Loading...
England vs Australia۔انگلینڈ27سال کے بعد وشو کپ کے فائنل میں, 5بار کے چیمپئن آسٹریلیا کو8وکیٹ سے روندا| Webdunia Hindi

انگلینڈ27سال کے بعد وشو کپ کے فائنل میں, 5بار کے چیمپئن آسٹریلیا کو8وکیٹ سے روندا

Last Updated: گرووار, 11جولائی2019 (22:58 IST)
برمنگھم۔ کرس ووکس اور عادل راشد کے3-3وکٹوں اور اوپنر جیسن رائے کی85رن کی طوفانی پاری کی بدولت میزبان انگلینڈ نے5بار کے چیمپئن آسٹریلیا کو آئی سی سی وشو کپ کے دوسرے سیمی فائنل میں گرووار کو8وکیٹ سے روندکر27سال کے لمبے انترال کے بعد فائنل میں جگہ بنا لی۔1992کے وشو کپ فائنل میں انگلینڈ کی ٹیم فائنل میں پاکستان سے ہار گئی تھی۔

انگلینڈ نے آسٹریلیا کو49اوور میں223رن پر نپٹانے کے بعد32.1اوور میں2وکیٹ پر226رن بناکر شان کے ساتھ فائنل میں پرویش کر لیا جہاں اسکا مقابلہ14جولائی کو اتہاسک لارڈس میدان میں نیوزی لینڈ سے ہوگا۔ وشو کپ کو اس طرح نیا چیمپئن ملیگا۔
میزبان انگلینڈ1992کے بعد پہلی بار فائنل میں پہنچا ہے اور فائنل میں انگلینڈ تتھا نیوزی لینڈ کے پاس پہلی بار خطاب جیتنے کا موقع رہیگا۔ نیوزی لینڈ نے پہلے سیمی فائنل میں بھارت کو ہرایا تھا۔
انگلینڈ نے اس سیمی فائنل میں پچھلے چیمپئن آسٹریلیا کو ایک طرفہ انداز میں دھو دیا۔ جیسن رائے نے65گیندوں میں9چوکوں اور5چھکوں کی مدد سے85رن کی میچ وجئی پاری کھیلی۔ جانی بییرسٹو نے34,جو رٹ نے ناباد49اور کپتان ایان مورگن نے ناباد45رن کی پاری کھیلی۔ آسٹریلیا کی پاری میں20رن پر3وکیٹ لینے والے کرس ووکس کو پلیئر آف د میچ کا پرسکار ملا۔

ٹاس جیت کر پہلے بلے باز کرنے اترے آسٹریلیا کی شروعات خراب رہی اور اسنے7ویں اوور تک ماتر14رن پر3وکیٹ گنوا دیئے۔ پورو کپتاننے اسکے بعد119گیندوں پر6چوکوں کی مدد سے85رن کی شاندار پاری کھیلی جسکی بدولت ہی آسٹریلیا200کا سکور پار کر سکا۔

سمتھ8ویں بلے باز کے روپ میں ٹیم کے217کے سکور پر آؤٹ ہوئے اور آسٹریلیا کی پوری پاری49اوور میں223رن پر سمٹ گئی۔ آسٹریلیا کے4بلے باز ہی دہائی کی سنکھیا میں پہنچ سکے۔ وکٹ کیپر ایلیکس کیری نے70گیندوں میں4چوکوں کی مدد سے46رن,آل راؤنڈر گلین میکسویل نے23گیندوں میں2چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے22رن اور9ویں نمبر کے بلے باز مشیل سٹارک نے36گیندوں میں ایک چوکے اور ایک چھکے کی مدد سے29رن بنائے۔

سمتھ اور کیری نے چوتھے وکیٹ کے لئے103رن کی ساجھیداری کر ٹیم کو کچھ حد تک سنبھالا۔ اس سے پہلے کپتان آرون پھنچ کھاتا کھولے بنا دوسرے اوور کی پہلی گیند پر آؤٹ ہوئے جبکہ ٹورنامینٹ میں شاندار بلے باز کرنے والے اوپنر ڈیوڈ وارنر تیسرے اوور میں نپٹ گئے۔ وارنر نو رن ہی بنا سکے۔

پیٹر ہینڈسکومب کا وکیٹ7ویں اوور کی پہلی گیند پر گرا۔ کرس ووکس نے وارنر اور ہینڈسکومب کے وکیٹ لئے۔ لیگ سپنر عادل راشد نے آسٹریلیا کے مدھیکرم کو جھک جھورا۔ راشد نے کیری,مارکس سٹوئنس اور پیٹ کمنس کو آؤٹ کیا۔
ووکس نے سٹارک کو آؤٹ کر اپنا3وکیٹ لیا۔ سمتھ رناؤٹ ہوئے جبکہ جوپھرا آرچر نے آسٹریلیائی کپتان پھنچ تتھا میکسویل کے وکیٹ لئے۔ مارک وڈ نے جیسن بیہرنڈورپھ کو آؤٹ کر آسٹریلیا کی پاری سمیٹ دی۔ ووکس نے20رن پر3وکیٹ,راشد نے54رن پر3وکیٹ,آرچر نے32رن پر2وکیٹ اور وڈ نے45رن پر ایک وکیٹ لیا۔

لکشیہ کا پیچھا کرتے ہوئے انگلینڈ نے وشواس کے ساتھ شروعات کی۔ رائے اور بییرسٹو نے17.2اوور میں124رن کی شاندار اوپننگ ساجھیداری کر آسٹریلیا کا سنگھرش سماپت کر دیا۔ رائے نے بیحد آکرامک انداز میں بلے باز کرتے ہوئے آسٹریلیائی گیندبازوں کو ہتوتساہت کر دیا۔

رائے نے پاری کے16ویں اوور میں سٹیو سمتھ کی گیندوں پر لگاتار3گگنچمبی چھکے مارے۔ ان میں سے تیسرا چھکا تو سٹیڈیم کی چھت پر پڑا۔ بییرسٹو کو مشیل سٹارک نے پگبادھا کیا اور ایک ٹورنامینٹ میں سروادھک وکیٹ لینے کا ہم وطن گلین میک گرا کا ریکارڈ توڑ دیا۔

سٹارک کا یہ27واں وکیٹ تھا۔ بییرسٹو نے43گیندوں پر34رن میں5چوکے لگائے۔ رائے دوسرے بلے باز کے روپ میں147کے سکور پر پیٹ کمنس کا شکار بنے۔ اسکے بعد رٹ اور مورگن نے آسٹریلیا کو کوئی موقع نہیں دیا۔

رٹ نے46گیندوں میں8چوکوں کی مدد سے ناباد49اور مورگن نے39گیندوں میں8چوکوں کے سہارے ناباد45رن بنائے۔ مورگن نے جیسے ہی وجئی چوکا مارا پورا انگلینڈ جشن میں ڈوب گیا۔

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation