Loading...
لوہڑی2019 :کیوں اور کیسے مناتے ہیں لوہڑی پرو,گدا اور بھانگڑا ہو نگے آکرشن کا کیندر۔Lohri celebration 2019 | Webdunia Hindi

لوہڑی2019 :کیوں اور کیسے مناتے ہیں لوہڑی پرو,گدا اور بھانگڑا ہو نگے آکرشن کا کیندر

lohri 13 jan 2019

نئے سال کے خاص پرو میں پنجابی سمودائے کا لوہڑی کاآ رہا ہے,جو13جنوری2019, کو منایا جائیگا۔ یہ پرو دھارمک ایوں سانسکرتک اتسو کا ادبھت تیوہار ہے,جسے دیش ودیش میں بیٹھے سبھی بڑے ہی ہرشولاس کے ساتھ اسے مناتے ہیں۔

پر13جنوری کو پنجابی سمودائے میں پریوار کے سدسیوں کے ساتھ لوہڑی پوجن کی سامگری جٹا کر شام ہوتے ہی وشیش پوجن کے ساتھ آگ جلاکر لوہڑی کا جشن منایا جاتا ہے۔

کیا ہے لوہڑی مکر سنکرانتی سے پہلے والی رات کو سوریاست کے بعد منایا جانے والا پنجاب پرانت کا پرو ہے لوہڑی,جس کا کا ارتھ ہے ل(لکڑی)+اوہ(گوہا یعنی سوکھے اپلے)+ڑی(ریوڑی)۔ اس پرو کے20-25دن پہلے ہی بچے'لوہڑی'کے لوک گیت گا گاکر لکڑی اور اپلے اکٹھے کرتے ہیں۔ پھر اکٹ‍ٹھی کی گئی سامگری کو چوراہے/محلے کے کسی کھلے ستھان پر آگ جلاتے ہیں۔ اس اتسو کو پنجابی سماج بہت ہی جوشو خروش سے مناتا ہے۔ گوبر کے اپلوں کی مالا بناکر منت پوری ہونے کی خوشی میں لوہڑی کے سمیہ جلتی ہوئی اگنی میں انہیں بھینٹ کیا جاتا ہے۔ اسے'چرخہ چڑھانا'کہتے ہیں۔

کیسے مناتے ہیں لوہڑی لوہڑی منانے کے لئے لکڑیوں کی ڈھیری پر سوکھے اپلے بھی رکھے جاتے ہیں۔ سموہ کے ساتھ لوہڑی پوجن کرنے کے بعد اس میں تل,گڑ,ریوڑی ایوں مونگ پھلی کا بھوگ لگایا جاتا ہے۔ اس اوسر پر ڈھول کی تھاپ کے ساتھ گدا اور بھانگڑا نرتیہ وشیش آکرشن کا کیندر ہوتے ہیں۔

پنجابی سماج میں اس پرو کی تیاری کئی دنوں پہلے ہی شروع ہو جاتی ہے۔ اسکا سمبندھ منت سے جوڑا گیا ہے ارتھات جس گھر میں نئی بہو آئی ہوتی ہے یا گھر میں سنتان کا جنم ہوا ہوتا ہے,تو اس پریوار کی اور سے خوشی بانٹتے ہوئے لوہڑی منائی جاتی ہے۔ سگے سمبندھی اور رشتےدار انہیں اس دن وشیش سوغات کے ساتھ بدھائیاں بھی دیتے ہیں۔

:لوہڑی ایوں مکر سنکرانتی ایک دوسرے سے جڑے رہنے کے کارن سانسکرتک اتسو اور دھارمک پرو کا ایک ادبھت تیوہار ہے۔ لوہڑی کے دن جہاں شام کے وقت لکڑیوں کی ڈھیری پر وشیش پوجا کے ساتھ لوہڑی جلائی جائیگی,وہیں اگلے دن پرات: مکر سنکرانتی کا سنان کرنے کے بعد اس آگ سے ہاتھ سینکتے ہوئے لوگ اپنے گھروں کو آئینگے۔ اس پرکار لوہڑی پر جلائی جانے والی آگ سوریہ کے اتراین ہونے کے دن کا پہلا وراٹ ایوں ساروجنک یگی کہلاتا ہے۔

لوہڑی نئے سوروپ میں: اس اتسو کا ایک انوکھا ہی نظارہ ہوتا ہے۔ لوگوں نے اب سمتیاں بناکر بھی لوہڑی منانے کا نیا طریقہ نکال لیا ہے۔ ڈھولنگاڑوں والوں کی پہلے ہی بکنگ کر لی جاتی ہے۔ انیک پرکار کے وادھیہ ینتروں کے ساتھ جب لوہڑی کے گیت شروع ہوتے ہیں تو استری پرش,بوڑھے بچے سبھی سور میں سور,تال میں تال ملاکر ناچنے لگتے ہیں۔

پنجابی گانے کی دھوم:اس اوسر پر'اوئے,ہوئے,ہوئے,بارہ ورشی کھڈن گیا سی,کھڈکے لیاندا ریوڑی...',اس پرکار کے پنجابی گانے لوہڑی کی خوشی میں خوب گائے جا ئینگے۔ لوہڑی پر شام کو پریوار کے لوگوں کے ساتھ انیہ رشتےدار بھی اس اتسو میں شامل ہوتے ہیں۔

تلریوڑی کی مٹھاس کا پرو:یدیپی بدھائی کے ساتھ اب تل کے لڈو,مٹھائی,ڈرایپھوٹ‍س آدی دینے کا رواج بھی چل پڑا ہے پھر بھی ریوڑی اور مونگ پھلی کا وشیش مہتو بنا ہوا ہے۔ اسی لئے ریوڑی اور مونگ پھلی پہلے سے ہی خریدکر رکھ لی جاتی ہے۔ بڑےبجرگوں کے چرن چھوکر سبھی لوگگاتے ہوئے خوشی کے اس جشن میں شامل ہوتے ہیں۔

اس پرو کا ایک یہ بھی مہتو ہے که بڑےبجرگوں کے ساتھ اتسو مناتے ہوئے نئی پیڑھی کے بچے اپنی پرانی مانیتاؤں ایوں ریتی رواجوں کا گیان پراپت کر لیتے ہیں تاکہ بھوشیہ میں بھی پیڑھی در پیڑھی اتسو چلتا ہی رہے۔

وہاں سبھی اپستھت لوگوں کو یہی چیزیں پرساد کے روپ میں بانٹی جاتی ہیں۔ اسکے ساتھ ہی پنجابی سمودائے میں گھر لوٹتے سمیہ'لوہڑی'میں سے2-4دہکتے کوئلے بھی پرساد کے روپ میں گھر لانے کی پرتھا آج بھی جاری ہے۔ ڈھول کی تھاپ کے ساتھ گدا ناچ کا یہ اتسو شام ہوتے ہی شروع ہو جاتا ہے اور دیر رات تک چلتا ہی رہتا ہے۔


 

اور بھی پڑھیں:


Web Tranliteration/Translation