Loading...
دوستی ایک ایسا آکاش ہے جسمیں پیار کا چندر مسکراتا ہے| Webdunia Hindi

دوستی ایک ایسا آکاش ہے جسمیں پیار کا چندر مسکراتا ہے


دوستی,ایک سلونا اور سہانا احساس ہے,جو سنسار کے ہر رشتے سے الگ ہے۔ تمام موجودہ رشتوں کے جنجال میں یہ میٹھا رشتہ ایک ایسا ستیہ ہے جسکی ویاکھیا ہونا ابھی بھی باقی ہے۔ ویاکھیا کا آکار بڑا ہوتا ہے۔ لیکن گہرائی کے معاملے میں وہ انوبھوتی کی برابری نہیں کر سکتی۔ اسی لئے دوستی کی کوئی ایک پر یبھاشا آج تک نہیں بن سکی۔

دوستی,شدھ اور پوتر من کا ملن ہوتی ہے۔ ایک بیحد اتکرشٹ انوبھوتی,جسے پاتے ہی تناؤ اور چنتا کے سارے تٹبندھ ٹوٹ جاتے ہیں۔۔ الجھنوں کی جنجیریں کھل جاتی ہے۔

دوستی ایک ایسا آکاش ہے جسمیں پیار کا چندر مسکراتا ہے,رشتوں کی گرماہٹ کا سوریہ جگمگاتا ہے اور خوشیوں کے نٹ کھٹ ستارے جھلملاتے ہیں۔ ایک بیش قیمتی پستک ہے دوستی,جسمیں انکت ہر اکشر,ہیرے,موتی,نیلم,پنا,مانک اور پکھراج کی طرح ہے,بہمولیہ اور تقدیر بدلنے والے۔

ایک سکومل اور گلابی رشتہ ہے دوستی,چھوئیمئی کی نرم پتیوں سا۔ انگلی اٹھانے پر یہ رشتہ کمہلا جاتا ہے۔ اسلئے دوست بنانے سے پہلے اپنے انترمن کی چیتنا پر وشواس کرنا ضروری ہے۔

سچائی,ایمانداری,پرسپر سمجھداری,امٹ وشواس,پاردرشتا,سمرپن,سمان جیسے شریشٹھ تتو دوستی کی پہلی ضرورت ہے۔ دوست وہ وشوسنیہ شخص ہوتا ہے جسکے سمکش آپ اپنے من کی انتم پرت بھی کرید کر رکھ دیتے ہیں۔ ایک سچا دوست آپکے وکست ہونے میں سہایتا کرتا ہے۔ اسکا نشچھل پریم آپ کو پوشت کرتا ہے۔ جسکے ساتھ آپ اپنی اور جا و نجتا بانٹتے ہیں۔

دوستی کی نووکست ننھی کونپل کو زمانے کے پردوشن سے بچانا ضروری ہے۔ تمام عمر انسان کو ایک اچھے دوست کی تلاش رہتی ہے۔ اسی تلاش میں یہ پتہ چلتا ہے که دوستی کا ایک رنگ نہیں ہوتا۔ الگ الگ رنگوں سے سجی دوستی قدم قدم پر اپنا روپ دکھاتی ہے۔ کئی دوست دوستی کی گرما کے لئے اپنا سروسو سمرپت کر دیتے ہیں۔ اکثر اچھی دوستی کو شک کی دیمک لگ جاتی ہے جو انتت: اسے کھوکھلا کر کے چھوڑتی ہے۔

دوستوں,شک دوستی کا دشمن ہے
اپنے دل میں اسے گھر بنانے نہ دو
کل تڑپنا پڑے یاد میں جن کی
روک لو روٹھ کر انکو جانے نہ دو...

دوستی,اس گٹھری کے سمان ہوتی ہے جسمیں بندھی ہوتی ہے ڈھیر ساری باتیں,گہرے رشتے اور خوبصورت احساس۔ اس گٹھری کو ترنت کھولنا چاہئیے۔ ورنہ وہ باتیں,جو تہ کر رکھی ہیں,وہ رشتے,جو سلوٹوں سے بھر گئے ہیں,اور وہ احساس,جو گڑ مڑ ہو گئے ہیں,اس میں ہی غل سکتے ہیں,پھٹ سکتے ہیں,سڑ سکتے ہیں۔ اس گٹھری کو ملن سوریہ کی غنغنی دھوپ میں کھول کر پھیلایا جائے۔ جیسے ہی نمی دور ہوگی کھل اٹھیگیں ڈھیر ساری باتیں,رشتے اور احساس۔

واشنگٹن ارونگ نے کہا ہے-سچی دوستی کبھی ویرتھ نہیں جاتی,یدی اسے پرتدان نہیں ملتا تو وہ لوٹ آتی ہے اور دل کو کومل اور پوتر بناتی ہے۔

ایک میٹھی سی کوتا دوستی کے نام

دوستی,خوشی کا میٹھا دریا ہے
جو آمنترت کرتا ہے ہمیں
'آؤ,خوب نہاؤ,
ہنسی خوشی کی
موج مستی کی
شنکھسیپیاں
جیبوں میں بھرکر لے جاؤ!
آؤ,مجھ میں ڈبکی لگاؤ,
غوطہ لگاؤ
خوب نہاؤ
پیار کا میٹھا پانی,
ہاتھوں میں بھرکر لے جاؤ...!

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation