Loading...
82ورشوں میں دوسری بار انوشاسناتمک کارنوں سے کھلاڑیوں کو سودیش بھیجا جائیگا| Webdunia Hindi

82ورشوں میں دوسری بار انوشاسناتمک کارنوں سے کھلاڑیوں کو سودیش بھیجا جائیگا

Last Updated: شکروار, 11جنوری2019 (22:22 IST)
نئی دہلی۔ بھارتیہ کرکٹ میں کھلاڑیوں سے جڑے وواد پہلے بھی ہوتے رہے ہیں لیکن ہاردک پانڈیا اور کیئیل راہل کا معاملہ پچھلے82ورشوں میں کیول دوسری گھٹنا ہے جبکہ بھارتیہ کرکٹروں کو دورے کے بیچ سودیش بھیجا جائیگا۔


ورشوں پہلے1936میں مہانکو تتکالین کپتان وجینگرم کے مہاراج یعنی وجی نے ایک پرتھم شرینی میچ کے دوران کتھت اپمان کے کارن بھارت کے انگلینڈ دورے کے بیچ سے سودیش بھیج دیا تھا۔

ودیشی دوروں میں کئی بار انوشاسناتمک مسئلے اٹھے لیکن بھارتیہ کرکٹ کے اتہاس میں یہ پہلا اوسر ہے جبکہ بورڈ نے کارروائی کی اور دوشی کھلاڑیوں کو سودیش لوٹنے کے لئے کہا۔

لالہ امرناتھ کی وجی کے ساتھ بحث مکھیہ روپ سے ٹیم کی راجنیتی سے جڑی تھی اور عام رائے رہی ہے که برٹش بھارت کے تحت ایک ریاست کے شاسک کو اپنی یوگیتا نہیں بلکہ پد کے کارن کپتانی ملی تھی۔

ایئیسپیئینکرکئنپھو میں جولائی2007میں پرکاشت ایک آلیکھ کے انوسار امرناتھ شودر راجنیتی کا شکار ہوئے تھے۔ پانڈیا اور راہل کا معاملہ ایک دم سے بھن ہے اور انہیں مہلاؤں کے لئے آپتیجنک ٹپنیاں کرنے کی قیمت چکانی پڑ رہی ہے۔

بھارتیہ کھلاڑی کے دورے کے بیچ سے سودیش لوٹنے کی ایک اور گھٹنا1996میں گھٹی تھی جب نوجوت سنگھ سدھو کپتان محمد اجہرودین سے تیکھی بحث کے بعد دورے سے ہٹ گئے تھے۔

وہ کسی کو سوچت کئے بنا چپ چاپ نکل گئے تھے جس سے کمرے میں انکے ساتھی کو ٹیسٹ کرکٹ میں پدارپن کا موقع مل گیا۔ یہ ساتھی کوئی اور نہیں بلکہ سورو گانگولی تھے جنہوں نے لارڈس میں پدارپن میچ میں ہی شتک جڑا تھا۔

-->

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation