Loading...
امریش پوری:نہیں ہوا کوئی دوسرا موگامبو| Webdunia Hindi

امریش پوری:نہیں ہوا کوئی دوسرا موگامبو

سمیہ تامرکر|
ہندی سنیما میں ہر کھلنائک کی اپنی سٹائل رہی ہے اور وہ اسی سٹائل کی بدولت درشکوں کے دلو دماغ پر تب تک راج کرتا رہا,جب تک که نئے ولن نے آ کر اپنی لمبی لکیر نہیں کھینچ دی۔ 
 
کے.این.سنگھ,پریم ناتھ,پران,امجد خان سے شروع ہوکر یہ سلسلہ امریش پوری پر آ کر ٹھہر گیا۔ ان ہستیوں نے کھلنائک کے سطریہ ایوں بہہ ایامی چہرے پرستت کئے,جو آج ہندی سنیما میں مانک بن گئے ہیں۔ 
امریش پوری اپنی اونچیپوری قد کاٹھی اور بلند آواز کے بل پر سب سے آگے نکل گئے۔ انکی گول گول گھومتی ہوئی آنکھیں سامنے کھڑے ویکتی کے بھیتر دہشت پیدا کر دیتی تھی۔ انکا کسرتی بدن فولاد کی طرح مضبوط دکھائی دیتا تھا۔ انکی پھلمیں آ کر چلی جاتی تھیں,مگر انکا کردار درشکوں کو برسوں تک یاد رہتا تھا۔ امریش پوری اکثر کہا کرتے تھے که وہ'لویبل ولن'ہیں۔
 
22جون1932کو جنمے امریش پوری چرتر ابھینیتا مدن پوری کے چھوٹے بھائی تھے۔ بیس سال تک وہ سرکاری نوکری میں رہے۔ اپنی کرئیٹوٹی کے سنتوش کے لئے رنگ منچ سے جڑ گئے۔ پنڈت ستیہ دیو دبے جیسے نردیشکوں کے مارگدرشن میں انہوں نے پچاس سے ادھک ناٹکوں میں کام کر رنگکرم کے شیتر میں اپنے کو ستھاپت کیا۔ 
 
1954میں انہوں نے پھلموں میں قسمت آزمانے کی کوشش کی تھی,لیکن فلم نرماتاؤں نے'کروڈ اینڈ ہارش فیس'کہ کر انہیں ٹھکرا دیا۔ امریش نے تھئیٹر کر تتھا وگیاپنوں میں اپنی آواز دیکر سنگھرش جاری رکھا۔
 
چالیس پار کا کمال
جب امریش کی عمر چالیس کی ہو گئی,تب انہیں پھلموں کے آفر ملے۔ اس عمر تک آتے آتے کئی کلاکار یہ کہتے پائے جاتے ہیں که انکے کھاتے میں دو دشک کا انبھو اور پھلمیں ہیں۔ مگر کسے پتہ تھا که کچھ برس بیت جانے کے بعد یہی ابھینیتا اپنے من پسند رول کریگا اور کھلنایکی کی سب سے ادھک قیمت وسولیگا۔ 
 
فلمکار سکھدیو نے امریش کو فلم ریشما اور شیرہ کا آفر دیا تھا۔ کچھ دنوں بعد فلم کا نردیشن سنیل دت کے ہاتھوں میں آیا,تو امریش نے راجستھان کے ریگستان میں اونٹوں کے بیچ چلنے والی اس پریم کتھا کو پسند کر اپنی منظوری دی۔
 
بینیگل کی فریم
اس رول کے بعد پھر آدھا دشک گزر گیا۔ جب ہندی پھلموں میں کلا سنیما یا سمانتر سنیما کی مشعل شیام بینیگل جیسے فلمکار نے جلائی,تو رنگ منچ اور پنے فلم سنستھان سے پرشکشت کلاکاروں کو انیک آفر ملے۔ امریش بھی اس بھیڑ میں شامل کر لئے گئے۔ 
 
بینیگل کے ساتھ انہوں نے فلم نشانت,منتھن تتھا بھومکا جیسی پھلمیں کی اور اپنی ابھنیہ پرتبھا کا لوہا منوایا۔ گووند نہلانی کی فلم اردھستیہ میں انہوں نے جاندار رول کیا۔ 
 
کمرشیل پھلموں میں امریش پوری کی پہچان فلم'ہم پانچ' (1981)سے بنی۔ اسکے بعد فلم ودھاتا اور ہیرو نے انہیں ہیرو ولن بنا دیا اور انکی بالی وڈ میں ڈیمانڈ بڑھتی چلی گئی۔ یہاں تک آتے ہوئے یہ بتا دینا ضروری ہے که پران صاحب کی امیج چرتر کلاکار میں بدل گئی تھی۔ امجد خان یعنی گبرسنہ کا جادو اتار پر تھا۔ 
 
انیک چلر ولین میدان میں ضرور آ گئے تھے,مگر وہ امریش کے سامنے بونے ثابت ہوئے۔ امریش کے کریر میں دھماکہ فلم'مسٹر انڈیا'کے موگامبو سے ہوا۔ انکی پنچ لائن'موگامبو خوش ہوا'درشک دوہرانے لگے۔ 
 
