست اور انکی پھلموں میں ایڈٹر رہے ہیں۔ فلم'دے دے پیار دے'کے پرموشن کے دوران نردیشک اکیو علی نے بات چیت کی'ویبدنیا'سنوادداتا رونا آشیش سے۔

آپکی فلم میں دو کلاکار ایسے ہیں,تبو اور اجے,جو راشٹریہ پرسکار جیت چکے ہیں۔ کوئی ٹینشن نہیں ہوا؟
ہوا,لیکن وہ پہلے آدھے گھنٹے میں چلا گیا,کیونکہ مجھے ان دونوں سے ملکر سمجھ آ گیا که یہ لوگ یہاں کام کرنے آئے ہیں,نہ که یہ جتانے که وہ کتنے بڑے کلاکار ہیں۔ یہ دونوں اپنے کام اور رول کو سمجھنے میں مشغول تھے۔ کچھ بار ایسا بھی ہوا که میں کہیں اٹک گیا تو اجے کے پاس جاکر پوچھ لیا که آپ50سال کے ہو اور آپ بتا دو که کیسے ہمارا ہیرو رئیکٹ کریگا؟ تو وہ بتاتے تھے۔ یہ سیٹ پر پہنچتے تھے اور مجھ سے پوچھتے تھے که کیا کرنا ہے,بتا دو۔ ہم نے ایک اچھی فلم بنانے کی ٹھانی تھی اور سبھی لوگ اسی دشا میں کام کر رہے تھے۔

یہ آپکی پہلی فلم ہے,لو رنجن(فلم کے لیکھک)کی کوئی دخل اندازی نہیں ہے؟
دخل اندازی نہیں,لیکن کرایٹو انپٹ رہے۔ میرے اور لو کے رشتے ایسے ہیں که ہم4-5لوگوں کی کمپنی ہے,جو فلم بناتے ہیں۔ اسکی فلم ہوتی ہے تو ایڈٹ میں کرتا ہوں۔ پہلے تو پھر بھی وہ اپنی فلم کے ایڈٹ دیکھنے آ جاتا تھا اب تو کہتا ہے تو ایڈٹ کر,فائنل کٹ دیکھ لونگا۔ ہم لوگ فلم کو اچھا بنانے پر زور دیتے ہیں تو ایک دوسرے کو سجھاؤ بھی دیتے ہیں۔
وہ سیٹ پر بھی نہیں آتے تھے؟
سیٹ پر گھومنے آتے تھے۔ سٹوری نریٹ کی اور چلے جاتے تھے۔ ایک بار9بجے کی شفٹ تھی اور لو12.30بجے پہنچے تو میں نے کہا تم لیٹ ہو؟ شفٹ تو9بجے کی ہے,تو وہ بولا,تو نردیشک ہے,تو آنا ٹائم پر,میں تو نرماتا ہوں,اپنی مرضی سے آؤنگا سیٹ پر گھومنے۔

فلم میں رکل کا سلیکشن کیسے ہوا؟
ہم فلم کے لئے ایک ایسا چہرہ تلاش رہے تھے,جو ضروری نہیں تھا که وہ نیا ہو۔ کوئی تھوڑا جانا پہچانا بھی چلتا لیکن کوئی ایسا چاہئیے تھا جس نے کبھی اجے کے ساتھ کام نہ کیا ہو اور عمر تو24-25سال چاہئیے تھی۔ کسی نے رکل کا نام سجھایا۔ میں نے بھی سوچا اور کہا که چلو'یاریاں'بھی کی ہے تو اس میں بھی5سال ہو گئے ہیں۔ اسے آفس میں ملنے بلایا اور بات چیت کی پھر وہ بھی اپنے دوسرے پروجیکٹس میں بجی ہو گئیں۔2مہینے بعد مجھے لو نے پوچھا که ہیروئن رکھنی ہے یا نہیں؟ تو میں نے اور میرے اسسٹینٹ نے ایک ساتھ رکل کا نام کہہ دیا۔ لو نے کہا که اب ٹائم نہیں ہے,فوٹو شوٹ کر لو۔ اور پھوٹوشوٹ اور آڈیشن دونوں میں وہ فٹ لگیں اور ہماری فلم کا حصہ بن گئیں۔
اب آگے نردیشن یا ایڈیٹنگ؟
میں تو ایڈٹر بھی بنا سوچے سمجھے بن گیا اور نردیشن کا بھی موقع مل ہی گیا۔ لیکن مجھے ایڈیٹنگ سے بہت پیار ہے۔ میں ایڈیٹنگ کبھی نہیں چھوڑ سکتا۔ میں نے تو میری فلم میں بھی بنا کسی ہچک کے سین کو کاٹ کر چھوٹے کئے ہیں۔ ابھی لو کی اگلی فلم ہے اور میری کمپنی کی ہی اور بھی پھلمیں آنے والی ہیں۔ میں وہ سب ایڈٹ کرونگا۔ سب پھلموں کو سندر بنانے کی کوشش کرونگا اور ہم ملکر اچھی فلم بنائینگے۔

 
-->

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation