Loading...
دینک ٹربیون» Newsکچھ گھنٹے گجارئے نہ جیل میں-دینک ٹربیون

مسعود اظہر کے بھائی, 13انیہ کے خلاف آروپ پتر داخل !    امریکی کنگ میں اڑان بھرینگے ہریانہ کے‘کنگ’ !    بھارت,روس میں2یدھپوتوں کے نرمان کا قرار !    اییسی پھلمیں ہوں,جو پریوار ساتھ دیکھے:شیری مان !    پتی کو کیا ااتمہتیا کو مجبور,کیس درج !    مٹھ بھیڑ میں ماری گئی مہلا نکسلی !    چین کو امید,مالدیو نہیں چھوڑیگا‘مکت ویوپار’ !    بھارتیہ مول کی8مہلائیں سمانت !    کانگو میں ودروہیوں کا حملہ,بھارتیہ شانترکشک گھائل !    پاک نے بریگیڈ مکھیالیہ پر داغے گولے,ملا کرارا جواب !    

کچھ گھنٹے گجارئے نہ جیل میں

Posted On September - 14 - 2018

ترچھی نظر

سہیرام
جی نہیں,یہ جیل پریٹن کا وگیاپن نہیں ہے۔ جیل پریٹن ابھی شروع نہیں ہوا ہے۔ ابھی اسکی یوجنا بن ہی رہی ہے۔ امید کرنی چاہئیے که یہ یوجنا پانچ سالا نہیں ہوگی۔ ویسے بھی یوجنا آیوگ اب ختم ہو چکا ہے۔ اب یوجنائیں نہیں,نیتیاں بنتی ہیں۔ جیل سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔
ویسے بھی ایڈوینچر اور تھرل بھی پریٹن کا حصہ ہوتے ہی ہیں۔ پریٹن بھی تو اب طرح طرح کے ہو گئے ہیں۔ شاسک پارٹی سے پوچھو تو وہ وپکش کے نیتا کے ہی کتنی طرح کے پریٹن غنا دیگی۔ ابھی کچھ ورش پہلے یہ یوجنا بنی تھی که چنبل کی ان جگہوں کو پریٹن ستھلوں کے روپ میں وکست کیا جائیگا,جہاں کبھی مان سنگھ اور موہر سنگھ جیسے نامی گرامی ڈاکو وچرن کرتے تھے۔ تھرل کا ایلیمینٹ نہیں ہے کیا؟ پھر پچھلے دنوں یہ خبر آئی که اب جیل پریٹن شروع ہونے جا رہا ہے۔ کالا پانی تو خیر پہلے ہی پریٹن ستھل کے روپ میں وکھیات ہو چکا ہے۔ پر اب کالا پانی جانے کی ضرورت نہیں ہے۔ آپ اپنے یہاں بھی جیل کا لطف لے سکتے ہیں۔ بس پیسہ چکائیے اور جیل کی ہوا کھائیے۔
جی ہاں,ادھر یوپی سے خبر یہ ہے که جن کی کنڈلی میں جیل یوگ ہے,وہ اپنی مرضی سے کچھ گھنٹے لاکئپ میں رہ کر اسکا نراکرن کر سکتے ہیں۔ کسی پنڈت پروہت سے,کسی تانترک سے یگی ہون کرانے کی کوئی ضرورت نہیں۔ بس کچھ گھنٹے لاکئپ میں بتائیے,یہ جیل یوگ سے بچنے کا ایک دم پکا اپائے ہے۔ اسکے لئے بس ایک پرارتھنا پتر دیجیے اور جلا پرشاسن آپ کو لاکئپ کی سودھا مہیا کرا دیگا۔
اب ان نیتاؤں کو ڈرنے کی کوئی ضرورت نہیں,جنہیں جیل جانے کا ڈر ستاتا رہتا ہے۔ اگر جیل یوگ کا یہ توڑ پہلے ہی نکل آتا تو ان باباؤں کو بھی جیل نہیں جانا پڑتا جو بلاتکار اور نہ جانے کس کس آروپ میں جیل میں ہیں۔ پر اگر انہیں یہ اپائے ہی نہیں سوجھا تو وہ کس بات کے بابا ہیں بھئی۔ خیر,اب یہ توڑ نکل آیا ہے تو تمام بلاتکاری اور اپرادھی اوشیہ ہی یہ اپائے اپنا سکتے ہیں۔ بینکوں کا پیسہ لیکر بھاگ جانے والوں کو بھی اب چنتا کرنے کی ضرورت نہیں۔ بس کچھ گھنٹے لاکئپ میں بتائیے اور سب رپھا دپھا۔
اب سمجھیئے که ماپھیاؤں کی تو بن آئیگی۔ وہ چند گھنٹے لاکئپ میں بتاکر اپنا مافیا راج چلا سکتے ہیں۔ پر چنتا اصل میں یہ ہے که اب قانون اور ویوستھا کا کیا ہوگا؟ عدالتیں کیا کرینگی؟ وکیلوں کا کیا ہوگا؟ اگر کسی کو جیل بھیجنے کی سجا دے دی,تو کہیں وہ اینٹھ کر الٹا یہی نہ کہہ دے میرا تو جیل یوگ کا نراکرن ہو چکا ہے,آپ مجھے کیسے جیل بھیج سکتے ہیں؟


Comments Off onکچھ گھنٹے گجارئے نہ جیل میں
1 Star2 Stars3 Stars4 Stars5 Stars (No Ratings Yet)
Loading...
Both comments and pings are currently closed.

Comments are closed.

سماچار میں حال لوکپریہ

Powered by : Mediology Software Pvt Ltd.
Web Tranliteration/Translation