Loading...
یدھ کے میدان سے زیادہ گھروں میں مارے جا رہے ہیں لوگ| Domestic Violence | Webdunia Hindi

یدھ کے میدان سے زیادہ گھروں میں مارے جا رہے ہیں لوگ

پن سنشودھت شکروار, 12جولائی2019 (11:35 IST)
مہلاؤں کے لئے گھر سب سے خطرناک جگہ بن گیا ہے۔ ایشیاء اور افریقہ میں سب سے زیادہ مہلائیں گھریلو ہنسا کا شکار ہو رہی ہیں۔ سنیکت راشٹر کاریالیہ دوارہ ڈرگس اینڈ کرائم پر پرکاشت ایک ادھئین کے انوسار,دنیا بھر میں آتنکی حملوں اور سشستر سنگھرش سے زیادہ موتیں آپرادھک گتیودھیوں کی وجہ سے ہوتی ہے۔ ویاپک ادھئین میں پایا گیا که سنگٹھت اپرادھ دنیا بھر میں انسانوں کی ہتیا کی ایک بڑی وجہ ہے۔

2017میں دنیا بھر کے قریب4,64,000لوگوں کی ہتیا کر دی گئی۔ وہیں,اسی سال سشستر سنگھرش میں89,000اور آتنکی گھٹناؤں میں19,000لوگ مارے گئے۔ سنگٹھت اپرادھ دنیا بھر میں19پرتیشت موتوں کے لئے ذمیدار رہا۔2014اور2016کے بیچ ہتیاؤں میں90پرتیشت سے ادھک سندگدھ پرش تھے۔ وہیں, 2017مارے گئے لوگوں میں لڑکوں اور پرشوں کی سنکھیا81پرتیشت رہی۔ ہتیا کی سب سے کم در یوروپ میں ہے,جہاں1,00,000لوگوں پر پیڑت کی سنکھیا3ہے۔ گھریلو ہنسا سے پربھاوت مہلاؤں اور لڑکیوں کی سنکھیا2017میں بڑھ گئی۔


مہلاؤں کے لئے سب سے خطرناک جگہ گھر
حالانکہ مہلائیں اور لڑکیاں ویشوک ہتیاؤں کا ایک چھوٹا حصہ ہیں,پھر بھی انکے اپنے ساتھی دوارہ ہنسا میں مارے جانے کی سنبھاونا پرشوں سے بہت ادھک ہوتی ہے۔


یوئین رپورٹ کے انو سار,گھر مہلاؤں کے لئے سب سے خطرناک جگہ بنا ہوا ہے,جہاں اسمانتا اور لینگک روڈھیوں کی وجہ سے انہیں کافی زیادہ اتپیڑن جھیلنا پڑتا ہے۔ ورش2017میں87,000مہلاؤں اور لڑکیوں کی ہتیا کر دی گئی۔ ماری گئی کل مہلاؤں سے58پرتیشت کی ہتیا گھریلو ہنسا کی وجہ سے ہوئی۔2012میں یہ47پرتیشت تھا۔ یہ ہتیا انکے پرواروالوں(پارٹنر,پتی یا ساتھی)دوارہ کی گئی۔

ایشیاء میں ورش2017میں گھریلو ہنسا کی وجہ سے سب سے زیادہ مہلاؤں کی ہتیا ہوئی۔ یہ آنکڑا قریب20,000تک پہنچ گیا۔ دوسرے ستھان پر افریقہ ہی,جہاں قریب19,000مہلاؤں کی ہتیا کر دی گئی۔ کم جن سنکھیا ہونے کے باوجود یہاں گھریلو ہنسا میں مہلاؤں کے پربھاوت ہونے کا سب سے زیادہ خطرہ ہے۔

Domestic Violence
سنگٹھت اپرادھ
ادھئین میں پایا گیا که ورش2000کے بعد سے سنگٹھت اپرادھ کی وجہ سے اتنے لوگ مارے گئے,جتنے پوری دنیا میں سشستر سنگھرش میں مارے گئے۔ سنگٹھت اپرادھ اور گروہ کے بیچ کی ہنسا مدھیہ امریکہ کے کچھ حصوں میں ہتیا کی"ایک پرمکھ وجہ"ہے۔

ورودھی سموہوں کے بیچ سنگھرش کے کارن بھی موتیں بڑھ رہی ہیں۔ پورے وشو میں15سے29سال کے یوواؤں کی ہتیا ہونے کا سب سے زیادہ خطرہ ہوتا ہے۔ رپورٹ میں پایا گیا ہے که یہ وشیش روپ سے امریکہ میں پرشوں کے لئے معاملہ ہے,جہاں سموہوں کے بیچ ہنسا اور فائرنگ موت کی سب سے بڑی وجہ ہیں۔


شکشا اور پولیس کا سہیوگ
دنیا بھر میں ہتیاؤں کی بڑھتی سنکھیا سے نپٹنے اور اسے کم کرنے کے لئے سنیکت راشٹر نے کئی پرستاووں کی روپ ریکھا تیار کی ہے۔ ان میں شکشا میں سدھار کرکے سنگٹھت اپرادھ کا مقابلہ کرنا,بھروسہ قائم کرنے کے لئے سمودایوں کے بیچ پولیس کے کام کو بڑھاوا دینا,یوواؤں کو سوچیبدھ کرتے ہوئے ہنسا روکنے کے لئے کاریہ کرم بنانا شامل ہے۔

ادھئین بتاتا ہے,دربھاگیہ سے انتراشٹریہ سطر پر ورتمان میں اس سمسیا سے نجات کے لئے وتیہ سنسادھن اور راجنیتک درشٹیکون کا ابھاؤ ہے۔ ادھئین میں نشاکھوری کو سماپت کرنے کا آگرہ کرتے ہوئے یہ بھی کہا گیا ہے که جن معاملوں میں قانونی سجا نہیں ملتی ہے,وہ اسے بڑھانے میں اور یوگدان ہوتا ہے۔ ہتیاؤں کی گھٹنا بڑھتی ہے۔ نیائے پرنالی بگڑتی ہے۔


ریبیکا شٹاؤڈینمایر/آر آر

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation