Loading...
دینک ٹربیون» Newsلوکتنتر کے اندھیرے-دینک ٹربیون

راج مستری کی بیٹی کو راجیہ میں8واں,ضلعے میں تیسرا ستھان !    سنگاپور سے ووٹ ڈالنے بھارت آیا این آر آئی پریوار !    زیادہ تر ایگجٹ پول میں پھر مودی سرکار !    راشٹرپتی سے سمانت نیہا نے چھیڑی پانی بچانے کی مہم !    ایکدا !    بھدرواہ جانچ کے آدیش,کرفیو جاری !    ‘جج کے خلاف مہابھیوگ,سانسد کا نام نہیں بتا سکتے’ !    یوجیسی:یون اتپیڑن کے آنکڑے بتاییں !    دیش کی گوشالاؤں میں گؤئیں گہرے دباوٴ میں !    اندور میں بھاجپا کاریہ کرتا کی ہتیا !    

لوکتنتر کے اندھیرے

Posted On May - 15 - 2019

جب ہم جاگینگے تبھی ہوگا سویرا
دیش کے چناؤ پر نظر رکھنے والی سنستھا ایڈیار الیکشن واچ دوارہ جٹایے گئے تتھیوں کے نشکرش بھارتیہ لوکتنتر کے ہر آستھاوان کو پریشان کرنے والے ہیں۔ جو نہ کیول سبھی راجنیتک دلوں کو کٹھگھرے میں کھڑا کرتے ہیں بلکہ یہ بھی بتاتے ہیں که اب راجنیتی سیوا نہیں,میوہ حاصل کرنے کا زریعہ بن گئی ہے۔ بھلے ہی دیش کی وکاس در سات سے آٹھ پرتیشت کے ارد گرد گھومتی رہی ہو,مگر نورتمان سانسدوں کی آئے میں41فیصدی کی وردھی درج کی گئی ہے۔ لوکتنتر کا سب سے زیادہ ڈرانے والا سچ یہ ہے که اس بار لوک سبھا کا چناؤ لڑنے والے پرتیاشیوں میں19فیصدی گمبھیر آپرادھک معاملوں میں لپت ہیں۔ کل7928امیدواروں دوارہ چناؤ آیوگ کو دئیے گئے دستاویزوں سے سنستھا دوارہ جٹایے گئے آنکڑوں سے پتہ چلتا ہے که1500امیدواروں کے خلاف گمبھیر کیس درج ہیں۔ ان میں55کے خلاف ہتیا تتھا184کے خلاف ہتیا کے پریاس کے معاملے درج ہیں۔ ورش2009میں جہاں پندرہ فیصدی پرتیاشیوں کے خلاف آپرادھک معاملے درج تھے,اس سال اس میں چار فیصدی کی وردھی درج کی گئی ہے۔ یعنی ہر پانچ میں سے ایک پرتیاشی پر گمبھیر آپرادھک کیس درج ہے۔ داگیوں کو ٹکٹ دینے میں بھاجپا,کانگریس,سپہ,این سی پی و بسپا  آدی کم وبیش سبھی راجنیتک دل آگے ہیں۔ چنتا کی بات یہ ہے که کل1070امیدواروں کے خلاف دشکرم,ہتیا,اپہرن,مہلاؤں کے خلاف اپرادھ جیسے سنگین معاملے الیکھت ہیں۔ چنتا کی بات یہ ہے که سترہویں لوک سبھا کے لئے چناؤ میں اب تک کے سب سے زیادہ داگی امیدوار چناؤ لڑ رہے ہیں۔ یہ کسی بھی لوکتنتر کے لئے چنتا کی بات ہونی چاہئیے۔ یہ ہی نیتا کالانتر آپرادھک گتیودھیوں کو سنرکشن دیکر قانون کے رکھوالوں کا منوبل گراتے ہیں۔ اس آسن سنکٹ کو لیکر جنتا کو ہی جاگروک کیا جا سکتا ہے کیونکہ یہ ستھتی کم وبیش ہر راجنیتک دل میں ودیمان ہے۔
رپورٹ کا دوسرا چنتاجنک پہلو یہ ہے که ساسندوں کی آمدنی دن دونی رات چوگنی گتی سے بڑھی ہے,جسمیں ستا پکش و وپکش کے سانسدوں کی برابر کی بھاگیداری ہے۔ ساسندوں کا آرتھک وکاس41فیصدی کی درت گتی سے ہوا ہے۔ اس چناؤ میں قریب29فیصدی پرتیاشی کروڑپتی ہیں۔ ورش2009میں انکا پرتیشت16تھا۔ ایڈیار کی رپورٹ بتاتی ہے که لوک سبھا کا چناؤ لڑ رہے338سانسدوں میں335کی اوسط سمپتی ساڑھے23کروڑ ہے۔ یعنی پچھلے پانچ سالوں میں سانسدوں کی اوسط سمپتی پونے سات کروڑ بڑھی ہے۔ اس بار کے عام چناؤ میں بھاجپا کے79تتھا کانگریس کے71فیصدی امیدوار کروڑپتی ہیں وہیں بسپا کے17و سپہ کے آٹھ پرتیاشی کروڑپتی ہیں۔ یعنی بھلے ہی دیش کے آرتھک وکاس کو لیکر ستا پکش اور وپکش دوارہ اپنے اپنے دعوے کیے جا رہے ہوں پر حقیقت یہ ہے که ہمارے ماننیہ لوکتنتر کے آنگن میں خوب پھلے پھولے ہیں۔ ہمیں یہ سوچنا ہوگا که کیسے جنپرتندھیوں کے لئے راجنیتی سیوا کی جگہ کمائی کرنے کا زریعہ بن گئی ہے۔ یہ بھی که ہماری چناؤ پرنالی اتنی خرچیلی کیوں ہو گئی ہے۔ کیا چناؤ خرچ کی کوئی سیما نردھارت ہونی چاہئیے تاکہ ماننیوں کو یہ کہنے کا موقع نہ ملے که وہ  تو کھرچیلے چناؤ کے لئے سنسادھن جٹاتے ہیں۔ ظاہر ہے که راجنیتی میں کمانے کی منشا سے آنے والے نیتا ویوستھا کے چھدروں کا دراپیوگ کرکے ہی اتھاہ دھن سمپدا جٹاتے ہیں۔ جس پر نینترن کے لئے پاردرشی سسٹم دیش کی جنتا کی جاگروکتا اور عدالتوں کی سکریتا سے ہی سمبھو ہے۔ یہ متداتاؤں کا بھی آتممنتھن کا وشیہ ہونا چاہئیے که ہم جاتیواد,شیترواد و پرانتواد کی سنکیرنتاؤں میں پھنس کر ایسے داگیوں کو سنسد کی دہلیز تک پہنچاتے ہیں جو کالانتر ہمارے ہتوں پر ہی کٹھاراگھات کرتے ہیں جو لوکتانترک ویوستھا میں نرنتر گراوٹ کی وجہ بنتی ہے۔ بطور ایک ذمیدار ناگریک ہمیں اس جٹل سمسیا کے ندان کے پرتی گمبھیرتا سے سوچنا ہوگا۔


Comments Off onلوکتنتر کے اندھیرے
1 Star2 Stars3 Stars4 Stars5 Stars (No Ratings Yet)
Loading...
Both comments and pings are currently closed.

Comments are closed.

Powered by : Mediology Software Pvt Ltd.
Web Tranliteration/Translation