Loading...
دینک ٹربیون» Newsاب پرناموں کی چنتا,پورے پردیش میں آج کل یہی سوال پوچھا جا رہا-کون بنیگا سانسد-دینک ٹربیون

راج مستری کی بیٹی کو راجیہ میں8واں,ضلعے میں تیسرا ستھان !    سنگاپور سے ووٹ ڈالنے بھارت آیا این آر آئی پریوار !    زیادہ تر ایگجٹ پول میں پھر مودی سرکار !    راشٹرپتی سے سمانت نیہا نے چھیڑی پانی بچانے کی مہم !    ایکدا !    بھدرواہ جانچ کے آدیش,کرفیو جاری !    ‘جج کے خلاف مہابھیوگ,سانسد کا نام نہیں بتا سکتے’ !    یوجیسی:یون اتپیڑن کے آنکڑے بتاییں !    دیش کی گوشالاؤں میں گؤئیں گہرے دباوٴ میں !    اندور میں بھاجپا کاریہ کرتا کی ہتیا !    

اب پرناموں کی چنتا,پورے پردیش میں آج کل یہی سوال پوچھا جا رہا–کون بنیگا سانسد

Posted On May - 15 - 2019

کنیڈا طے آیا فون,بیٹے نے پوچھا‘ماں کن جیتیگا,کسا رہا الکیشن’
انل شرما/نس
روہتک, 14مئی
23مئی کو عام چناؤ کے پرنام کا انتظار پورے دیش کو ہے,حالانکہ سوشل سائٹ سے لیکر گاؤں دیہات کی چوپالوں,بیٹھکوں,چوک چوراہوں میں آج کل بس اسی کی چرچا ہےکه کونسی پارٹی چناؤ جیتیگی اور کون امیدوار کہاں سے جیت درج کریگا۔
روہتک میں سوشل میڈیا پر کانگریس پرتیاشی دیپیندر ہڈا کی جیت کے قیاس لگائے جا رہے ہیں,وہیں بھاجپا امیدوار ڈا.اروند شرما کو وجئی دکھایا جا رہا ہے۔ یہی نہیں ودیش میں بیٹھے ہریانہ کے لوگوں کو بھی پرنام کا بے صبری سے انتظار ہے۔ کنیڈا میں رہ رہے سامپلا کے یووک دنیش نے اپنی ماں کو فون کرکے پوچھا ماں الکیشن کسا رہیا ار کون جیتے سے۔ اس پر اسکی ماں نے کہا بیٹا تیرے بابو طے پوچھ قے بتاؤنگی,اس بار طے مقابلہ گھنا کرڑا سے,بیرا نہ کن جیتیگا۔ چوپالوں میں چلنے والی چرچا کی بات کریں تو ہار جیت کو لیکر بڑے بڑے دعوے کئے جا رہے ہیں,حالات ایسے ہیں که گرامین شرط لگانے سے بھی پیچھے نہیں ہٹ رہے۔ کہیں سٹیباجار کے آنکڑوں کو لیکر چرچا ہے تو کہیں سوشل میڈیا پر چل رہے سروے کی رپورٹ پر بھی خوب ماتھاپچی دیکھنے کو ملتی ہے۔
دلوں کی اور سے جیت ہار کے دعوے
اس بیچ لوک سبھا چناؤ کے متدان کے بعد اب نتیجوں کو لیکر سرگرمیاں تیز ہو گئی ہیں,جہاں پارٹیاں اپنی اپنی جیت کا دعویٰ کر رہی ہیں,وہیں چوک چوراہوں پر ہار جیت کے الگ الگ سمیکرن بنائے جا رہے ہیں۔ سوشل میڈیا پر بھی الگ الگ سروے رپورٹ چرچا کا وشیہ بنی ہوئی ہے۔
روہتک لوک سبھا شیتر کے9حلقوں میں سے4پر کانگریس امیدوار کو جیتتے دکھایا جا رہا ہے وہیں5ودھان سبھا شیتروں میں بھاجپا امیدوار کو آگے بتایا جا رہا ہے۔ لوگ اپنے اپنے سطر پر آکلن لگا رہے ہیں که اس بار مقابلہ اتنا کڑا ہے که ہار جیت کا انتر ہزاروں میں رہیگا۔85ورشیہ بزرگ اومدت کا کہنا ہے که پہلی بار اسا الیکشن دیکھا سے,جسکے نتیجہ نے لیک ہر کسے کی دھڑکن بڑھیا راکھیی سے۔
پانی بھرنے جاتے سمیہ بھی رزلٹ کی ہی چرچا
پورے دیش میں نئے متداتاؤں کی سنکھیا بڑھی ہے,ان میں مہلاؤں کی سنکھیا بھی الیکھنیہ ہے۔ اییسے میں گاؤں دیہات میں پہلی بار ووٹ ڈالنے والی مہلاؤں میں بھی چناؤ نتیجوں کو لیکر دلچسپی بنی ہوئی ہے۔ اور تو اور کئیں آدی پر پانی بھرنے کے لئے جاتے سمیہ مہلاؤں کے پاس امیدواروں کی ہار جیت پر چرچا کے علاوہ انیہ ٹاپک نہیں ہوتا۔


Comments Off onاب پرناموں کی چنتا,پورے پردیش میں آج کل یہی سوال پوچھا جا رہا–کون بنیگا سانسد
1 Star2 Stars3 Stars4 Stars5 Stars (No Ratings Yet)
Loading...
Both comments and pings are currently closed.

Comments are closed.

Powered by : Mediology Software Pvt Ltd.
Web Tranliteration/Translation