Loading...
کان فلم فیسٹیول2019 :ایگنیس واردا کے پوسٹر پر اٹکی نظر| Webdunia Hindi

کان فلم فیسٹیول2019 :ایگنیس واردا کے پوسٹر پر اٹکی نظر

کایا کلپ کا صحیح ماینوں میں نظارہ دیکھنا ہو توشروع ہونے کے1دن پہلے یہاں پہنچ جائیے۔ پچھلی کانپھرینس کے پوسٹر لگے پڑے تھے۔ کوئی روک ٹوک نہیں۔ کوئی ریڈ کارپیٹ نہیں۔ کوئی چمک دمک نہیں۔ لیکن اگلے ہی دن اسی جگہ کا ایسا بدلہ روپ دیکھا,جیسے بیوٹی پارلر سے نکل کر بس چلے ہی آ رہے ہوں۔
ایگنیس واردا کا اتنا شاندار فوٹو اور اسکا جب یوں پوسٹر تیار ہوا تو نگاہیں ہٹانے کو جی نہیں چاہتا تھا۔ ایگنیس اسی سال29مارچ کو اس دنیا کو وداع کہہ گئیں۔90سال کی یہ مہان ڈایریکٹر2019کی شروعات میں برلن فلم فیسٹیول میں اپنی آخری فلم لیکر موجود تھیں اور پچھلے ہی سال مہلاؤں کے حق کے لئے کان فیسٹیول میں کئی کلاکاروں کے ساتھ اگوائی کر رہی تھیں اور اسلئے بھی اس سال کا پوسٹر اور خاص ہو جاتا ہے۔
اس سال پریس کارڈ دینے سے پہلے ہی ایک فارم پر دستخط کروا لئے گئے ہیں که کسی بھی کامپٹشن فلم کے پریمیئر سے پہلے اسکے بارے میں کچھ بھی نہ لکھا جائیگا اور نہ بولا جائیگا۔ پچھلے سال سے شروع ہوا یہ پریس کو روکنے کا طریقہ اب دھمکی پر آ گیا ہے که اگر سمیسیما کے پہلے کچھ بھی لیک ہوا تو پریس کارڈ ہی واپس لے لیا جائیگا۔ اتنی سیکورٹی تو لوگ چناؤ کے سمیہ ووٹ ڈالنے میں بھی نہیں برتتے ہیں۔
کان فلم فیسٹیول میں اس بار کوینٹن ٹارنٹنو کی فلم'ونس اپون ء ٹائم ان ہالی وڈ'شامل ہے۔ یہ فلم اپریل تک شامل نہیں تھی,کیونکہ پوری طرح تیار نہیں تھی۔ لیکن ٹارنٹنو اس موقعے کو جانے نہیں دینا چاہتے تھے اسلئے رات دن محنت کرکے انہوں نے فلم کو تیار کر ہی دیا۔

1994میں اپنی فلم'پلپ فکشن'کے لئے پام ڈی'اور اوارڈ جیت چکے ٹارنٹنو اس بار بھی کامپٹشن میں تگڑی ٹکر دینے کو تیار ہیں۔ فلم میں لیوناردو ڈی کیپریو اور بریڈ پٹ مکھیہ کردار نبھا رہے ہیں۔
کان فیسٹیول کی اوپننگ فلم جم جارمش کی جامبی تھیم پر بنی کامیڈی فلم'د ڈیڈ ڈونٹ ڈائی'ہے جسمیں ٹل ڈا سونٹن,ایڈم ڈرائیور اور بل مرے ہیں۔ جم جارمش کان فیسٹیول کے ریگولر ڈایریکٹر ہیں اور اس سے پہلے اپنی فلم'پیٹرسن'کے ساتھ آئے تھے اور اس میں بھی ایڈم ڈرائیور کی مکھیہ بھومکا تھی۔

'آئی ڈینیئل بلیک'بناکر پوری دنیا میں ہلچل مچا دینے والے کین لوچ بھی اپنی نئی فلم'سوری وی مسڈ یو'کے ساتھ حاجر ہیں۔ پیڈرو الموڈوور کی فلم'پین اینڈ گلوری'اور داردینے بردرس کی نئی فلم'ینگ احمد'کامپٹشن میں شامل ہیں۔
آصف کپاڑیا کی ڈئیگو میراڈونا پر بنی ڈاکیومینٹری آؤٹ آف کامپٹشن میں دکھائی جائیگی اور ایسا شائد ہی کوئی ہے,جو آصف کے کام سے واقف نہ ہو اسلئے اس فلم میں جی بھرکر بھیڑ ہونے والی ہے۔

بھارت سے کوئی بھی فلم کسی بھی کیٹیگری میں نہیں ہے۔ ضرور کچھ مارکیٹ سکریننگ اور کچھ شارٹ پھلمیں کارنر میں ہونگی جنہیں بنانے والے ہی اپنے ہی پیسوں سے دکھاتے ہیں,لیکن وہ فیسٹیول کا حصہ نہیں بنتی ہیں۔ لیکن پھر بھی بھارت کے لوگوں کا لگاتار فیسٹیول میں آنا اور موجودگی درج کرانا بڑھتا ہی جا رہا ہے۔
امید کریں که ہماری پھلمیں بھی اپنی اس فیسٹیول کا حصہ بنیں۔ تب تک دنیا کا وہ سنیما دیکھیں جو انوٹھا ہے,انوکھا ہے اور بے مثال ہے!




اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation