Loading...
دھونی کے رناؤٹ پر نو بال کا بوال کیوں ہے بیکار,پڑھیں| Webdunia Hindi

دھونی کے رناؤٹ پر نو بال کا بوال کیوں ہے بیکار,پڑھیں

Last Updated: گرووار, 11جولائی2019 (14:39 IST)
میںکے خلاف ایم ایس دھونی نے72گیندوں پر ایک چوکے اور ایک چھکے کی مدد سے50رن بنائے۔ انکے آؤٹ ہونے کے بعد سے ہی میچ کیوی ٹیم کی طرف چلا گیا تھا۔ اب انکے آؤٹ ہونے پر ایک نیا وواد شورو ہو گیا ہے۔ ٹوٹّر پر دکھ رہے کچھ ویڈیو بتا رہے ہیں که دھونی جس گیند پر آؤٹ ہوئے وہتھی۔
کیا ہوا تھا؟
پھرگیوسن کی تیسری گیند پر دھونی نے دو رن لینے کی کوشش کی جس پر مارٹل گپٹل کے ڈائریکٹ ہٹ سے وہ آؤٹ ہو گئے۔ دھونی ٹیم انڈیا کا آٹھواں وکیٹ تھے۔ لیکن یہ گیند نو بال تھی۔ نا بال اسلئے تھی کیونکہ گرافک کے مطابق 5کی جگہ6کھلاڑی30یارڈ کے گھیرے سے باہر کھڑے تھے۔ اس پر امپایر کا دھیان نہیں تھا۔ امپایر کی اس ان دیکھی پر ٹیم انڈیا اور دھونی کے فینس نے ٹوٹّر پر خوب ہلا مچایا۔ دیکھیں ویڈیو اور کمینٹس 
  
پھر بھی دھونی آؤٹ ہی رہتے 
مہیندر سنگھ دھونی کے آؤٹ ہونے سے پہلے بھارت کو10گیندو میں25رنوں کی درکار تھی۔ کرکٹ کے نیموں کے انوسار نو بال پر صرفاور سٹمپگ مانیہ ہے۔ اگر امپایر اس گیند پر نو بال کا اشارہ کرتے اور دھونی پہلا رن لیتے وقت یہ اشارہ دیکھ لیتے تو بھی انہیں دوسرا رن بھاگنا ہی پڑتا کیونکہ دوسرے چھور کے بلے باز بھوونیشور کمار تھے۔ بھارت کو جتنے رنوں کی درکار تھی اس ستھتی میں فری ہٹ جیسا موقع بھوی کے سامنے نہیں رکھا جا سکتا تھا۔ زیادہ سے زیادہ دھونی کے آؤٹ ہونے کے بعد اگلی گیند فری ہٹ ہوتی جو چہل یا بمراہ کھیلتے۔

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation