Loading...
پاکستان میں ستھت اتہاسک مندر| pakistani hindu mandir | Webdunia Hindi

پاکستان میں ستھت اتہاسک مندر

پاکستان میں ہزاروں اتہاسک مندر تھے۔ کبھی پاکستان کی بھومی آریوں کی پراچین بھومی ہوا کرتی تھی۔ سندھو ندی کا لگ بھگ70پرتیشت حصہ پاکستان میں ہی بہتا ہے۔ سندھو,سرسوتی اور گنگا ندی کے کنارے ہی بھارتیہ سنسکرتی اور سبھیتا کا اتھان اور وکاس ہوا۔ کہتے ہیں که سندھو کے بغیر ادھوری ہے ہندو سنسکرتی۔ پاکستان میں ہی ہڑپا اور موہن جوداڑو کے پراچین نگر کے اوشیش ملے ہیں۔ دنیا کا پرتھم وش‍وودیالیہ پاکستان میں ہی ہے۔ بٹوارے کے بعد پاکستان میں سینکڑوں مندر دھوست کئے گئے۔ ہم نہیں جانتے ہیں که کتنے مندروں کا استتو مٹا دیا گیا اور انکی پراچینتا اور مہتو کیا تھا۔ آج جو مندر بچے ہیں وہ بھی اپیکشا کا شکار ہیں۔
1.ہنگلاج کا شکتپیٹھ
سندھ کی راجدھانی کراچی ضلعے کے باڑیکلاں میں ماتا کا مندر سرمے پہاڑیوں کی تلہٹی میں ستھت ہے۔ یہ پہاڑیاں پاکستان دوارہ جبراً کبجائے گئےمیں ہنگول ندی کے سمیپ ہنگلاج شیتر میں ستھت ہیں۔ یہاں کا مندر پردھان51شکتپیٹھوں میں سے ایک ہے۔ ہنگلاج ہی وہ جگہ ہے,جہاں ماتا کا سر گرا تھا۔ یہاں ماتا ستی کوٹٹری روپ میں جبکہ بھگوان شنکر بھیملوچن بھیرو روپ میں پرتشٹھت ہیں۔
2.کٹاسراج کا شو مندر:
پاکستان کےپرانت میں جلا چکوال شہر سے قریب30کلومیٹر دور دکشن میں کوہستان نمک پروت شرنکھلا میں مہابھارتکالین کٹاسراج نام کا ایک گاؤں ہے۔ اس مندر پرسر میں رام,ہنومان اور شو مندر خاص طور سے دیکھے جا سکتے ہیں۔ ہندو مانیتاؤں کے انوسار جب شوجی کی پتنی ستی کا ندھن ہوا تو وہ اتنا روئے که انکے آنسو رکے ہی نہیں اور انہیں آنسؤں کے کارن2تالاب بن گئے۔ ان میں سے ایک راجستھان میں پشکر ہے اور دوسرا یہاں کٹاشا میں ہے۔ ہندو پورانک کتھاؤں کے انوسار شو نے ستی سے شادی کے بعد کئی سال کٹاسراج میں ہی گجارے تھے۔ یہ مندر قریب900سال پرانا ہے۔
3.نرسنگھ مندر:
بھکت پرہلاد نے بھگوان نرسنگھ کے سمان میں ایک مندر بنوایا تھا,جو ورتمان میں پاکستان ستھت پنجاب کے ملتان شہر میں ہے۔ اسے پراچینکال میں شری ہری کے'بھکت پرہلاد کا مندر'کے روپ میں جانا جاتا تھا۔ اس مندر کا نام پرہلادپری مندر ہے۔ ملتان کے وشوپرسدھ قلعے کے اندر بنا یہ مندر کسی زمانے میں ملتان شہر کی پہچان ہوا کرتا تھا۔ ہولی کے سمیہ یہاں وشیش پوجا ارچنا آیوجت کی جاتی ہے۔ ویسے اس مندر کے بارے میں کہا جاتا ہے که یہیں نرسنگھ بھگوان نے ایک کھمبے سے نکل کر پرہلاد کے پتا ہرنیکشیپ کو مارا تھا۔ یہ بھی مانا جاتا ہے که ہولی کا تیوہار اور ہولکادہن کی پرتھا بھی یہیں سے آرمبھ ہوئی تھی۔
4.پنچمکھی ہنومان مندر:
کراچی کے اس1500سال پرانے پنچمکھی ہنومان مندر میں آج بھی کافی لوگ جاتے ہیں۔ ناگرپارکر کے اسلامکوٹ میں پاکستان کا یہ اکلوتا اتہاسک رام مندر ہے۔ ایک اور پنچمکھی ہنومان مندر کراچی کے شالجر بازار میں بنا ہے۔ اس مندر کو جیرنودھار کی سخت ضرورت ہے۔ یہاں کے پنچمکھی ہنومان کی مورتی ادبھت ہے۔
ویڈیو دیکھیں...
5.گورکھ ناتھ مندر:
پاکستان کے پیشہ ور میں گورکھ ناتھ مندر ہے۔ یہ مندر160سال پرانا ہے۔ یہ مندر بٹوارے کے بعد سے ہی بند پڑا تھا,لیکن پیشاوار ہائیکورٹ کے آدیش پر نومبر2011میں اسے دوبارہ کھولا گیا۔

6.گوری مندر:
گوری مندر سندھ پرانت کے تھارپارکر ضلعے میں ہے۔ پاکستان کے اس ضلعے میں ادھکتر آدیواسی ہیں جنہیں تھاری ہندو کہا جاتا ہے۔ مدھیہ کال میں بنے اس مندر میں ہندو اور جین دھرم کے انیک دیوی دیوتاؤں کی مورتیاں رکھی ہوئی ہیں۔ پاکستان کے کٹرپنتھیوں کے بڑھتے پربھاؤ کے کارن یہ مندر بھی جیرن شیرن اوستھا میں پہنچ چکا ہے۔
6.مری انڈس مندر:
پنجاب کے کالاباغ میں ستھت یہ مندر مری نامک جگہ پر ہے,جو کبھی گاندھار پردیش کا حصہ تھی۔ چینی یاتری ہوینسانگ نے بھی اپنی پستک میں مری کا الیکھ کیا ہے۔5ویں صدی میں بنا یہ مندر ستھاپتیہ کی درشٹی سے ادبھت ہے,لیکن اپیکشا کے کارن کھنڈہر ہو چکا ہے۔

7.شری ورندیو مندر:
1,000سال پرانے اس ادبھت مندر کو1947میں بٹوارے کے بعد بھوماپھیاؤں نے اپنے قبضے میں لے لیا تھا۔2007میں پاکستان ہندو کاؤنسل نے اس بند پڑے اور شتگرست مندر کو پھر سے تیار کرنے کا فیصلہ کیا۔ جون2007میں اسکا نینترن پی ایچ سی کو مل گیا,لیکن اس مندر کی دیکھ ریکھ نہیں ہے۔
8.سوامیناراین مندر:
سوامیناراین مندرپرانت کے کراچی کے ایم اے جنا روڈ پر ستھت ہے۔ اپریل2004میں مندر نے اپنی150ویں سالگرہ منائی۔ مندر میں بنی دھرمشالہ میں لوگوں کے ٹھہرنے کی بھی ویوستھا ہے۔ اس مندر کے بارے میں کہا جاتا ہے که یہاں ہندوؤں کے ساتھ ساتھ مسلم بھی پہنچتے ہیں۔
9.سادھو بیلا مندر,سکر:
8ویں گدی نشیں بابا بن کھنڈی مہاراج کی مرتیو کے بعد سنت ہرنامداس نے اس مندر کا نرمان1889میں کرایا۔ سندھ پرانت کے سکر میں بابا بن کھنڈی مہاراج1823میں آئے تھے۔ انہوں نے میناک پربھات کو ایک مندر کے لئے چنا۔ یہاں ہونے والا بھنڈارا پورے پاکستان میں مشہور ہے۔

10.رام مندر,سیدپر:
پاکستان کی راجدھانی اسلام آباد کے آس پاس اور پنجاب کے راولپنڈی شہر میں کئی اتہاسک مندر اور گردوارے موجود ہیں۔ اسلام آباد میں پرانے سمیہ کے3مندر ہوا کرتے تھے۔ ایک سییدپر,دوسرا راول دھام اور تیسرا گولرا کے مشہور دارگڑھ کے پاس ہے۔ سییدپر گاؤں میں ستھت رام مندر کے بارے میں کہا جاتا ہے که یہ راجا مان سنگھ کے سمیہ میں1580میں بنوایا گیا تھا۔

 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation