Loading...
دینک ٹربیون» Newsمودی نے بھارت کو وپھل کیا:منموہن سنگھ-دینک ٹربیون

راج مستری کی بیٹی کو راجیہ میں8واں,ضلعے میں تیسرا ستھان !    سنگاپور سے ووٹ ڈالنے بھارت آیا این آر آئی پریوار !    زیادہ تر ایگجٹ پول میں پھر مودی سرکار !    راشٹرپتی سے سمانت نیہا نے چھیڑی پانی بچانے کی مہم !    ایکدا !    بھدرواہ جانچ کے آدیش,کرفیو جاری !    ‘جج کے خلاف مہابھیوگ,سانسد کا نام نہیں بتا سکتے’ !    یوجیسی:یون اتپیڑن کے آنکڑے بتاییں !    دیش کی گوشالاؤں میں گؤئیں گہرے دباوٴ میں !    اندور میں بھاجپا کاریہ کرتا کی ہتیا !    

مودی نے بھارت کو وپھل کیا:منموہن سنگھ

Posted On May - 15 - 2019

ٹربیون ایکسکلوسو

ادتی ٹنڈن/ٹرنیو
نئی دہلی, 14مئی
کانگریس کے ورشٹھ نیتا و پورو پردھان منتری منموہن سنگھ نے لوک سبھا چناؤ کے انتم چرن میں رویوار کو ہونے والے متدان سے پہلے کہا ہے که ایک نیتا کے طور پر نریندر مودی نے بھارت کو وپھل کیا ہے اور یدی مودی کو باہر کا دروازہ دکھایا جاتا ہے تو دیش کو بیحد راحت ملے گی۔
ٹربیون سے وشیش بات چیت میں منموہن سنگھ نے کہا, ‘مودی سرکار کے5سال نے گہری نراشا کی بھاونا پیدا کی ہے۔ بڑے پیمانے پر بیروجگاری,چھوٹے اور مجھولے ویوسایوں کا نقصان,ہمارے ونچت ورگوں کے ادھیکاروں کو چھیننا,بڑے پیمانے پر بھرشٹاچار,سنستھانوں پر لگاتار حملے اس سرکار کی دین رہے ہیں۔’
دونگت پردھان منتری راجیو گاندھی کو بھرشٹاچاری نمبر ایک کہنے اور آئیینئیس وراٹ پر چھٹیاں منانے کے مودی کے آروپوں پر تیکھا پلٹوار کرتے ہوئے منموہن سنگھ نے کہا که ششٹاچار اتہاس کی بات بن گیا ہے۔ انہوں نے کہا, ‘پردھان منتری کاریالیہ گمبھیرتا اور مہتوپورن ذمیداری کا پرتیک ہے,جس سے یہ دوسروں کے انوکرن کے لئے اداہرن بنتا ہے۔ افسوس کی بات ہے که مودیجی اس کاریالیہ کے سنیم اور پرتشٹھا کو سمجھنے سے انکار کرتے ہیں۔ یہ ایک جیونت لوکتنتر کے روپ میں بھارت کی چھوی کو نقصان پہنچا رہا ہے۔’پورو پردھان منتری نے کہا که بیروجگاری,کرشی سنکٹ,ساماجک سشکتیکرن کے واستوک مدعے اچھوتے اور انسلجھے ہیں۔ لوگ دیکھ رہے ہیں اور اسکا جواب دینگے۔ انہوں نے یہ بھی کہا که جب بھارت کی آرتھک پرگتی کا اتہاس لکھا جائیگا,تو مودی سرکار کے کاریہ کال کو کالے دھبے کے طور پر غنا جائیگا۔

راشٹرواد کسی کا کاپی رائٹ نہیں:منموہن سنگھ نے کہا که ایک ویکتی(مودی)یا ایک پارٹی(بھاجپا)راشٹرواد پر کاپی رائٹ کا ادھیکار نہیں جتا سکتے,بھارت کے نرمان میں یوگدان دینے والا ہر ویکتی راشٹروادی تھا۔ انہوں نے کہا, ‘کوئی بھی ویکتی یا پارٹی راشٹرواد کا ایکماتر دھوجواہک ہونے کا دعویٰ کیسے کر سکتی ہے؟ میہنتکش بھارتیوں کے جیون اور آجیوکا کو نشانہ بنانے والے چھدم راشٹروادی ہیں۔’

پترودا کی ٹپنی اسویکاریہ سکھ دنگوں پر سیم پترودا کے بیان پر منموہن سنگھ نے کہا,انکی ٹپنیاں پوری طرح سے انچت,اسویکاریہ اور آہت کرنے والی تھیں۔ خود راہل گاندھی نے انہیں ساروجنک روپ سے دھکارا ہے۔
ادار سرکار کی امید منموہن سنگھ نے امید جتائی که کیندر میں ایک پرگتیشیل,ادار اور صحیح معنی میں لوکتانترک سرکار ستا کی باگ ڈور سمبھالیگی,جسمیں کانگریس پرمکھ بھومکا نبھائیگی۔
سرجکل سٹرائک نیا نہیں آتنکواد کے خلاف کارروائی کو لیکر منموہن سنگھ نے کہا که سشستر بلوں کو سیما پار کسی بھی خطرے کا جواب دینے کے لئے ہمیشہ فری ہینڈ دیا گیا اور سرجکل سٹرائک نیا نہیں ہے۔ انہوں نے کہا, ‘سشستر بلوں کے ابھیانوں کو مودی کی اپلبدھیایں کے طور پر دکھانے کے لئے مودی سرکار نے سرکشا کے مدعوں پر گوپنیتا کی الکھت پرمپرا کو توڑ دیا۔’آتنکواد کے خلاف یو پی اے کے نرم رخ کے آروپایں پر پورو پردھان منتری نے کہا, ‘میں اس سے اس ہمت ہوں که ہم سینیہ کارروائی کے لئے تیار نہیں تھے۔ ہم تیار تھے۔ لیکن بھو راجنیتک ستھتی تب ہمارے پکش میں آ رہیں تھی۔ ہم نے پاکستان کو الگ تھلگ کرنے کے لئے کوٹنیتک اور تیزی سے جواب دیا۔’

ساتھ ملکر چلنے کا نام ہے لوکتنتر:منموہن

نئی دہلی, 14مئی(ٹرنیو)
ٹربیون کے ساتھ بات چیت میں پورو پردھان منتری منموہن سنگھ نے کئی مدعوں پر اپنی رائے بیباکی سے رکھی۔ پیش ہے بات چیت کے خاص انش

تین دشک کے بعد بھاجپا کو پورن بہہ مت ملا۔ کیا آپ سمجھتے ہیں که گٹھ بندھن کا یگ سماپت ہوا؟
لوکتنتر ایکجٹتا,سہیوگ اور ساتھ ملکر چلنے کا نام ہے۔ لوکتنتر الگ الگ درشٹیکون سے راشٹرہت میں بننے والی سہمتی کا نام ہے۔ لوکتنتر ایک طرح سے وچاروں کا گٹھ بندھن ہی ہے۔ ہم گٹھ بندھن سرکار میں ہی دیش کو وکاس کے نئے دور میں لے گئے جو ادھکانشت: بہہ مت والی سرکاریں بھی نہیں کر پائی۔ یو پی اے سرکار کے10سال کے کایرکال میں آرتھک وکاس در اوسطاً8.1فیصدی رہی جبکہ پچھلے پانچ سال میں مضبوط سرکار ہونے کے باوجود یہ آنکڑا نہیں چھو سکی۔
کانگریس کے گھوشنا پتر میں نیائے یوجنا کی بات کہی گئی ہے,وییہ کا ریشنیلائجیشن کرنے اور لکشت سبسڈی ہی جاری رکھنے کا کہیں یہ

مطلب تو نہیں که دوسری طرح کی انیہ سبھی سبسڈی ختم کر دی جائینگی؟
جب دیش آزاد ہوا تو70فیصدی لوگ غریب تھے جبکہ اسکے بعد ستا میں آئی سرکاروں کی نیتیوں سے یہ آنکڑا گھٹ کر20فیصدی پر آ گیا۔ اب وقت آ گیا که ہم غریبی کو ختم کرنے کے لئے نیائے یوجنا کے مادھیم سے نیونتم آئے یوجنا لاگو کریں۔ یہ یوجنا ٹھہری ہوئی ارتھویوستھا میں نئی جان پھونک دیگی۔ سروادھک غریب20پرتیشت پریواروں کو سالانہ72ہزار کی آئے سنشچت کرنے کے لئے یہ یوجنا لائی جا رہی ہے۔ اس سے جی ڈی پی میں1.2سے لیکر1.5فیصدی تک وردھی ہوگی۔ تین ٹرلین کی ہماری ارتھویوستھا بڑے آرام سے اس خرچ کو اوشوشت بھی کر پاییگی۔

اینڈیئے سرکار کے کاریہ کال میں آپ ارتھویوستھا کی پرگتی کو کیسے آنکتے ہیں؟
مودی سرکار کے آرتھک کپربندھن کی وجہ سے بھارت کی وکاس در پٹری سے اتر گئی۔ آر بی آئی,ایسئینسی,یوجنا آیوگ(نیتی آیوگ)جیسے سنستھان جنہیں پوری سوایتتا تھی,انہیں اب بڑی چالاکی سے چپ کرا دیا گیا۔ آج ہم آنکڑوں کی وشوسنیتا کھو چکے ہیں,ہمارے آنکڑوں پر انگلیاں اٹھتی ہے جبکہ70سالوں میں ایسا کبھی نہیں ہوا۔

آپکے حساب سے اس سرکار کی ودیش نیتی کے وپھل ہونے کا کیا کارن ہے؟
اس سرکار میں ساری ودیش نیتی بھارت کی رننیتی اور آرتھک ہتوں کی بجائے ویکتی کیندرت ہو گئی ہے۔ ایک بڑا اداہرن یہ ہے که پچھلے70سال میں پہلی بار روس جیسے ہمارے پکے دوست نے بھی پاکستان کو ہتھیار بیچنے پر لگی پابندی ہٹا لی۔ ایسا پہلے کبھی نہیں ہوا,روس نے ایم آئی 35ہیلی کاپٹر بھی پاک کو بیچے۔ اتنا ہی نہیں روس نے پاک کے ساتھ‘سینک سہیوگ سمجھوتہ’کیا اور2017میں پاک کی میزبانی میں نوسینا ابھیاس بھی کیا۔ مودی سرکار کی ودیش نیتی پوری طرح سے اسپشٹ ہے۔

کانگریس اس بار جیتنے کے لئے کیا الگ کر رہی ہے؟
کانگریس ان چناووں کو کانگریس ادھیکش راہل گاندھی کی لیڈرشپ میں بڑی شدت اور پوری آکرامکتا کے ساتھ لڑ رہی ہے۔ ہم نے حال ہی میں راجستھان,مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑ میں اچھا کیا ہے۔ پنجاب اور کرناٹک میں پہلے جیت چکے ہیں۔ ہم نے کافی وچار منتھن کے بعد دیش کے لئے ایک ٹھوس,واستوک اور لاگو کرنے لائق وزن والا گھوشنا پتر تیار کیا۔ مجھے امید ہے که لوگ ایک پرگتیشیل سرکار چننے کے لئے ہمارے وچاروں کو سویکار کرینگے۔

کانگریس نے پی ایم پر رافیل کو لیکر بھرشٹاچار کے آروپ لگائے مگر آروپ پرمانت نہیں ہو پائے؟ کیا یہ آپکی رننیتی کو ایک دھکا نہیں ہے؟
رافیل گھوٹالا شائد سب سے بڑا رکشا گھوٹالا ہے جسمیں ستا میں بیٹھے بڑے لوگ سنلپت ہیں۔ کانگریس پارٹی دوارہ اٹھائے گئے سوال ابھی انوترت ہیں اور ہزاروں پنے کے دستاویجی سامگری ایسی ہے جو پرتھم درشٹیا گڑبڑیوں,رکشا سودے خرید پرکریا کے النگھن,راشٹرہتوں کی بلی اور راشٹریہ سرکشا کو خطرہ جیسی چیزوں کو پرمانت کرتی ہے۔ ہم پھر سے اسکی جیپیسی جانچ کی مانگ کرتے ہیں۔ اگر اس میں کچھ غلط نہیں ہے تو مودی سرکار جیپیسی جانچ سے کیوں بھاگ رہی ہے؟ پترکاروں کو جیل میں ڈال دینے کی دھمکیاں کیوں دی جا رہی ہے؟

آپنے2019کے چناؤ کے لئے پرچار نہیں کیا۔ کیا آپ ساروجنک جیون میں بنے رہینگے؟
میں ساروجنک جیون میں ہوں اور جب تک میری صحت ساتھ دیگی تب تک میں اپنی یوگیتا و شمتا کے انوسار دیش کی سیوا کرتا رہونگا۔


Comments Off onمودی نے بھارت کو وپھل کیا:منموہن سنگھ
1 Star2 Stars3 Stars4 Stars5 Stars (No Ratings Yet)
Loading...
Both comments and pings are currently closed.

Comments are closed.

Powered by : Mediology Software Pvt Ltd.
Web Tranliteration/Translation