Loading...
نوورش پر کوتا:رہ گئے ہیں اب کچھ پل...۔New Years Poems | Webdunia Hindi

نوورش پر کوتا:رہ گئے ہیں اب کچھ پل...

New Years Poems


رہ گئے ہیں اب کچھ پل,اس سال کے انت کے,
ہونے والی ہے نئی صبح,سپنوں کے سنسار کی۔
دور گگن تاروں کی لڑی,ٹک ٹک کرتی یہ گھڑی,
سنا رہی دھڑکن مانو,انتم سانسوں کے اس سال کی۔

خوش ہے مانو من,خوش ہے ہر جیون,آنے والا نیا سال ہے,
ارمانوں کے پنکھ لگے ہیں,اڑنا اب ہے یہیں,یہ کھلا آسمان ہے۔

ہو رہے ہیں کئی جشن یہاں,اور کھوئی کھوئی سی شام ہے,
کہیں ہے مدھر سنگیت,تو کہیں مردنگ کی تال ہے۔

ناچ رہے ہیں جوڑی باندھے,کرتل دھونی کا شرنگار ہے,
انوپم یہ درشیہ سجا ہے,ہر کسی کو نئے سال کا انتظار ہے۔
نئے سال کی خوشیوں سنگ,کر لینا خود سے وعدہ تم,
کرنا ہے کچھ ایسا که جیت لے دوجوں کے غم۔

ادھک نہ ہو سکےگا تو کچھ ہی صحیح,خوشیاں باٹینگے ہم۔
کہہ رہی ہے ہم سب سے جیسے که,جیسے دیا سنیہہ اس سال میں۔

دینا سنیہہ ایسا ہی سب کو تم,گر کوئی روٹھے یا پھر آ جائے کوئی غم
سہلاکر اپنے من کو بربس,تھوڑا سا ہنس لینا تم۔

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation