Loading...
دینک ٹربیون» Newsماننیوں کا ویوہار-دینک ٹربیون

ہریانہ میں ایمس کے لئے جگی امید !    نریکشن کرنے گئی بیڈیپیؤ ٹیم کے ساتھ کی ہاتھاپائی !    نقلی سونا دیکر ٹھگے ساڑھے4لاکھ !    ہوٹل سے ایک ایک کر نکل رہے بھاجپا ودھایک !    آکروشت ودیارتھیوں نے لگایا جام !    سوہنا میں کمرے میں بند ملے بچے,ماں لاپتہ !    ادھک وصولی پر کورٹ کا کھٹکھٹایا دوار !    کھیلو انڈیا ہاکی میں کروکشیتر کے کھلاڑیوں کا دھمال !    راجستھان رایلس کے مالک بیچینگے حصے داری !    انجیکشن کا استعمال کرنے والے کھلاڑی پر2سال کے پرتیبندھ کا پرستاؤ !    

ماننیوں کا ویوہار

Posted On September - 15 - 2018

ہریانہ ودھان سبھا اس بار‘ماننیوں’کے ویوہار کی وجہ سے‘شرمسار’ہوتی نظر آئی۔ کانگریس اور انیلو ودھائکوں کے بیچ آپسی ٹکراو تو سوابھاوک ہے,لیکن اس بار جس طرح سے سدن میں جوتے تنے اور گالیاں چلیں,وہ اچھے سنکیت نہیں ہیں۔ پورے گھٹناکرم میں سرکار کی بھومکا کو بھی اچھا نہیں کہا جا سکتا۔ ویسے راجنیتک روپ سے دیکھا جائے تو بھاجپائیوں کو انیلو اور کانگریس نیتاؤں کی یہ لڑائی راس آ رہی تھی۔ کہنے والے کہہ رہے ہیں که اس طرح کی گھٹناؤں سے آنے والے دنوں میں سدن کا ماحول اور خراب ہو سکتا ہے۔
‘بی’ٹیم
کانگریسی اکثر انیلو کو بھاجپا کی‘بی’ٹیم کہتے ہیں۔ ادھر,انیلو والے بھائی لوگ کانگرسیوں پر آروپ لگاتے ہیں که وہ بھاجپا کے ساتھ ملکر راجنیتی کر رہے ہیں۔ ستاروڑھ بھاجپا کے لئے دونوں ہی ستھتیاں صحیح ہیں۔ مانسون ستر میں بھاجپا اور انیلو جس طرح سے کئی مدعوں پر سر ملاتے نظر آئے,اس سے ایک بار پھر‘بی’ٹیم کا مدعا گرما گیا ہے۔ اب سرکار تو سرکار ہے۔ پہلے تو سی ایم نے دو ٹوک کہا,ہم نہ ان سے ملے ہیں اور نہ ان سے ملے ہیں۔ ہم جنتا سے ملے ہیں,لیکن جب دوسری بیٹھک میں بل پاس کرنے کی بات آئی تو سپیکر چیئر انیلو ودھایک ذاکر حسین کے حوالے کر دی گئی۔ بیشک,اس میں غیر قانونی کچھ بھی نہیں ہے,لیکن یہ بات ہر کوئی سمجھنا چاہ رہا ہے که آخر ایسا کرکے کیا سندیش دیا گیا۔
کاکا کا جواب
مانسون ستر سے فارغ ہوتے ہی کھٹر کاکا نے اپنے آواس پر ودھایک دل کی بیٹھک بلائی اور اس میں آگامی لوک سبھا ایوں ودھان سبھا چناووں کی تیاریوں کی رننیتی پر چرچا کی۔ پہلی نومبر کو کرنال میں مہاریلی کرنے کا فیصلہ ہوا۔ اب بھاجپا ودھائکوں کو تو اپنا درد بتانے کا موقع چاہئیے۔ سو,بیٹھک میں بھی کچھ بھائی لوگوں نے ادھیکاریوں دوارہ سنوائی نہیں کرنے کا دکھڑا سنایا۔ کچھ ودھائکوں نے کہا که ضلعوں کے ادھیکاری سنوائی نہیں کرتے۔ بتاتے ہیں که اس پر کاکا نے سپاٹ سا جواب دیا–میری تو سنتے ہیں۔ اس پر ناراضگی جتانے والے ماننیوں کے پاس چپ رہنے کے علاوہ کوئی وکلپ نہیں بچا تھا۔
لنچ سے دوری
پلول سے کانگریس ودھایک کرن سنگھ دلال کا ودھان سبھا کی کاریہ واہی سے ایک سال کے لئے نلمبن کیا ہوا,کانگریس کے سبھی ودھائکوں نے سپیکر کے لنچ کا بہشکار کر دیا۔ منگلوار کو مانسون ستر میں ڈبل سٹنگ تھی۔ ایسے میں دوپہر بھوجن کا پربندھ سپیکر کی اور سے کیا گیا۔ سپیکر نے اسکے لئے سبھی ودھائکوں,ادھیکاریوں ایوں پترکاروں کو لنچ کا نیوتا دیا۔ جس سمیہ نیوتا دیا,اس سے کچھ منٹ پہلے ہی دلال کا نلمبن ہوا تھا۔ اس پر مہم ودھایک آنند سنگھ دانگی نے کٹاکش کرتے ہوئے کہا که سپیکر صاحب اتنی بڑی کارروائی کرنے کا بعد لنچ کا بھی نیوتا دے رہے ہیں۔ کانگریس ودھائکوں نے تو بہشکار کیا اپنے ورودھ کے طور پر,لیکن وپکش کے نیتا ابھے سنگھ چوٹالا بھی لنچ میں شامل نہیں ہوئے۔ وہ لنچ کے لئے گئے تو تھے,لیکن وہاں جب سی ایم و سپیکر نہیں دکھے تو واپس آ گئے۔ انیلو کے باقی ودھائکوں نے وینجنوں کا لطف اٹھایا۔
اکیلے پڑے بابا
داڑھی والے کامریڈ بابا یعنی انل وج اس بار ودھان سبھا میں اکیلے پڑتے نظر آئے۔ ویسے تو بابا جب آکرامک ہوتے ہیں تو اکیلے ہی سب پر بھاری پڑتے ہیں,لیکن پچھلے کچھ سطروں سے وہ کچھ زیادہ ہی شانت رہتے ہیں۔ انکے سمرتھن میں سب سے ادھک اور بلند آواز کے ساتھ کھڑے ہونے والے انکے دوست یعنی مہیندرگڑھ والے بڑے پنڈت جی اس بار ستر میں نہیں تھے۔ انکی ماتاجی کے بیمار ہونے کی وجہ سے وہ ستر میں نہیں آئے۔ پنڈت جی کی یہ کمی نہ کیول بابا,بلکہ ستاپکش و وپکش کے ودھائکوں کو بھی خلیع۔
دو منتریوں کی فیلڈنگ
وپکش کے نیتا ابھے چوٹالا اور پلول ودھایک کرن دلال کے بیچ کے جھگڑے میں سرکار کے دو منتریوں کی فیلڈنگ کافی کارگر ثابت ہوئی۔ جس طرح سے ان منتریوں نے پورے معاملے کو ہینڈل کیا,اس سے صاف دکھ رہا تھا که وہ معاملے کو شانت نہیں ہونے دینا چاہتے تھے۔ دلال دوارہ کہے گئے‘کلنکت’شبد کو اس قدر مدعا بنایا که اسے پردیش اور ماتر بھومی کے ساتھ ساتھ کسانوں اور جوانوں کے مان سمان سے جوڑ دیا۔ حالانکہ, ‘کلنکت’شبد کو کسی بھی طرح سے اسنسدیہ نہیں مانا جا سکتا,لیکن جب سیاست کا توا چڑھا ہو تو ہر کوئی اس پر روٹیاں سینکتا ہے۔ سو,اپنے بھائی لوگوں نے بھی سینکیں تو برا کیا ہے۔ اب یہ تو ابھے اور دلال کو سمجھنا تھا که وہ کس طرح سے بنے ہوئے جال میں پھنستے جا رہے ہیں۔
تاؤ کا سمرتھن
سانگھی والے تاؤ کے خلاف گرگرام میں ایف آئی آر درج ہونے کے بعد پہلی بار ایسا ہو رہا ہے که کانگریس میں انکے ورودھی بھی انکے ساتھ کھڑے نظر آ رہے ہیں۔ پارٹی میں اندرکھانے ہڈا کے ساتھ چھتیس کا آنکڑا رکھنے والے سائکل والے پردھانجی بھی اس معاملے میں ہڈا کے ساتھ کھڑے ہیں۔ انہوں نے ساروجنک طور پر کہا که ہڈا کے خلاف راجنیتک بدلے کی بھاونا سے کیس درج ہوا ہے۔ یہی نہیں,کانگریس ودھایک دل کی نیتا کرن چودھری نے بھی پورو سی ایم کا کھل کر سمرتھن کیا ہے۔ ویسے کہنے والے تو کہہ رہے ہیں,کیونکہ ایف آئی آر میں رابرٹ واڈرا کا بھی نام ہے,اسلئے ایف آئی آر کا ورودھ کرنا انکی مجبوری ہے۔ اب کوئی اسکے بھی راجنیتک معنی نکالنے لگ جائے تو کیا کیا جا سکتا ہے۔
-دنیش بھاردواج


Comments Off onماننیوں کا ویوہار
1 Star2 Stars3 Stars4 Stars5 Stars (No Ratings Yet)
Loading...
Both comments and pings are currently closed.

Comments are closed.

سماچار میں حال لوکپریہ

Powered by : Mediology Software Pvt Ltd.
Web Tranliteration/Translation