لارجر دین لائف موگامبو
موگامبو کا کردار وشیش روپ سے ڈایریکٹر شیکھر کپور نے تیار کیا تھا۔ یہ کامک کے ساتھ منوویگیانک پھاسسٹ ولن تھا۔ موگامبو اپنے دوارہ نرمت اور شاست دیپ میں رہتا ہے۔ اسکے محل مے کئی خوبیاں ہیں۔ تیزاب سے بھرا دھواں اگلتا تالاب ہے۔ گولڈن کلر کا گھنگھرالا وگ وہ پہنتا ہے۔ سنہری اور کالی ایمبرایڈری کا جیکٹ دھارن کرتا ہے۔ سونے کے سنہاسن پر بیٹھتا ہے۔ 
 
بچوں کی پھینٹیسی کتاب سے نکلے کردار کی طرح امریش پوری کو سج دھج کے ساتھ پردے پر پیش کیا گیا,تو بچے بڑے سبھی اسے چاہنے لگے۔ جب مسٹر انڈیا بنے انل کپور اسے پٹانے کی کوشش کرتے ہیں,تو مذاق بناکر چہرے پر چمک لاکر ہاتھوں کا سنچالن کرتے اٹہاس کرتی ہنسی کے ساتھ وہ بولتا ہے موگامبو خوش ہوا۔ 
 
سپیلبرگ کی پینی نظر
جب امریش پوری نے ولن کے اوتار میں اپنے کو برانڈ بنا لیا تو ہالی وڈ کے بیتاج بادشاہ سٹیون سپیلبرگ نے اپنی اگلی فلم'انڈیانا جونس اینڈ د ٹیمپل آف ڈوم' (1984)میں مکھیہ ولن بنایا۔ امریش نے سپیلبرگ کی اپیکشاؤں کے انوروپ کام کیا اور انکی پہچان انترراشٹریہ سطر پر ہو گئی۔ اسکے بعد ہالی وڈ پھلموں کے کئی آفر انہیں ملے,مگر بھارت میں رہ کر جو اور جیسا رول ملا,اسے کرنا انہوں نے ادھک مناسب سمجھا۔ 
 
امریش پوری اپنے سمکالین کھلنایکوں کو اکثر'چاکلیٹ بایج'کہ کر پکارتے تھے۔ انکے جیسے بہہ ایامی ابھینیتا کو دگج فلمکار شیام بینیگل,گووند نہلانی,شیکھر کپور,سبھاش گھئی,پریدرشن,راکیش روشن,راج کمار سنتوشی ملے,جنہوں نے انکی پرتبھا کو پرکھا اور انکی سنتشٹی کے رول دیئے۔ امریش پوری کی ابھنیہ پرتبھا سے انکے ساتھ کام کرنے والے ہیرو گھبراتے تھے کیونکہ فلم کے تمام سین تو یہ چرا کر لے جائیگا۔ 
 
نیگیٹو سے پاجٹو
کچھ پھلموں میں امریش کو پاجٹو رول کرنے کے موقعے بھی ملے۔ پریدرشن کی فلم مسکراہٹ میں ایک جھکی جج کے رول کو انہوں نے کچھ اس انداز میں جیا که پوری فلم میں درشک مسکراتے رہے۔ راج کمار سنتوشی کی فلم'گھاتک'میں بھی بیمار پتا کا رول انہوں نے بخوبی نبھایا۔ 
 
پھول اور کانٹے,دل والے دلہنیا لے جا ئینگے,رام لکھن,سوداگر,کرن ارجن,گھائل,غدر,دامنی جیسی کئی پھلموں میں انکی مکھ مدرائیں,سنواد بولنے کا انداز,باڈی لینگویج دیکھنے لائق ہے۔ امریش کا سکرین پرجینس اتنی زبردست ہوتی تھی که درشک ٹھگے سے رہ جاتے تھے۔ 
 
جب رول کم ملنے لگے یا پھر فالتو رول انہوں نے اس دور کے دوسرے ولن کے لئے چھوڑ دیئے,وہ گھر پر رہ کر اپنے پوتے پوتیوں کے ٹوٹے کھلونے سدھارا کرتے تھے یا پھر کندنلال سہگل کے گانے سن کر گزرے زمانے کے پلوں کو پکرڈنے کی کوششوں میں ڈوب جاتے تھے۔ 
 
کینسر کی بیماری کی وجہ سے انکا12جنوری2005کو ندھن ہوا۔ انکے گجر نے کے بعد بالی وڈ کو دوسرا دمدار کھلنائک ابھی تک نہیں مل پایا ہے۔ امریش پوری نے416سے ادھک پھلموں میں اپنی اپستھتی درج کرائی۔
 
پرمکھ پھلمیں
آکروش,اردھستیہ,بھومکا,چاچی420,دل والے دلہنیاں لے جا ئینگے,دامنی,گردش,غدر,گھاتک,گھائل,ہیرو,کرن ارجن,کوئلہ,منتھن,میری جنگ,می.انڈیا,مسکراہٹ,نگینہ,پھول اور کانٹے,رام لکھن,تال,تردیو,ودھاتا

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation